سر کشیترا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فائل:Sur Kshetra.jpg
تحریرمنوج منتشر
ہدایات گجیندر سنگھ
پیش کردہعائشہ ٹاکیہ
منصفعابدہ پروین
آشا بھوسلے
رونا لیلیٰ
افتتاحی تھیمجیت سنگیت کی
نشر
  • انڈیا
  • پاکستان
زبان
  • انڈیا
  • پاکستان
اقساط32
تیاری
فلم سازسائی بابا ٹیلی فلمز
عکس نگاریگیان سہائے
دورانیہ65–69 منٹ فی قسط
نشریات
چینل
8 ستمبر 2012ء (2012ء-09-08) – 29 دسمبر 2012 (2012-12-29)
سر کشیترا
سانچہ:Infobox reality competition season

سور کشیترا سال 2012 کا گائیکی ٹیلنٹ شو کہہ لیں یا دو پڑوسی ممالکپاکستان اور بھارتی ٹیموں کے درمیان موسیقی کی جنگ ۔ شو کی میزبانی بھارتی اداکارہ عائشہ ٹاکیہ نے کی ۔ پاکستانی ٹیم کی قیادت گلوکار، میوزک ڈائریکٹر، میوزک کمپوزر، اداکار عاطف اسلم کررہے ہیں اور بھارتی ٹیم کی قیادت میوزک ڈائریکٹر ہمیش ریشمیا کررہے ہیں۔ [1] [2] [3]

اسے بھارت میں کلرز ٹی وی اور سہارا ون ، پاکستان میں جیو ٹی وی اور آگ ٹی وی پر دکھایا گیا ہے۔ [4] اس شو کو سائیں بابا ٹیلی فلمز نے پروڈیوس کیا اور اس کی ہدایت کاری گجیندر سنگھ نے کی ہے، جس کے پروڈکشن ہیڈ سنتوش شینڈے ہیں۔ شو کے تخلیقی ڈائریکٹر کشونش پالیت ہیں اور ایسوسی ایٹ کریٹو ڈائریکٹر محمد فیضان ہیں۔

شو کا اختتام دونوں ٹیموں کے درمیان فائنلسٹ کے آمنے سامنے آنے پہ ہوا، جس میں پاکستان کے نبیل شوکت علی نے ٹائٹل جیتا۔

فارمیٹ[ترمیم]

مقابلہ کرنے والوں کا فیصلہ جیوری ممبران ان کی کارکردگی کی بنیاد پر کیا اور انہیں نمبروں سے نوازا گیا جو کہ صفر سے دس ہوتے ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر جیوری کو کارکردگی پسند ہے تو وہ 10 دیں گے ورنہ 0۔ اس کے بعد انفرادی مدمقابل کے نشانات ٹیم کے لحاظ سے شامل کیے جاتے ہیں اور زیادہ اسکور والی ٹیم جیت جاتی ہے اور جیتنے والی ٹیم کے کپتان کو فائنلسٹ کرسیوں کے لیے مقابلہ کرنے کے لیے ایک شریک کا انتخاب کرنا پڑتا ہے۔ چار اقساط کے بعد فیس آف ہوتا ہے اور فیس آف کے فاتح کو فائنلسٹ کرسی مل جاتی ہے جس کا مطلب ہے فائنل میں سیدھا داخلہ، جبکہ ہارنے والے کپتان کو اپنے ایک مدمقابل کو ختم کرنا ہوتا تھا ۔

فائنلسٹ[ترمیم]

