دیوتا (ناول)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دیوتا
مصنف محی الدین نواب
ملک پاکستان
زبان اردو
ناشر سسپنس ڈائجسٹ
اشاعت 1977ء تا 2016ء
ذرائع ابلاغ شائع شدہ
تعداد کتب 56

دیوتا محی الدین نواب کا تحریر کردہ اردو ناول ہے جو اردو ماہنامہ سسپنس ڈائجسٹ میں 1977ء سے 2010ء تک بلا ناغہ شائع ہوتا رہا اور اردو ادب میں جاری رہنے والا سب سے طویل ترین اور مقبول ترین ناول بن گیا۔ اس کے کل 56 حصے ہیں۔ یہ ناول فرہاد علی تیمور کی سوانح عمری ہے، جس کے والدین بچپن میں مر جاتے ہیں اور جائیداد پر اس کے رشتہ دار قابض ہو جاتے ہیں۔ چنانچہ فرہاد علی تیمور اپنی جائیداد حاصل کرنے کے لیے ٹیلی پیتھی سیکھتا ہے۔

فنی جائزہ[ترمیم]

کردار نگاری[ترمیم]

کردار نگاری کے حوالے سے اگر دیکھا جائے تو دیوتا کرداروں سے بھرپورناول ہے۔ چند اہم کرداروں کا جائزہ پیش ہے۔

فرہاد علی تیمور، آمنہ ف رہاد، سونیا ف رہاد، پارس، پورس، علی تیمور، اعلیِ بی بی، عدنان، انوشے

فرہاد علی تیمور[ترمیم]

ایک ایسے شخص کی کہانی بیان کی گئی ہے جو ٹیلی پیتھی کا علم اس وقت سیکھتا ہے جب یہ بہت پسمانہ تھا اور ابھی اپنی جہتوں کی تلاش میں تھا۔ رفتہ رفتہ فرہاد اس علم میں قابلیت حاصل کرتا ہے اور دوستوں کے لیے دوست اور دشمنوں کے لیے عذاب بنتا ہے۔ اسے ایک پاکستانی شخص کے طور پر بتایا گیا ہے جو محب وطن ہے لیکن ملک سے باہر ہی رہتا ہے زیادہ تر وقت اصل میں کسی جگہ اس کا ٹھکانہ نہیں ہے۔ فرہاد کی زندگی کی کہانی بیان کی گئی ہے جس میں دوست دشمن اپنے بیگانے سبھی کا نہایت تفصیل سے بتایا گیا ہے۔

بیرونی روابط[ترمیم]