رمن سنگھ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
رمن سنگھ
Dr Raman Singh at Press Club Raipur Mood 2.jpg 

مناصب
وزیر اعلیٰ چھتیس گڑھ (2 )   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
دفتر میں
7 دسمبر 2003  – 16 دسمبر 2018 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png اجیت جوگی 
بھوپیش بگھیل  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 15 اکتوبر 1952 (67 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
کوردھا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
رہائش چھتیس گڑھ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب ہندو مت
جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان،  طبیب  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

رمن سنگھ ایک بھارتی سیاست دان اور 7 دسمبر 2003ء سے 16 دسمبر 2018ء تک چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ رہے۔ وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن ہیں۔ رمن ای این ٹی آیورویدک طبیب ہیں۔

پس منظر[ترمیم]

رمن سنگھ 23 اکتوبر 1952ء کو کوردھا، مدھیہ پردیش (موجودہ چھتیس گڑھ، بھارت) میں پیدا ہوئے۔[1] ان کی پیدائش ایک راجپوت خاندان میں ہوئی تھی۔ ان کی موجودہ راجپوت برادری ایک مضبوط سیاست دان اور بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئر لیڈر سے بہت قریب ہے۔ انہیں آیوروید میں مہارت حاصل ہے۔

سیاسی زندگی[ترمیم]

1976ء-77ء میں رمن نے بھارتیہ جن سنگھ کے یوتھ ونگ میں شمولیت اختیار کی اور یوتھ ونگ کے صدر بن گئے۔ سنہ 1983ء میں وہ کوردھا بلدیہ کے کونسلر بننے میں کامیاب ہو گئے۔[1]

سنہ 1990ء اور سنہ 1993ء میں وہ مدھیہ پردیش قانون ساز اسمبلی کے دو مرتبہ رکن منتخب ہوئے۔ 1999ء میں چھیس گڑھ کے راجنندگاؤں سے تیرہویں لوک سبھا کے رکن منتخب ہوئے۔ اٹل بہاری واجپائی کی حکومت میں وہ 1999ء سے 2003ء تک وزیر مملکت برائے تجارت تھے۔ چھتیس گڑھ کی نئی ریاست بننے کے بعد انہیں وہاں کا بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) صدر بنایا گیا اور جماعت کو سنہ 2003ء کے ریاستی اسمبلی انتخابات میں جیت دلوائی۔[2] دلیپ سنگھ جودیو جو وزیر اعلیٰ کے عہدے کے لیے مضبوط مدمقابل تھے، پر بدعنوانی کے الزامات کی وجہ سے بی جے پی قیادت نے رمن سنگھ کو وزیر اعلیٰ کے طور پر نامزد کر دیا۔[3] اپنی تنظیمی قابلیتوں کے لیے انہوں نے داد وصول کی۔[3]

سنہ 2002ء میں انہوں نے مہیندر کرما جنہیں 25 مئی 2013ء میں نیکسلیوں نے قتل کر دیا تھا، کی تحریک سلوا جڈم کی حمایت کرتے ہوئے چھتیس گڑھ میں نیکلسی تنظیموں پر پابندی عائد کر دی۔[4] 12 دسمبر 2008ء کو انہوں نے دوسری مرتبہ عہدے کا حلف اٹھایا۔[5] 2013ء کے انتخابات جیت کر وہ تیسری مرتبہ چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ منتخب ہو گئے۔[6]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Biodata: Dr. Raman Singh" (پی ڈی ایف)۔ حکومتِ چھتیس گڑھ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 نومبر 2013۔
  2. "Governor invites Raman Singh"۔ دی ہندو۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 نومبر 2013۔
  3. ^ ا ب دیویکا چھبر۔ "Chhattisgarh: CMs in the wings"۔ زی نیوز۔ مورخہ 12 اپریل 2013 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 نومبر 2013۔
  4. سمیتا گپتا۔ "Congress to train its guns on Raman Singh"۔ دی ہندو۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 نومبر 2013۔
  5. "CHHATTISGARH: Raman's clean image helped BJP"۔ آئی بی این لائیو۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 نومبر 2013۔
  6. سووجیت باگچھی۔ "A record 74.65% polling in Chhattisgarh phase-II"۔ دی ہندو۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