رامی حمد اللہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
رامی حمد اللہ
(عربی میں: رامي حمدالله خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
Rami Hamdallah October 2013.jpg 

مناصب
وزیر اعظم دولت فلسطین   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
دفتر میں
6 جون 2013  – 2 جون 2014 
وزیر اعظم فلسطین   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
دفتر میں
2 جون 2014  – 10 مارچ 2019 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png سلام فیاض 
محمد اشتیہ  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 10 اگست 1958 (61 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
عنبتا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
رہائش عنبتا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
شہریت فلسطین  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
جماعت فتح  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ اردن
جامعہ مانچسٹر
لنکاسٹر یونیورسٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
تعلیمی اسناد پی ایچ ڈی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیمی اسناد (P512) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ماہرِ لسانیات،  سیاست دان،  استاد جامعہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان عربی،  انگریزی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر

رامی حمد اللہ (عربی: رامي الحمد الله) ایک فلسطینی سیاست دان اور معلم جو سنہ 2014ء سے فسطین کے وزیر اعظم ہیں۔ اور وہ نابلس کی النجاح قومی یونیورسٹی کے صدر بھی ہیں۔[1] 2 جون 2013ء کو فلسطینی صدر محمود عباس نے انہیں سلام فیاض کی جگہ تعینات کیا تھا۔[2] ان کی تقرری کو حماس نے قبول نہیں کیا کیونکہ ان سے فیصلے کی رائے نہیں لی گئی تھی۔[3] وہ الفتح نامی سیاسی جماعت کے رکن ہیں؛[4] تاہم بی بی سی نیوز کا کہنا ہے کہ وہ سیاسی طور پر آزاد ہیں۔[5] 20 جون 2013ء کو رامی حمداللہ نے اپنا استعٰفی بھجوا دیا جسے 20 جون کو صدر محمود عباس نے قبول کر لیا۔[6] اس کے چھ مہینے بعد صدر محمود عباس نے رامی حمد اللہ سے نئی حکومت بنانے کا پوچھا، جسے انہوں نے 19 ستمبر 2013ء کو قبول کر لیا۔[7] انہیں فلسطینی حکومت کی سربراہی کرنے کے لیے 2 جون 2014ء کو مقرر کیا گیا تھا۔[8]

ابتدائی زندگی اور تعلیم[ترمیم]

رامی حمد اللہ فلسطین کے قصبے عنبتا میں 10 اگست 1958ء کو پیدا ہوئے۔[9] انہوں نے سنہ 1980ء میں اردن یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی اور سنہ 1982ء میں مانچسٹر یونیورسٹی سے ایم اے کیا۔ رامی حمد اللہ نے سنہ 1988ء میں لنکاسٹر یونیورسٹی سے لسانیات میں پی ایچ ڈی مکمل کیا۔

زندگی[ترمیم]

رامی حمد اللہ جو عموماً ابو الولید (ولید کا باپ، ان کا ایک متوفی بیٹے) کے نام سے جانے جاتے ہیں، النجاح قومی یونیورسٹی میں پروفیسر ہیں۔ اس یونیورسٹی میں انہیں سنہ 1982ء میں انگریزی کے معلم کے طور پر رکھا گیا تھا۔ انہیں یونیورسٹی کا صدر سنہ 1998ء میں مقرر کیا گیا تھا۔ اپنی 15 سالہ مدت کے دوران میں انہوں نے طلبہ و طالبات کی تعداد تین گنا کر دی جو اب 4 کیمپسوں میں 20 ہزار ہے۔ انہیں نے ایک 400 بیڈ والا ٹیچنگ ہسپتال بھی شروع کیا تھا۔ وہ فلسطین کے مرکزی الیکشن کمیشن کے سنہ 2002ء سے 2003ء تک سیکریٹری جنرل بھی رہے۔[10] وہ سنہ 2011ء میں کمیشن کے چیئرمین تھے[3][11] 6 جون 2013ء کو وزیر اعظم کے طور پر عہدے کا حلف اٹھایا[12] اور سلام فیاض کی جگہ لے لی۔[13] حلف اٹھانے کے صرف دو ہفتوں بعد ہی انہوں نے اپنا استعٰفی بھجوا دیا، انہوں نے کفایت شعاری سے متعلق معاشی پالیسی پر صدر محمود عباس سے اختلافات کی بنا پر اپریل میں اپنا عہدہ چھوڑا تھا۔[14] 23 جون 2013ء کو محمود نے رامی کا استعٰفی قبول کر لیا لیکن عبوری حکومت کے سربراہ کے طور انہیں رہنے دیا۔[15]