شو کے آغاز میں 5 فائنلسٹ کرسیاں تھیں۔ سارہ رضا خان جیوری کے فیصلے کی بنیاد پر فائنلسٹ کی نشست پر بیٹھنے والی پہلی مدمقابل تھیں۔ ملازم حسین فیس آف جیت کر دوسرے فائنلسٹ بن گئے۔ یشراج کپل تیسرے فائنلسٹ کی کرسی پر بیٹھے کیونکہ کپتان ہمیش ریشمیا نے اپنی ٹیم کے تیسرے فائنلسٹ کا فیصلہ ججوں پر چھوڑ دیا۔ بدھادتیہ مکھرجی چوتھی کرسی کے لیے مقابلہ جیت کر چوتھے فائنلسٹ بن گئے۔ پانچویں کرسی کی جنگ انتہائی دلچسپ ثابت ہوئی کیونکہ پاکستان کے نبیل شوکت علی اور ٹیم انڈیا کے دلجان آمنے سامنے ہوئے۔ آمنے سامنے ہونے کے بعد کافی ڈرامہ ہوا کیونکہ دونوں مدمقابل نے بہت اچھا گایا اور جیوری ممبران کے لیے یہ فیصلہ کرنا بہت مشکل ہو گیا کہ پانچویں فائنلسٹ کون ہونا چاہیے آشا بھوسلے دلجان کو فائنلسٹ بنانا چاہتی تھیں جبکہ عابدہ پروین چاہتی تھیں کہ نبیل شوکت علی۔ پانچویں فائنلسٹ بنیں۔ غیر جانبدار جج رونا لیلیٰ نے فیصلہ لینے سے انکار کرتے ہوئے شو سے واک آؤٹ کرنے کی دھمکی دے دی۔ کافی ڈرامے کے بعد بالآخر فیصلہ ہوا کہ پانچ کی بجائے چھ فائنلسٹ ہوں گے اور اسی لیے دلجان اور نبیل شوکت علی دونوں نے فائنل میں جگہ بنائی۔ اور فائنل میں پاکستان کے نبیل شوکت علی نے فیس آف راؤنڈ میں دلجان کو ہرا کر ٹائٹل جیتا۔ [5]

اختتام[ترمیم]

ٹیم انڈیا سے شہزاد علی سب سے پہلے آؤٹ ہوئے۔ ٹیم انڈیا کی طرف سے اندرانی بھٹاچرجی بھی اگلی باہر جانے والی ممبر تھیں۔ ٹیم پاکستان کے امیر علی تیسرے اور عمران علی اس کے بعد باہر ہونے والے تیسرے کھلاڑی بن گئے۔ جیسے ہی دلجان اور نبیل شوکت علی کو پانچویں فائنلسٹ چیئر کے لیے مدمقابل منتخب کیا گیا، امان تریخہ اور ندیم عباس کو باہر کردیا گیا۔

آخر میں بینچ پر چھ فائنلسٹ تھے۔ تین پاکستان سے اور تین ہندوستان سے۔ پری فائنل میں یہ اعلان کیا گیا تھا کہ کم سے کم نمبروں والے دو فائنلسٹ کو باہر کر دیا جائے گا اور باقی چار شرکاء گرینڈ فائنلز میں جائیں گے۔ سارہ رضا خان اپنی صحت کی وجہ سے آخری دوقبل از فائنلز میں حصہ نہیں لے سکی تھیں اس لیے وہ بدھا دتیہ کے ساتھ باہر ہو گئیں کیونکہ ان کے سب سے کم نمبر تھے۔

Pakistan کی موسیقی
Overload Dhol Player.jpg
میدان
خصوصی اقسام
مذہبی موسیقی
ثقافتی موسیقی
ذرائع ابلاغ و کارکردگی
موسیقی اعزازاتلکس اسٹائل اعزاز
Hum Awards
Pakistan Media Awards
موسیقی میلےAll Pakistan Music Conference
موسیقی میڈیا
قومی و ملی نغمے
قومی ترانہقومی ترانہ (پاکستان)
علاقائی موسیقی
مقامی اقسام
Related areas

جیوری کے ارکان[ترمیم]

مہمان جیوری کے ارکان[ترمیم]

ٹیم پاکستان[ترمیم]

کیپٹن: عاطف اسلم کوچ: رستم فتح علی خان

ممبران[ترمیم]

ٹیم انڈیا[ترمیم]

کپتان: ہمیش ریشمیا کوچ: ہمیش ریشمیا

ممبران[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Sur Kshetra Latest Promo Atif Aslam Sur Kshetra. Retrieved 4 January 2012
  2. Himesh Reshammiya, Atif Aslam set for battle on show Sur-Kshetra. oneindia Entertainment. 22 December 2011. Retrieved 23 December 2011.
  3. Indian will come to know about Pakistan's culture: Atif Aslam. Retrieved 25 December 2011
  4. Sur Kshetra Sur Kshetra
  5. Nabeel Shaukat Ali wins Sur Kshetra Retrieved on 29 Dec 2012

بیرونی روابط[ترمیم]

سانچہ:Colors Programmesسانچہ:Pakistani reality television series