راجش پائلٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
راجش پائلٹ
تفصیل=

اندرونی سیکورٹی وزیر
مدت منصب
1993 – 1995
وزیر اعظم نرسمہا راؤ
ٹیلی مواصلات کے وزیر
مدت منصب
1991 – 1993
وزیر اعظم نرسمہا راؤ
سطح ٹرانسپورٹ کے وزیر
مدت منصب
1995 – 1996
وزیر اعظم راجیو گاندھی
نرسمہا راؤ
مدت منصب
1985 – 1989
رکن پارلیمان، لوک سبھا
مدت منصب
جنوری 1991 – 11 جون 2000
مدت منصب
1984 - 1989
معلومات شخصیت
پیدائش 10 فروری 1945  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
گوتم بدھ نگر ضلع  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 11 جون 2000 (55 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جے پور  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات ٹریفک حادثہ  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of India.svg بھارت (26 جنوری 1950–)
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند (–14 اگست 1947)
Flag of India.svg ڈومنین بھارت (15 اگست 1947–26 جنوری 1950)  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت انڈین نیشنل کانگریس  ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد سچن پائلٹ (بیٹا)
سرکا پائلٹ (بیٹی)
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان ہندی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
عہدہ اسکواڈرن لیڈر  ویکی ڈیٹا پر (P410) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

اسکواڈرن لیڈر راجیشور پرساد بدھوری المعروف راجیس پائلٹ (انگریزی: Rajesh Pilot)، پیدائش: 10 فروری، 1945ء - وفات: 11 جون، 2000ء) انڈین نیشنل کانگریس سے وابستہ بھارتی سیاستدان، بھارتی لوک سبھا کے سابق رکن، بھارتی ایئر فورس کے پائلٹ اور بھارت کی مرکزی حکومت میں وزیر تھے۔ وہ 10 فروری 1945ء کو غازی آباد، راجستھان، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔ وہ نسلی اعتبار سے گوجر قبیلے کی ایک ذات بدھوری سے تعلق رکھتے تھے۔ انہوں نے ابتدائی تعلیم مکمل کرنے کے بعد 1966ء کو انڈین ایئر فورس میں بہ طور پائلٹ آفیسر شمولیت اختیار کی۔ پاک بھارت جنگ 1971ء میں حصہ لیا۔ کئی عہدوں پہر تعینات رہے۔ 29 اکتوبر 1977ء میں اسکواڈرن لیڈر کے عہدے پر ترقی ملی۔ راجیو گاندھی سے تعلقات کی بنا پر ایئر فورس کی نوکری سے استعفا دیا اور انڈین نیشنل کانگریس میں شمولیت اختیار کی۔ 1980ء میں لوک سبھا کے انتخابات بھرت پور، راجستھان سے الیکشن لڑا اور بھاری اکثریت سے کامیاب ہوئے۔ اس کے بعد راجیس پائلٹ نے دوسہ (راجستھان) کے حلقہ سے بالترتیب 1984ء، 1996ء اور 1999ء میں تین بار لوک سبھا کا الیکشن لڑا اور کامیاب ہوئے۔ 1985ء میں انہیں وزیر ٹراسپورٹ بنایا گیا۔ راجیس پائلٹ 11 جون 2000ء میں جے پور کے نزدیک ایک کار حادثہ میں زخمی ہوئے اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ان کی موت واقع ہو گئی۔ بھاتے کے محکمہ ڈاک نے ان کی یادگار کے طور پر 5 روپیہ مالیت کا ڈاک ٹٹ جاری کیا۔[1] ان کے بیٹے سچن پائلٹ لوک سبھا کے رکن اور منموہن سنگھ وزارت میں کارپوریٹ امور کے وزیر تھے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. سعید اختر چوہدری نقشبندی، ہیرے موتی، فرحان عباس ڈیزائن آرٹ پرنٹر راولپنڈی، 2022ء، ص 232