ریختہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ریختہ
مقامی  Flag of India.svg بھارت
علاقہ جنوبی ایشیا
دور 18 ویں صدی تک
نستعلیق
زبان رموز
آیزو 639-3
urd-rek

ریختہ اردو زبان کی ادبی بولی ہے۔ یہ اردو زبان کے پرانے ناموں میں سے ایک ہے۔

مشہور شاعر مرزا اسد اللہ خان غالب نے ریختہ کے بارے میں کہا تھا کہ

ریختہ کے تم ہی استاد نہیں ہو غالب

کہتے ہیں اگلے زمانے میں کوئی میر بھی تھا

لفظ ریختہ پر اردو کلاسیکی شاعری میں بہت سے اشعار ملتے ہیں۔ مثلاً میر تقی میر دہلوی کا ایک شعر ہے

ریختہ کاہے کو تھا رتبۂ اعلیٰ پہ میر

جو زمیں نکلی اسے تا آسماں لے گیا

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]