خواجہ مودود بلوچستان میں

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
بلوچستان میں سلسلہ چشتیہ کے اولیاء کے مقامات

خواجہ مودودؒ کے تبلیغ اور ہدایت کا دائرہ بہت وسیع تھا اور ان کے خلفاء کے ذریعے دور دراز کے علاقوں تک پہنچا مگر بلوچستان میں خواجہ صاحب کے خلفاء کے ساتھ ان کے سلسلہ اولاد نے بھی اہم کردار ادا کیا، بلکہ خود خواجہ مودودؒ کی بلوچستان آمد بھی ایک مرتبہ ثابت ہے،

خواجہ مودود اور بلوچستان[ترمیم]

وادی شال کوٹ اور بولان میں مودودی خاندان کے اثرات خود ان کے مورث اعلی کی حیات ہی میں پہنچ گئے تھے، ایک حوالے سے خود خواجہ قطب الدین مودود چشتی رحمۃ اﷲ علیہ کی بلوچستان آمد کم از کم ایک مرتبہ ثابت ہے، وہ اپنے مرید اور خلیفہ خاص شیخ بابت کے یہاں شوراوک کے علاقہ میں آئے تھے، شیخ بابت کا تعلق پشتو نوں کے نورزئی قبیلے سے تھا، ،پنجاب میں آباد اس قبیلہ کے لوگ نورزئی کہلاتے ہیں،خواجہ مودودی چشتی کے زندگی ہی میں ان کے مرید اور خلفاء نے تبلیغ کا کام شروع کر دیا تھا بعد میں خواجہ قطب الدین مودود چشتی رحمۃ اﷲ علیہ کے اپنے اولاد سادات مودودی کے مختلف شاخوں نے خدمت دین کے کام کو خطہ بلوچستان میں مزید آگے بڑھایا اور خلق خدا کی زندگیوں کو اسلام سانچے میں ڈھالا خواجہ قطب الدین مودود چشتی رحمۃ اﷲ علیہ کے خاندان کا تعارف اور سلسلہ خواجہ ابو یوسف رحمۃاﷲ علیہ(375ھ - 459ھ) اور ان کے فزند اکبر خواجہ قطب الدین رحمۃ اﷲ علیہ (430ھ - 577 یا 527ھ) سے تعلق رکھنے والے عظیم شخصیات تھیں، خواجہ قطب الدین رحمۃ اﷲ علیہ کے والد بزرگوار خواجہ ابو یوسف رحمۃ اﷲ علیہ سلطنت غزنویہ کے دور میں پیدا ہوئے، سلطنت غزنویہ کے خاتمے کے بعد سلجوقی سردار طغرل حاکم بنا اس وقت آپ کی عمر 54 برس تھی، آپ کا نسب تیر ہویں واسطہ سے حضرت امام حسین رحمۃ اﷲ علیہ ملتا ہے،

مضامین بسلسلہ

تصوف

Maghribi Kufic.jpg

شجرہ جات[ترمیم]

شجرہ طریقت سلسلہ چشتیہ[ترمیم]

  • حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم
  • حضرت علی علیہ السلام
  • حضرت خواجہ حسن بصری
  • حضرت خواجہ عبد الواحد بن زید
  • حضرت خواجہ فضیل ابن عیاض
  • حضرت خواجہ ابراھیم بن ادھم البلخی
  • حضرت خواجہ حذیفہ مرعشی
  • حضرت خواجہ ابو ہبیرہ بصری
  • حضرت خواجہ ممشاد علوی دینوری
  • خواجہ ابو اسحاق شامی رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ ابو احمد ابدال رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ ابو محمد چشتی رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ ابو یوسف چشتی رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ قطب الدین مودود چشتی رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ شریف زند نی رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ عثمان ہارونی رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ معین الدین چشتی اجمیری رحمت اللہ علیہ
  • خواجہ قطب الدین بختیار کاکی رحمت اللہ علیہ
  • بابا فرید گنج شکر رحمت اللہ علیہ
  • نظام الدین اولیاء رحمت اللہ علیہ
  • نصیرالدین چراغ دہلوی رحمت اللہ علیہ

رشد و ہدایت[ترمیم]

خواجہ قطب الدین مودود چستی رحمت ﷲ علیہ کے خلفاء کی تعداد دس ہزار بتائی جاتی ہے، اس سے آپ کے حلقہ ء رشد و ہدایت کا پتہ چلتا ہے، یہی وجہ ہے کہ آپکا سلسہ دعوت اس قدر وسعت اختیار کر گیا، اس کے اثرات صرف ہرات تک محدود نہ رہے، بلکہ دور دور علاقوں مغرب میں خراسان، عراق، شام اور حجاز تک اور جنوب میں سیستان، بلوچستان اور برصغیر پاک ہند و سندھ تک پہنچئے، مغرب میں آپکے نظریات کی پرچار آپکے خلفاء نے کی، ان میں خواجہ شریف زندنی، خواجہ عثمان ہارونی، قابل ذکر ہیں، خواجہ قطب الدین مودود چستی رحمت ﷲ علیہ کی عمر 29 برس کی تھی جب آپکے والد کا انتقال ہوا، آپ نے خرقہ ادارت اپنے والد سے حاصل کی اور اپنے والد کے سچے جانشین ثابت ہوئے، آپ نے کسی امیر یا بادشاہ کے دروازہ پر کبھی قدم نہیں رکھا، آپ ہر شخص کی تعظیم و تکریم کرتے تھے، سلام کرنے میں ہمیشہ پہل کرتے تھے، سادہ زندگی بسر کرتے اور سادہ لباس پہنتے تھے،

چستی اولیاء بلوچستان[ترمیم]

خلفاء[ترمیم]

آپکے خلیفہ شیخ عبدالله کا تعلق پشتو نو کے نورزئی قبیلے سے تھا اور تعلق کوہیٹہ سے متصل چمن کے علاقہ سے تھا،

حوالہ کتب[ترمیم]

Referenced from Book Khwaajah Maudood Chisti

تزکرہ سید مودودی ادارہ معارف اسلامی لاہور

  • سیرالاولیاء
  • مراۃ الاسرار
  • تاریخ مشائخ چشت
  • سفینہ العارفین
  • تذکرہ غوث و قطب
  • سجرہ موروثی سادات کرانی