راشد باللہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

راشد باللہ، (پیدائش: ۱۱۰۹ء - وفات: ۱۱۳۸ء) ایک عباسی خلیفہ تھا۔ اس نے ۱۱۳۵ء/۵۲۹ھ سے لے کر ۱۱۳۶ء/۵۳۰ھ تک خلافت کا عہدپ سنبھالا۔ مسترشد باللہ نے اپنی زندگی میں ہی اپنے بیٹے کو ولی عہد نامزد کرکے اس کی بیعت لے لی تھی۔ ۱۱۳۵ء/۵۲۹ھ میں باپ کے قتل کے بعد راشد باللہ تخت نشین ہوا۔

واقعات[ترمیم]

  • سلطان مسعود اور راشد باللہ میں سخت اختلاف پیدا ہوا۔
  • لوگوں سے مال و دولت کے لیے ظلم و زیادتی سے کام لیا۔
  • لوگوں کی شکایت ہر سلطان کو موقع ملا اور اس نے بغداد پر چڑھائی کردی لیکن خلیفہ موصل چلا گیا۔
  • اس کی غیر حاضری سے سلطان مسعود نے فائدہ اٹھایا اور لوگوں کی شہادتیں لے کر مسئلہ فقہا اور قضاۃ کے سامنے پیش کیا کہ ایسے ظالم کے مرتکب شخص کو معزول کیا جاسکتا ہے ہا نہیں۔ قاضی نے نائب السلطنت کو خلیفہ کی معزولی کا فتوی دے دیا، جس پر اسے معزول کر دیا گیا۔
  • ۱۱۳۶ء/۵۳۰ھ میں بعض عجمیوں نے اسے قتل کر دیا اور مقتول حکمرانوں کی فہرست میں مزید ایک اور کا اضافہ کر دیا۔ بغداد میں اس کہ قتل کا ردعمل ہوا اور اس کی ظلم و زیادتی کے باوجود لوگوں نے اس کے قتل کا سوگ منایا۔ اسے قتل کرنے والے حشاشین تھے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ[ترمیم]


راشد باللہ
بنو ہاشم کی ذیلی شاخ
پیدائش: ۱۱۰۹ء وفات: ۱۱۳۸ء
مناصبِ اہل سنت
پیشرو
مسترشد باللہ
خلیفہ
۱۱۳۵ء–۱۱۳۶ء
جانشین
مستفی بامرللہ