رائے ڈیاس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

رائے ڈیاس
රෝයි ඩයස්
ரொய் டயஸ்
ذاتی معلومات
مکمل نامرائے لیوک ڈیاس
پیدائش18 اکتوبر 1952ء (عمر 70 سال)
کولمبو, سیلون (اب سری لنکا)
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا آف بریک گیند باز
حیثیتبلے باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 4)17 فروری 1982  بمقابلہ  انگلستان
آخری ٹیسٹ16 اپریل 1987  بمقابلہ  نیوزی لینڈ
پہلا ایک روزہ (کیپ 15)9 جون 1979  بمقابلہ  نیوزی لینڈ
آخری ایک روزہ30 اکتوبر 1987  بمقابلہ  انگلستان
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
1974/75–1991/92کولمبو کرکٹ کلب
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ فرسٹ کلاس لسٹ اے
میچ 20 58 93 89
رنز بنائے 1,285 1,573 4,296 2,363
بیٹنگ اوسط 36.71 31.46 32.05 31.50
100s/50s 3/8 2/11 5/24 3/14
ٹاپ اسکور 109 121 144 121
گیندیں کرائیں 24 56 180 56
وکٹ 0 3 1 3
بالنگ اوسط 23.33 118.00 23.33
اننگز میں 5 وکٹ 0 0 0
میچ میں 10 وکٹ 0 0 0
بہترین بولنگ 3/25 1/9 3/25
کیچ/سٹمپ 6/0 16/0 39/0 24/0
ماخذ: Cricinfo، 20 فروری 2019

رائے لیوک ڈیاس රෝයි ඩයස් (پیدائش: 18 اکتوبر 1952ء کولمبو) سری لنکا کے سابق کرکٹر ہیں جنہوں نے سری لنکا کے لیے 20 ٹیسٹ اور 58 ون ڈے کھیلے۔ ایک خوبصورت اور سجیلے دائیں ہاتھ کے بلے باز 1,000 ٹیسٹ رنز مکمل کرنے والے پہلے سری لنکا بنے تھے۔ انہوں نے سری لنکا کے لیے 1979ء سے 1987ء تک کرکٹ کھیلی اور جزیرے میں سری لنکا کے تین مختلف تامل گروپوں (جافنا، مشرقی اور نیگومبو) میں سے کسی کے پہلے ایک سری لنکا ٹیسٹ کرکٹر بنے انہوں نے سری لنکا کے علاوہ کولمبو کرکٹ کلب کی طرف سے بھی گرکٹ میچوں میں حصہ لیا تھا۔

بین الاقوامی کیریئر[ترمیم]

1979ء کی آئی سی سی ٹرافی میں اپنے 214 رنز کے ساتھ وہ سری لنکا کی ٹورنامنٹ کی فتح کا ایک لازمی حصہ تھے، کیونکہ انہوں نے 71.33 کی بیٹنگ اوسط کے ساتھ چار میچ کھیلے، جس میں 214 رنز بنائے۔ اس جیت کا مطلب یہ تھا کہ سری لنکا نے 1979ء کے کرکٹ ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا تھا، اور حیرت انگیز طور پر سری لنکا نے اس ٹورنامنٹ میں بھی ایک میچ جیتا تھا۔ رائے ڈیاس نے ایک صبر آزما 50 رنز بنائے جب سری لنکا نے 5 وکٹوں پر 238 رنز بنائے، اس سے پہلے کہ ہندوستان کو 191 رنز پر آؤٹ کر دیا۔

ٹیسٹ کرکٹ[ترمیم]

