رفیق خاور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
رفیق خاور
پیدائش میاں محمد رفیق حسین
15 فروری 1908(1908-02-15)ء
راولپنڈی، برطانوی ہندوستان (موجودہ پاکستان)
وفات 14 مئی 1990(1990-50-14) (عمر  82 سال)
کراچی، پاکستان
آخری آرام گاہ پی ای سی ایچ ایس قبرستان, کراچی
قلمی نام رفیق خاور
پیشہ شاعر، محقق، نقاد، ماہر لسانیات، مترجم
زبان اردو
نسل پنجابی
شہریت Flag of پاکستانپاکستانی
نمایاں کام خاقانی ہند
اُردو تھیسارس
حرف نشاط آورلبِ کوثر
پاکستان کے گیت

رفیق خاور (پیدائش: 15 فروری، 1908ء - وفات: 14 مئی، 1990ء) اردو زبان کے پاکستان سے تعلق رکھنے والے ممتاز محقق، شاعر، نقاد، ماہر لسانیات اور مترجم تھے۔

حالات زندگی[ترمیم]

رفیق خاور 15 فروری، 1908ء[1] کو راولپنڈی، برطانوی ہندوستان (موجودہ پاکستان) میں پیدا ہوئے۔ ان اصل نام میاں محمد رفیق حسین تھا۔[2][3]

ادبی خدمات[ترمیم]

رفیق خاور کی تصانیف میں خاقانیٔ ہند، ابر گہر بار، پدما سے چناب تک، اقبال اور اس کا پیغام اور حرف نشاط آور لبِ کوثر کے نام شامل ہیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے اردو تھیسارس بھی مرتب کیا جو اشاعت پزیر ہوچکا ہے۔ ان کے تراجم کی فہرست بھی بہت طویل ہے۔ وہ کئی زبانوں کے ماہر تھے اور منظوم و منثور تراجم پر یکساں عبور رکھتے تھے۔[3]

تصانیف[ترمیم]

  • خاقانی ہند (تنقید)
  • اُردو تھیسارس (لسانیات)
  • حرف نشاط آورلبِ کوثر (فارسی شاعری)
  • ہماری موسیقی
  • پاکستان کے گیت
  • پدما سے چناب تک (سفرنامہ)
  • ابر گہربار (مثنوی)
  • اقبال اور اُس کا پیغام (بہ اشتراک ڈاکٹر میاں تصدق حسین خالد) (اقبالیات)

رفیق خاور کے فن و شخصیت پر کتب ومقالہ جات[ترمیم]

  • رفیق خاور: احوال و آثار ،(پی ایچ ڈی مقالہ)، ڈاکٹر عبد الرؤف،، پنجاب یونیورسٹی،لاہور، 2004ء

وفات[ترمیم]

رفیق خاور 14 مئی، 1990ء کو کراچی، پاکستان میں وفات پاگئے اور کراچی میں پی ای سی ایچ ایس قبرستان میں سپردِ خاک ہوئے۔[2][3][1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب ڈاکٹر محمد منیر احمد سلیچ، وفیات ناموران پاکستان، اردو سائنس بورڈ لاہور، 2006ء، ص 328
  2. ^ ا ب رفیق خاور، سوانح و تصانیف ویب، پاکستان
  3. ^ ا ب پ عقیل عباس جعفری، پاکستان کرونیکل، ورثہ / فضلی سنز، کراچی، 2010ء، ص 669