سدھار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اگستھیار، پہلے سِدھ

سِدّھار (تمل: سیتر) تمل میں دانشور افراد کے لیے استعمال کی جانے والی اصطلاح ہے۔ سدھان سختی سے کچھ علمی مشقوں پر عمل کر کے دانشورانہ طاقتیں حاصل کرتا ہے، جسے سِدھی کہتے ہیں۔

تاریخی طور پر، سدھار وہ لوگ ہوتے، جو ابتدائی عمر میں تمل تعلیمات اور فلسفے میں مہارت حاصل کرلیتے تھے۔ یہ لوگ سائنس، ٹیکنالوجی، فلکیات، ادب، فنون لطیفہ، موسیقی، ناٹک، رقص اور عام لوگوں کو ان کی بیماری کا حل اور ان کے مستقبل کے لیے مشورہ دینے میں ماہر تھے۔[1] کہا جاتا ہے کہ ان کے کچھ نظریات پہلے سنگم دور کے دوران شروع ہوئے تھے۔[2][3][4]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Meditation Revolution: A History and Theology of the Siddha Yoga Lineage۔ Motilal Banarsidass Publ.۔ آئی ایس بی این 9788120816480۔
  2. M. Arunachalam S. Cunjithapatham۔ Musical tradition of Tamilnadu۔ International Society for the Investigation of Ancient Civilizations۔ صفحہ 11۔
  3. Journal of Indian history, Volume 38۔ Dept. of History, University of Kerala۔
  4. Richard Weiss۔ Recipes for Immortality : Healing, Religion, and Community in South India: Healing, Religion, and Community in South India۔ Oxford University Press۔ صفحہ 80۔ آئی ایس بی این 9780199715008۔