دلاور خان (فلم)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دلاور خان
دلاورخان.jpg
پنچابی زبانਦਿਲਾਵਰ ਖਾਨ
ہدایت کارعابد شجاع
غفور چوہدری
پروڈیوسرمیاں محمد عمر
سردار سلیم خان
تحریرنسیم یاسین
ستارے
راویمحمد اشرف خان
موسیقیصابر علی
طافو
سنیماگرافیایم حنیف بھٹی
سلیم خان
ایڈیٹرذوالفقار ببو
پروڈکشن
کمپنی
تقسیم کارسرحد فلمز
تاریخ اجراء
دورانیہ
2:45:30 دقیقہ
ملکFlag of Pakistan.svg پاکستان
زبانپنجابی
بجٹروپیہ 7 ملین (US$66,000)
باکس آفسروپیہ 6 کروڑ (US$560,000)

دلاور خان (انگریزی: Dilawar Khan) پنجابی زبان میں فلم کا آغاز کیا۔ اس فلم كو 25 مارچ، 1988ء كو پاکستان میں ریلیز ہوئى۔ پاکستانی اس فلم کا کریکٹر ایکشن اور ڈراما فلموں کے بارے میں فلم کی تکمیل کی گئی تھی۔ یہ فلم باکس آفس میں آتے ہی فلاپ ہو گئی۔ اس فلم کے ڈائریکٹر عابد شجاع تھے۔ پروڈیوسر میاں محمد عمر تھے۔ کہانی نسیم یاسین نے لکھی تھی اور موسیقی صابر علی نے دی تھی۔ اس فلم میں سلطان راہی، نیلی، غلام محی الدین، شاہد، نوشابہ اور آصف خان وغیرہ تھے۔ شروع میں اس فلم کا برطانوی راج کے دور کا منظر دیکھیا تھا

کردار[ترمیم]

ساؤنڈ ٹریک[ترمیم]

فلم کی موسیقی صابر علی اور طافو نے ترتیب دی، فلم کے نغمات حزیں قادری، وارث لدھیانوی اور نسیم یاسین نے گیت لکھے۔ فلم کی لسٹ ریکارڈنگ میں شامل ملک امان اللہ اور چوہدری ارشاد انہوں نے گیتوں کی بہترین ریکارڈنگ کی اور نورجہاں، ترنم ناز اور غلام عباس نے گیت گائے۔ ساؤنڈ ٹریک کو پلاننٹ لولی ووڈ نے لولی ووڈ کے بہترین ساؤنڈ ٹری میں شامل کیا ہے۔

نمبر شمارعنوانپردہ پش گلوکاراںطوالت
1."ننھی منی پیاری پیاری چھوٹی جی اک رانی اے"نورجہاں3:30
2."قدم قدم تے ہوکے ہاواں لوریاں کیواے سناواں میں"غلام عباس4:31
3."آکھ سپنی ڈنگ مار گئی شرارت ہوے ہوے"نورجہاں4:23
4."کڑی میں کپتی بڑی کدے نہ کسے تو ڈری"نورجہاں4:08
5."سجناں مجبوری اے ملانا ضروری اے"ترنم ناز4:30
6."کٹھ پتلی ناچے اشارہ تے کدی محل کدی چباریاں تے"نورجہاں5:36
7."ننھی منی پیاری پیاری چھوٹی جی اک رانی اے"غلام عباس، نورجہاں2:13
کل طوالت:28:23

بیرونی روابط[ترمیم]