رام کرشن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
رام کرشن
Ramakrishna.jpg
دکشی نیشور میں رام کرشن
ذاتی
پیدائش
گدادھر چٹوپادھیائے

18 فروری 1836(1836-02-18)
وفات 16 اگست 1886(1886-80-16) (عمر  50 سال)
مذہب ہندومت

رام کرشن پرم ہنس (18 فروری 1836ء – 16 اگست 1886ء)[1][2][3][4][5][6][7] انیسویں صدی عیسوی میں ہندوستان کے ایک سنت اور یوگی تھے۔ ان کا پیدائشی نام گدادھر چٹرجی یا گدادھر چٹوپادھیائے تھا۔ رام کرشن آغاز شباب ہی میں روحانی سرمستیوں سے گزر چکے تھے اور مختلف مذاہب کی روایتوں اور فلسفوں کے دلدادہ تھے جن میں کالی، تنتر، ویشنو بھکتی اور ادویت ویدانت قابل ذکر ہیں۔ اہل بنگال میں ان کے انتہائی احترام و عقیدت ہی کا نتیجہ تھا کہ ان کے مشہور شاگرد سوامی ویویکانند نے رام کرشن مشن کی بنیاد رکھی۔ رام کرشن کے معتقدین انہیں برہم کا اوتار مانتے ہیں جبکہ بعض انہیں وشنو کا اوتار سمجھتے ہیں۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

پیدائش اور بچپن[ترمیم]

رام کرشن پرم ہنس 18 فروری 1836ء[1] کو مغربی بنگال کے ضلع ہوگلی میں واقع کامار پکور گاؤں میں پید ہوئے۔ ان کا خاندان انتہائی غریب لیکن پاک باز برہمن تھا۔[8] اس وقت تک کامار پکور میں شہری زندگی کے آثار نہیں پہنچے تھے، وہاں چاول کے کھیت، کھجور کے اونچے اونچے درخت، کیلے، کچھ جھرنے اور دو شمشان گھاٹ تھے۔ ان کے والد کا نام کھودی رام چٹوپادھیائے اور والدہ کا نام چندرمنی دیوی تھا۔ رام کرشن کے پیروکاروں کے بقول، ان کی پیدائش سے پہلے ان کے والدین کے ساتھ کچھ مافوق الفطرت واقعات بھی پیش آئے تھے۔ گیا میں ان کے والد خودی رام نے ایک خواب دیکھا جس میں بھگوان گدادھر (وشنو کا ایک روپ) نے ان سے کہا کہ وہ ان کے بیٹے کی شکل میں جنم لیں گے۔ اسی طرح رام کرشن کی والدہ چندرمنی دیوی نے دیکھا کہ شیو مندر کی روشنی ان کے رحم میں داخل ہو رہی ہے۔[9][10]

رام کرشن بارہ برس کی عمر تک اپنے گاؤں کے اسکول میں تعلیم حاصل کرتے رہے لیکن بعد میں انہوں نے یہ کہہ کر اسکول جانا ترک کر دیا کہ انہیں اس ذریعہ معاش بننے والی تعلیم سے دلچسپی نہیں ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب http://belurmath.org/kids_section/birth-of-sri-ramakrishna/
  2. "Feature"۔ pib.nic.in۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  3. "Sri Ramakrishna By Swami Nikhilananda"۔ www.ramakrishna.org۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  4. Dr. S. N. Pandey (1 ستمبر 2010)۔ "West Bengal General Knowledge Digest"۔ Upkar Prakashan۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  5. "Biography of Sri Ramakrishna"۔ 30 جنوری 2012۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  6. Dharam Vir Mangla (1 اپریل 2016)۔ "Great Saints & Yogis"۔ Lulu Press, Inc۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  7. Kamarpukur is a village of Hooghly district in West Bengal | Holiday Hotspot
  8. Heehs 2002، صفحہ۔ 430.
  9. Chatterjee 1993، صفحات۔ 46–47.
  10. Harding 1998، صفحات۔ 243–244.

بیرونی روابط[ترمیم]