سری لنکا کو 1982ء میں ٹیسٹ سٹیٹس پر ترقی دی گئی، اور ڈیاس کو پہلے ٹیسٹ کے لیے منتخب کیا گیا۔ اس کا آغاز مشکل تھا، باب ولس کے ہاتھوں صفر پر آؤٹ ہونے کے بعد سری لنکا کی 2 وکٹیں صرف 11 رنز پر ہی گر گئی تھیں لیکن دوسری اننگز میں انگلینڈ کے اسپنرز ڈیرک انڈر ووڈ اور جان ایمبرے کے خلاف اس نے بہتر مقابلہ کیا اور 77 رنز بنائے، لیکن جب وہ تیسری وکٹ کی صورت کریز چھوڑنے پر مجبور ہوئے اس وقت سری لنکا کا سکور 3 وکٹوں پر 140 رنز تھا مگر ٹیل اینڈرز ناکام ہونے کی صورت میں ساری ٹیم 175 پر آل آؤٹ ہو گئی، اور انگلینڈ نے نسبتا آسانی سے جیتنے کے لیے 171 رنز کا تعاقب کیا درحقیقت، سری لنکا کے پہلے دو ٹیسٹ میچز امید افزا تھے جیسا کہ کراچی میں پاکستان کے خلاف اس نے شاندار 53 رنز بنا کت سیریز کا اچھا آغاز کیا ٹیسٹ اگرچہ پاکستان جیت گیا مگر سری لنکا نے اچھا کھیل پیش کیا تھا ہاکستان کو ہارون رشید 153 کی بڑی اننگ سے 396 رنز بنانے میں مدد ملی جواب میں مہمان ٹیم 344 رنز تک پہنچی سداتھ ویٹیمنی 71 دلیپ مینڈس 54 اور رائے ڈیاس 53 رنز کا حصہ ڈالا تھا سداتھ ویٹیمنی اور ڈیاس نے دوسری وکٹ کے لیے 217 رنز جوڑے، پھر کسی بھی وکٹ کے لیے سری لنکا کی ریکارڈ شراکت داری۔ اس نے سری لنکا کو پہلی اننگز میں 184 رنز کی برتری کے ساتھ سرفہرست رہنے میں مدد فراہم کی، لیکن وہ پاکستان کو آؤٹ نہ کر سکے اور اسے ڈرا پر اکتفا کرنا پڑا۔ پاکستان نے سلیم ملک کے 100 کی مدد سے 301/4 کے ذریعے سری لنکا کو 354 کا ایک۔مشکل ہدف دیا جس کو عبور کرنا ان کے لیے خاصا مشکل ثابت ہوا اور وہ 204 رنز سے شکست کھا گئے اسی سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میں کیریئر کے بہترین 109 رنز بنانے کے باوجود ستمبر 1982 میں ہندوستان کے ذاتی طور پر اچھے دورے سے لطف اندوز ہوتے ہوئے دیاس نے بڑا اسکور بنانا جاری رکھا، جہاں اس نے تین میچوں کی سیریز میں 39، 102 اور 121 کے اسکور کے ساتھ اپنی صرف دو ون ڈے سنچریاں بنائیں۔ تاہم، بھارت نے نسبتاً قائل فتوحات کے بعد سیریز 3-0 سے جیت لی۔ سری لنکا نے بھی ٹیسٹ میچ کھیلا، اور ڈیاس نے دو نصف سنچریاں بنائیں کیونکہ اس نے اور دلیپ مینڈس نے میچ ڈرا کرنے میں تعاون کیا۔ 1983 کے کرکٹ ورلڈ کپ میں، سری لنکا نے صرف ایک میچ جیتا، اور ڈیاس نے سیریز میں اپنی صرف پچاس رنز کا حصہ ڈالا۔ برینڈن کروپو کے ساتھ تیسری وکٹ کے لیے 80 رنز کی جوڑی بناتے ہوئے، ڈیاس نے 182 رنز کا تعاقب کیا، جس کا اختتام 64 ناٹ آؤٹ کے ساتھ ہوا کیونکہ سری لنکا نے تین وکٹوں سے فتح حاصل کی۔ سری لنکا نے کم از کم ٹیسٹ کرکٹ میں مسلسل بہتری لائی، لیکن ڈیاس کا کیریئر دوسری طرف چلا گیا۔ اس نے ٹیسٹ میں کچھ بڑے اسکور بنائے، لیکن ون ڈے میں ہارنے کی وجہ سے اس نے کافی ففٹی بنائی۔ پھر، ستمبر 1985 میں، ہندوستان دورے پر آیا - ایک ایسا دورہ جو سری لنکا کی اب تک کی سب سے بڑی کامیابی تھی۔ پہلے ٹیسٹ میں، ڈیاس نے 4 اور 0 بنائے، پھر بھی رنجن مدوگالے اور ارجونا راناٹنگا کی سنچریوں کی بدولت سری لنکا کا غلبہ رہا - بھارت، تاہم، پانچ دن تک زندہ رہا اور میچ ڈرا پر ختم ہوا۔ تاہم، دوسرے ٹیسٹ میں، ڈیاس 2 وکٹ پر 109 کے سکور کے ساتھ میدان میں آئے اور انہوں نے سٹروک سے بھرپور 95 رنز بنا کر سری لنکا کو 385 تک پہنچا دیا۔ اس کے بعد، ہندوستان 244 رنز پر ڈھیر ہو گیا، اور 141 رنز سے پیچھے ہے، لیکن ڈیاس نے فوری ناقابل شکست سکور کیا۔ 60 کے طور پر سری لنکا نے 3 وکٹ پر 206 رنز پر اعلان کیا، بھارت کو ایک دن میں 348 رنز بنا دیا. کپل دیو کے 78 رنز کے باوجود، بھارت 198 رنز پر آؤٹ ہو گیا، اور سری لنکا نے اپنی پہلی ٹیسٹ جیت درج کی۔ ڈیاس نے پھر تیسرے ٹیسٹ میں اپنی تیسری اور آخری ٹیسٹ سنچری ریکارڈ کی، کیونکہ ڈیاس ڈرا اور سیریز جیتنے کے لیے دلیپ مینڈس کے ساتھ پانچ گھنٹے تک زندہ رہے۔ اس کے بعد ڈیاس کے کیریئر نے بدترین موڑ لیا۔ اس نے ایک بار پھر ٹیسٹ میں صرف 50 پاس کیے – بھارت کے ساتھ ڈرا ٹیسٹ میں صرف 17 وکٹوں کے گرنے پر 1096 رنز بنائے تھے – اور خراب فارم کی وجہ سے انہیں 1987 کے کرکٹ ورلڈ کپ میں پہلے میچ کے بعد ون ڈے ٹیم سے باہر کر دیا گیا، جہاں اس نے 1 سکور کیا تھا۔ وہ 1987 کے کرکٹ ورلڈ کپ کے آخری میچ کے لیے واپس آئے، ٹیم نے ان کے بغیر چار میچ کھیلے اور اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا، اور جب اس کے ساتھی کھلاڑی 40 کو پاس کرنے میں ناکام رہے تو اس نے اپنی آخری بین الاقوامی اننگز میں 80 رنز بنائے۔ تاہم، 219 کا ہدف بہت چھوٹا تھا، اور سری لنکا اس ورلڈ کپ میں ایک بھی فتح کے بغیر ختم ہوا۔

