ریاست پالنپور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
પાલનપુર રિયાસત
पालनपुर रियासत
ریاست پالنپور
برطانوی ہند کی نوابی ریاست
1370–1948
پرچم نشان
پرچم نشان
Location of پالنپور
Map of Palanpur State area in 1922
تاریخ
 -  قیام 1370
 -  تحریک آزادی ہند 1948
رقبہ
 -  1940 4,574 کلومیٹر2 (1,766 مربع میٹر)
آبادی
 -  1940 315,855 
کثافت 69.1 /کلومیٹر2  (178.9 /مربع میٹر)
آج کا حصہ بھارت
وبط= اس مضمون میں ایسے نسخے سے مواد شامل کیا گیا ہے جو اب دائرہ عام میں ہے: ہیو چشولم (ویکی نویس.)۔ "Palanpurدائرۃ المعارف بریطانیکا (اشاعت 11ویں۔)۔ کیمبرج یونیورسٹی پریس۔

ریاست پالنپور ہندوستان کے عہد استعمار کی ایک نوابی ریاست جو پالنپور ایجنسی کی سب سے اہم ریاست سمجھی جاتی تھی۔ نواب پالنپور کو تیرہ توپوں کی سلامی دی جاتی تھی۔ سنہ 1809ء میں ریاست پالنپور برطانیہ کے زیر نگین آگیا۔ اس کا پایہ تخت پالنپور شہر تھا۔ ریاست کی اہم پیداوار گیہوں، چاول اور گنے تھے۔

جغرافیہ[ترمیم]

ریاست پالنپور کا کل رقبہ 4574 مربع کلومیٹر پر محیط تھا اور سنہ 1901ء میں اس کی آبادی 222627 نفوس پر مشتمل تھی، صرف پالنپور شہر میں 17800 افراد رہتے تھے۔ ریاست کی سالانہ آمدنی پچاس ہزار یورو تھی۔[1]

تاریخ[ترمیم]

سنہ 1370ء میں ریاست پالنپور کی بنیاد پڑی۔[2] اس ریاست کے حکمران پشتون لوحانی قبیلہ سے تعلق رکھتے تھے۔ قبل ازیں یہ خاندان بارہویں صدی عیسوی میں بہار میں تھا اور وہاں سلطان کا لقب اختیار کرکے حکمرانی کرتا تھا۔ پالنپور گھرانے کے بانی ملک خرم خان نے چودھویں صدی عیسوی کے اواخر میں بہار کو خیرباد کہا اور منڈور کے وشال دیو کی خدمت میں رہنے لگے۔ کچھ ہی عرصے بعد ملک خرم کو سون گڑھ کا عامل بنا دیا گیا۔ تاہم یہ خاندان اورنگ زیب عالمگیر کی وفات کے بعد اٹھارہویں صدی عیسوی کی ابتدا میں مغلیہ سلطنت کے عدم استحکام کے دور میں مشہور ہوا۔ جلد ہی اس ریاست پر مرہٹوں کا تسلط قائم ہو گیا۔ اس حالت میں لوحانیوں نے مرہٹوں کے خلاف برطانوی ایسٹ انڈیا کمپنی سے مدد چاہی اور بالآخر سنہ 1817ء میں انگریزوں سے معاہدہ کرکے ان کے زیر نگین آگئے۔ اس کے ساتھ دوسری ریاستوں پر بھی انگریزوں کی عمل داری قائم ہو چکی تھی۔ سنہ 1949ء میں ریاست پالنپور بھارت ڈومنین میں ضم ہو گیا۔[3]

حکمران[ترمیم]

ریاست پالنپور کے فرماں رواؤں کا تعلق پشتون قبیلے لوحانی سے تھا۔[4] تمام فرماں وراؤں نے اپنے لیے "دیوان" کا لقب استعمال کیا بجز آخری دو حکمرانوں کے، وہ نواب کا لقب استعمال کرنے لگے تھے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1.  ہیو چشولم (ویکی نویس.)۔ "Palanpurدائرۃ المعارف بریطانیکا (اشاعت 11ویں۔)۔ کیمبرج یونیورسٹی پریس۔
  2. Princely States - Palanpur
  3. Princely States of India
  4. States before 1947 K-W

بیرونی روابط[ترمیم]

متناسقات: 24°10′N 72°26′E / 24.17°N 72.43°E / 24.17; 72.43