دی پیشن آف دی کرائسٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
دی پیشن آف دی کرائسٹ
The Passion of the Christ
The-passion-of-the-christ.jpg
فلم کا پوسٹر
پروڈیوسر بروس ڈیوی
میل گبسن
اسٹیفن میک ایویٹی
تحریر بینیڈکٹ فزجیرالڈ
میل گبسن
ستارے جیم کاویزل
مائیا مورگنسٹرن
مونیکا بیلوچی
ہرسٹو ناؤموف شوپوف
ماتیا سبراجیا
روزالنڈا سیلنٹانو
موسیقی جون ڈیبنی
جنگر شنکر
سنیماگرافی کیلب ڈیشانل
ایڈیٹر اسٹیو میرکووِچ
جان رائٹ
تاریخ رلیز
25 فروری 2004ء
دورانیہ
127 منٹ
ملک Flag of the United States.svg ریاستہائے متحدہ امریکا
زبان آرامی
لاطینی
عبرانی
بجٹ 30 ملین امریکی ڈالرز
باکس آفس مقامی:
370,782,930 امریکی ڈالرز
عالمی:
611,899,420امریکی ڈالرز

ہالی وڈ کی انگریزی فلم۔ 25 فروری 2004ء کو ریلیز کی گئی۔

اداکار[ترمیم]

اس فلم کو ہالی وڈ کے مشہور اداکار میل گبسن نے ڈائریکٹ کیا۔ جبکہ اس فلم کے اداکاروں میں جم کاویزل نے یسوع مسیح کا کردار ادا کیا۔

کہانی[ترمیم]

اس فلم میں یسوع مسیح کے مصلوب ہونے اور اس سے پہلے کے واقعات کی فلم بندی کی گئی ۔فلم یہودیوں کو یسوع مسیح کو مصلوب کرنے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا ۔

اعتراضات[ترمیم]

فلم پر یہودی تنظمیوں اور کئی مسیحی فرقوں نے بھی اعتراضات کیے۔ جس میں سب سے بڑا اعتراض یہ تھا کہ اس فلم میں یہوریوں کو مکمل طور پر یسوع مسیح کو صلیب چڑھائے جانے کا ذمہ دار قرار دیا جارہاہے جس سے یہودی مخالف جذبات بھڑک سکتے ہیں۔ میل گبسن کا کہنا ہے کہ اس نے حقیقت کو اجاگر کرنے کی کوشش کی ہے۔ کیتھولک پادریوں نے بھی فلم کو کیتھولک مخالف اور صیہونیت مخالف قرار دیتے ہوئے تنقید کا نشانہ بنایا۔ لیکن ہدایت کار کے مطابق انہوں نے یہ فلم محبت، امید، ایمان اور درگزر کرنے جیسے جذبات کو فروغ دینے کے لیے بنائی۔

کامیابی[ترمیم]

اس فلم نے ریلیز کے پہلے پانچ دنوں میں بارہ کروڑ باون لاکھ ڈالر کا کاروبار کیا۔ فلم نے اسکر ایوارڈ یافتہ فلم لارڈ آف دی رنگ کے بارہ کروڑ اکتالیس لاکھ کا ریکارڈ توڑا ۔یوں ایک تنازع نے فلم کو مشہور کر دیا اور اسے غالباً تاریخ کی سب سے مشہور فلم بنا دیا۔ فلم کو اکیڈمی ایوارڈ کے لیے بھی نامزد کیا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]