کوچنگ کیریئر[ترمیم]

رائے ڈیاس نے سری لنکا کی قومی کرکٹ ٹیم اور حال ہی میں نیپال کی قومی کرکٹ ٹیم کے کوچ کے طور پر خدمات انجام دیں۔ مختلف ایسوسی ایٹ کرکٹ ٹورنامنٹس میں نیپالی کرکٹ ٹیم کی کامیابی میں دیاس کی کوچنگ کا اہم کردار رہا ہے۔ ڈیاس نے 2018 انڈر 19 کرکٹ ورلڈ کپ میں پلیٹ جیتنے والی سری لنکا انڈر 19 ٹیم کی کوچنگ بھی کی۔ دیاس نے ملائیشیا کی قومی کرکٹ ٹیم 2012 کے کوچ کے طور پر بھی کام کیا۔

اعداد و شمار[ترمیم]

رائے لیوک ڈیاس نے 20 ٹیسٹ میچوں کی 36 اننگز میں ایک مرتبہ ناٹ آئوٹ رہ کر 1284 رنز بنائے۔ 36.71 کی اوسط سے بنائے جانے والے ان رنزوں میں 109 ان کا بہترین سکور تھا۔ 3 سنچریاں اور 8 نصف سنچریاں بھی انہوں نے سکور کر رکھی تھیں۔ انہوں نے 58 ایک روزہ مقابلوں کی 55 اننگز میں 5 مرتبہ ناٹ آئوٹ رہ کر 1573 رنز 31.46 کی اوسط سے بنائے۔ اس میں 121 ان کا بہترین سکور تھا۔ ایک روزہ مقابلہ میں 2 سنچریاں اور 11 نصف سنچریاں ان کے ریکارڈ کا حصہ ہیں جبکہ 93 فرسٹ کلاس میچوں کی 147 اننگز میں 13 مرتبہ ناٹ آئوٹ رہ کر انہوں نے 4296 رنز 144 کے سب سے بڑے انفرادی سکور کے ساتھ 32.05 کی اوسط سے اپنے ریکارڈ میں شامل کیں۔ رائے لیوک ڈیاس نے ون ڈے مقابلوں میں 70 رنز دے کر 3 وکٹیں بھی حاصل کی تھیں[1]

بین الاقوامی سنچریاں[ترمیم]

رائے ڈیاس کی سنچریاں
نمبر شمار. سکور میچ پوزیشن. اننگ تعداد ٹیسٹ بمقابلہ شہر/ملک بمقام اندرون ملک or بیرون تاریخ نتیجہ حوالہ
[1] 109 4 4 1 3/3  پاکستان پاکستان کا پرچم لاہور, پاکستان قذافی سٹیڈیم بیرون ملک 22 مارچ 1982ء ہارا [2]
[2] 108 10 4 3 2/3  نیوزی لینڈ سری لنکا کا پرچم کولمبو, سری لنکا سنہالی اسپورٹس کلب گراؤنڈ اندرون ملک 16 مارچ 1984ء ڈرا [3]
[3] 106 15 4 4 3/3  انگلستان سری لنکا کا پرچم کینڈی, سری لنکا اسگیریا اسٹیڈیم اندرون ملک 14 ستمبر 1985ء ڈرا [4]

ون ڈے سنچریاں[ترمیم]

رائے ڈیاس کی ون ڈے سنچریاں
نمبر رن میچ پوزیشن اننگ ایک روزہ میچ اسٹرائیک ریٹ خلاف شہر ملک جگہ گھر، دور یا غیر جانبدار تاریخ نتیجہ ریفری
[1] 102 7 3 1 2/3 89.47  بھارت بھارت کا پرچم دہلی، ہندوستان فیروز شاہ کوٹلہ اسٹیڈیم گھرسے دور 15 ستمبر 1982ء ہارا [5]
[2] 121 8 3 1 3/3 84.02  بھارت بھارت کا پرچم بنگلور، انڈیا ایم چناسوامی اسٹیڈیم گھرسے دور 26 ستمبر 1982ء ہارا [6]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. https://www.espncricinfo.com/player/roy-dias-48470
  2. "Full Scorecard of Sri Lanka vs Pakistan 3rd Test 1981/82 - Score Report | ESPNcricinfo.com". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 19 مارچ 2021. 
  3. "Full Scorecard of Sri Lanka vs New Zealand 2nd Test 1983/84 - Score Report | ESPNcricinfo.com". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 19 مارچ 2021. 
  4. "Full Scorecard of India vs Sri Lanka 3rd Test 1985 - Score Report | ESPNcricinfo.com". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 19 مارچ 2021. 
  5. "Full Scorecard of Sri Lanka vs India 2nd ODI 1982/83 - Score Report | ESPNcricinfo.com". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 22 مارچ 2021. 
  6. "Full Scorecard of Sri Lanka vs India 3rd ODI 1982/83 - Score Report | ESPNcricinfo.com". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 22 مارچ 2021.