رنگا سوہونی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
رنگا سوہونی
ذاتی معلومات
پیدائش5 مارچ 1918(1918-03-05)
نمباہیرا، برٹش انڈیا (اب راجستھان، بھارت )
وفات19 مئی 1993(1993-50-19) (عمر  75 سال)
تھانہ، مہاراشٹرا، ہندوستان
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا آف بریک گیند باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 35)20 جولائی 1946  بمقابلہ  انگلینڈ
آخری ٹیسٹ14 دسمبر 1951  بمقابلہ  انگلینڈ
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ فرسٹ کلاس
میچ 4 109
رنز بنائے 89 4,037
بیٹنگ اوسط 16.60 28.71
100s/50s 0/0 8/20
ٹاپ اسکور 29* 218*
گیندیں کرائیں 532 15,634
وکٹ 2 232
بولنگ اوسط 101.00 32.96
اننگز میں 5 وکٹ - 11
میچ میں 10 وکٹ - 2
بہترین بولنگ 1/16 7/20
کیچ/سٹمپ 2 69
ماخذ: [1]

سری رنگا واسودیو 'رنگا' سوہونی audio speaker iconpronunciation </img> audio speaker iconpronunciation (پیدائش: 5 مارچ 1918ء، نمبہیرا ، انڈیا - انتقال: 19 مئی 1993ء، تھانہ ، مہاراشٹرا ) ایک ہندوستانی ٹیسٹ کرکٹر تھا۔ وہ ایک آل راؤنڈر تھے، دباؤ میں اچھی بیٹنگ کرتے تھے اور جنوبی ایشیائی سطحوں پر انتھک باؤلنگ کرتے تھے۔ [1]

انٹرنیشنل کرکٹ[ترمیم]

سوہونی نے ہندوستانی ٹیم کے ساتھ 1946ء میں انگلینڈ اور 1947/48ء میں آسٹریلیا کا دورہ کیا۔ انھوں نے انگلینڈ کے خلاف باؤلنگ کا آغاز کیا وہ 2 ٹیسٹ ہیں جو انھوں نے سابق دورے میں کھیلے۔ اولڈ ٹریفورڈ میں دتارام ہندلیکر اور سوہونی کی آخری وکٹ کی شراکت نے شکست سے بچنے کے لیے 13 منٹ تک انتظار کیا۔ [2]

ڈومیسٹک کرکٹ[ترمیم]

تین دہائیوں پر محیط 108 فرسٹ کلاس میچوں میں سوہونی نے 8 سنچریوں کے ساتھ 28.17 کی اوسط سے 4,307 رنز بنائے۔ اس نے 32.96 کی اوسط سے 232 وکٹیں بھی حاصل کیں جس میں 11 پانچ وکٹیں اور 2 دس وکٹیں حاصل کیں۔ رنجی ٹرافی میں ان کے نمبر غیر معمولی تھے (42 میچز، 34.87 پر 2,162 رنز، 24.49 پر 139 وکٹیں)۔ بدقسمتی سے ان کی بیسیوں کا زیادہ تر حصہ دوسری جنگ عظیم نے چھین لیا جس میں بہت کم کرکٹ دیکھی گئی۔ [2] سوہونی نے رنجی ٹرافی میں بمبئی, مہاراشٹر اور بڑودہ کے لیے کھیلا۔ اس نے پہلی دو ٹیموں کے ساتھ ٹائٹل جیتے اور بڑودہ کے ساتھ 1948-49 کے فائنل میں ہار گئے۔ انہوں نے 11 رنجی میچوں میں بمبئی اور مہاراشٹر کی کپتانی کی اور 1953-54 میں بمبئی کی جیت میں کپتانی کی۔ سوہونی نے 1938-39 اور 1940-41 کے درمیان بمبئی یونیورسٹی کی طرف سے کھیلا اور ان سالوں کے دوسرے سالوں میں ان کی کپتانی کی۔ وہ ایک غیر سرکاری ٹیسٹ میں بھی نظر آئے۔ رنجی ٹرافی میں ان کا بہترین سیزن 1940-41 تھا جب اس نے مہاراشٹر کو اپنا ٹائٹل برقرار رکھنے میں مدد کی۔ زونل فائنل میں ویسٹرن انڈیا کے خلاف اس نے کیریئر کا بہترین 218* رنز بنائے اور وجے ہزارے کے ساتھ چوتھی وکٹ کے لیے 342* بنائے جو کہ کسی بھی وکٹ کے لیے ہندوستانی ریکارڈ ہے۔ مدراس کے خلاف فائنل کی آخری اننگز میں اس نے گرتی ہوئی وکٹ پر 104 رنز بنائے۔ انہوں نے رنجی سیزن میں پانچ سنچریوں کے ساتھ تمام فرسٹ کلاس میچوں میں 131 اور 808 کی اوسط سے 655 رنز بنائے جو کہ ایک نیا ریکارڈ ہے۔

ذاتی اور پیشہ ورانہ زندگی[ترمیم]

سوہنی "لمبا، میلی جلد اور ہلکی آنکھوں والی" تھی جس میں "فلم سٹار لگتے تھے"۔ انہیں وی شانتارام نے فلموں میں کردار کی پیشکش کی تھی۔ وہ لوئر ہاؤس کلب کے ساتھ لنکاشائر لیگ میں پرو تھا۔ انہوں نے بی اے (آنرز) کیا اور مہاراشٹر کی حکومت میں کلاس I افسر کی حیثیت سے ریٹائر ہونے سے پہلے مختلف سرکاری محکموں میں خدمات انجام دیں۔

انتقال[ترمیم]

ان کی موت 19 مئی 1993ء کو دل کا دورہ پڑنے سے تھانہ، مہاراشٹر، (عمر 75 سال 75 سال) ہوئی تھی۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Mukherjee، Abhishek. "Ranga Sohoni: Maharashtra's champion all-rounder". Cricket country. اخذ شدہ بتاریخ 08 فروری 2017. 
  2. Mukherjee، Abhishek. "Ranga Sohoni: Maharashtra's champion all-rounder". Cricket country. اخذ شدہ بتاریخ 08 فروری 2017.