رامی کے استعٰفی کے چھ ہفتوں بعد محمود نے ان سے نئی حکومت تشکیل کرنے کی پیش کش کی جسے انہوں نے 19 ستمبر 2013ء کو قبول کر لیا۔[7]

23 مارچ 2018ء کو غزہ پٹی کے دورے کے موقع پر ان کے قافلے کے قریب ایک دھماکا ہوا جس کے نتیجہ میں 7 افراد معمولی زخمی ہوئے جبکہ وہ بال بال بچ گئے۔[16]

نجی زندگی[ترمیم]

ان کے تینوں بچے، 11 سالہ جڑواں اور 9 سالہ بیٹا ایک کار حادثہ میں مارے گئے تھے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Faculty Profile at An-Najah University"۔ اخذ شدہ بتاریخ 2 جون 2013۔
  2. "Abbas to appoint Rami Hamdallah as next Palestinian PM"۔ وائےنیٹ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2 جون 2013۔
  3. ^ ا ب "Rami Hamdallah Appointed Prime Minister Of Palestine By President Mahmoud Abbas"۔ ہفنگٹن پوسٹ۔
  4. "Abbas names new Palestinian prime minister"۔ الجزیرہ انگریزی۔ اخذ شدہ بتاریخ 2 جون 2013۔
  5. "Mahmoud Abbas appoints new Palestinian PM Rami Hamdallah"۔ بی بی سی۔ اخذ شدہ بتاریخ 6 جون 2013۔
  6. "فلسطینی وزیراعظم رامی حمداللہ مستعٰفی"۔ بی بی سی۔ اخذ شدہ بتاریخ 23 جون 2013۔
  7. ^ ا ب "New Palestinian Authority government carbon copy of old"۔ لاس اینجلس ٹائمز۔ مورخہ 24 ستمبر 2013 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 فروری 2014۔
  8. "Palestinian unity government sworn in by Mahmoud Abbas"۔ بی بی سی۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 جون 2014۔
  9. http://www.passia.org/palestine_facts/personalities/alpha_h.htm
  10. Scott Bobb۔ "Palestinians Give Mixed Reaction to New Prime Minister"۔ وائس آف امریکہ۔ یروشلم۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2013۔
  11. ماہر ابوخاطر؛ ایڈمنڈ سینڈرز۔ "Palestinian Authority picks Rami Hamdallah as prime minister"۔ Los Angeles Times۔
  12. ایسابیل کیرشنر۔ "New Palestinian prime minister submits resignation after two weeks"۔ دی بوسٹن گلوب۔ یروشلم۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2013۔
  13. نوا براؤننگ۔ "New Palestinian prime minister offers resignation"۔ روئٹرز۔ رام اللہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2013۔
  14. جیک کھوری۔ "Abbas accepts resignation of newly appointed Palestinian PM Hamdallah"۔ ہاریٹز۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 جون 2013۔
  15. یوسف باسل۔ "Abbas accepts resignation of Palestinian prime minister"۔ سی این این۔ اخذ شدہ بتاریخ 3 جولائی 2013۔
  16. "Palestinian PM Hamdallah survives Gaza explosion"۔ بی بی سی۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 مارچ 2018۔