ذاکر حسین (موسیقار)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ذاکر حسین (موسیقار)
پیدائشی نام Zakir Hussain Qureshi
معروفیت Zakir Hussain
پیدائش 9 مارچ 1951ء (عمر 68 سال)
تعلق ممبئی, Maharashtra, India
اصناف ہندوستانی کلاسیکی موسیقی، jazz fusion، world music
پیشے طبلہ Maestro
آلات طبلہ,
سالہائے فعالیت 1963-تا حال
ریکارڈ لیبل HMV
متعلقہ کارروائیاں Remember Shakti
ویب سائٹ www.zakirhussain.com

ذاکر حسین ( پیدائش 9مارچ 1951ء) ہندوستانی کلاسیقی موسیقی کا پروڈیوسر، فلم اداکار اور موسیقی میں طبلہ نواز ہے۔ حکومت بھارت کی طرف سے اسے 1988ء میں پدماشری ایوارڈ اور 2002ء میں پدما بھوشن ایوارڈ سے نوازا گیا۔[1] 1990ء میں اسے سنگیت ناٹک اکیڈمی کی طرف سے سنگیت ناٹک اکیڈمی ایوارڈ بھی ملا جو رقص، ڈراما اور موسیقی کی بھارتی قومی اکیڈیمی ہے۔ 1999ء میں وہ آرٹس قومی ورثہ فیلو شپ کے لیے ریاست ہائے متحدہ امریکا کے نیشنل ایوارڈ سے نوازا گیا جو روایتی فنکاروں اور موسیقاروں کو ملنے والا سب سے بڑا ایوارڈ ہے۔

ابتدائی زندگی اور تعلیم[ترمیم]

حسین ایک روایتی طبقہ میں پیدا ہوا۔[2] اس نے ماہم میں سینٹ مائیکل ہائی اسکول میں تعلیم حاصل کی اور سینٹ زائویر سے گریجویشن کی۔[3] حسین ایک عجیب وغریب صلاحیت رکھنے والا بچہ تھا۔ اس کے والد نے اسے تین سال کی عمر میں پکھواج سکھایا۔[4] ذاکر کا والد اللہ رکھا رویتی طبلہ بجانے والا تھا جو پنجاب باج کے طور پر مشہور تھا۔ شمالی ہندوستان طبلہ کی چھ مرکزی روایتوں میں سے ایک ہے جبکہ دیگر دلی، بینار، اجرارا، فرخ آباد اور لکھنؤ ہیں۔ وہ گیارہ سال کی عمر سے مختلف سفر کرتا رہا ہے۔ اس نے 1969ء میں ریاست ہائے متحدہ امریکا میں پی ایچ ڈی کے لیے سفر کیا۔ موسیقی میں ڈاکٹریٹ حاصل کرنے کے بعد اس نے بین الاقوامی سطح پر اپنے کیرئیر کو شروع کر دیا جس میں ایک سال کے اندر 150 کنسرٹ کی تاریخیں شامل ہیں۔[3][5]

ذاتی زندگی[ترمیم]

ذاکر حسین نے انتونیہ منیکولا سے شادی کی جو ایک کتھک رقاصہ اور ٹیچر ہے اور اس کی مینیجر بھی ہے۔[6] ان کی دو بیٹیاں بھی ہیں انیسہ قریشی اور ازبیلا قریشی۔ انیسہ نے یو سی ایلسے گریجویشن کی اور فلم پروڈکشن اور ہدایتکاری کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ جبکہ ازبیلا مین ہٹن ،امریکا میں رقص کی تعلیم حاصل کر رہی ہے۔[7] ذاکر حسین کو پریسٹن یونیورسٹی کی انسانیت کونسل کے ذریعے اولڈ ڈومینین فیلو کا نام دیا گیا جہاں اس نے 2005ء سے 2006ء کے سمسٹرز میں ںشعبہ موسیقی کا مکمل پروفیسر رہا۔[8] وہ اسٹیفورڈ یونیورسٹی کا پروفیسر بھی رہ چکا ہے۔[9] اب وہ امریکی ریاست سان فرانسسکو میں رہتا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Padma Awards" (پی‌ڈی‌ایف)۔ Ministry of Home Affairs, Government of India۔ 2015۔ اخذ شدہ بتاریخ جولائی 21, 2015۔
  2. Lawrence A. Johnson (6 مئی 2009)۔ "Indian tabla master Zakir Hussain says he never stops learning"۔ The Star۔ Malaysia۔ مورخہ 6 مئی 2008 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  3. ^ ا ب Dhanyasree ۔M۔ "Zakir Hussain: The World Beats To His Rhythm"۔ One India۔ مورخہ 17 دسمبر 2008 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  4. "Zakir Hussain"۔ Mondomix۔ 21 فروری 2003۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2015۔
  5. "Zakir Hussain — Moment! Records"۔ مورخہ 18 فروری 2015 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 فروری 2010۔
  6. "Bharatnatyam in Jeans"۔ Little India۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  7. "Ustad Zakir Hussain"۔ Cultural India۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 دسمبر 2012۔
  8. "Best Of Zakir Hussain – Tabla Samrat"۔ Calcutta Music Blog۔ مورخہ 9 اگست 2011 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  9. "Zakir Hussain Shivkumar Sharma"۔ Carnegie Hall۔ مورخہ 15 مئی 2008 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔

بیرونی روابط[ترمیم]