سعید بن احمد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سعید بن احمد
معلومات شخصیت
پیدائش 18ویں صدی  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عمان  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات سنہ 1810 (9–10 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن رستاق، عمان  ویکی ڈیٹا پر (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Oman.svg عمان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد حامد بن سعید  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد احمد بن سعید البو سعیدی  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
خاندان آل سعید  ویکی ڈیٹا پر (P53) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دیگر معلومات
پیشہ امام،  شاعر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

سعید بن احمد (وفات: 1803ء) عمان کے امام اور سلطان تھے، یہ السعید خاندان کے دوسرے سلطان تھے، انہوں نے 1783ء اور 1786ء کے درمیان ملک پر حکومت کی۔

حکمرانی[ترمیم]

سعید بن احمد امام اور سلطان احمد بن سعید البوسعیدی کے بیٹے تھے، اور 1783ء میں اپنے والد کی وفات پر امام منتخب ہوئے تھے۔ سعید نے دارالحکومت رستاق پر قبضہ کر لیا۔

ان کے بھائیوں سیف اور سلطان بن احمد نے شمل قبائلی گروہ کے شیخ سکر سے ملاقات کی تاکہ وہ تخت حاصل کرنے میں مدد کریں۔ شیخ نے الجزیرہ الحمرا، شارجہ، رمز اور خورفکان (تمام آج کے متحدہ عرب امارات میں) کے قصبوں کو لے لیا۔ سعید دوبارہ لڑا، لیکن ان شہروں کو دوبارہ حاصل کرنے میں ناکام رہا۔

تاہم، سیف اور سلطان کو لگا کہ ان کے لیے عمان میں رہنا بہت خطرناک ہے۔ سیف نے اپنے آپ کو وہاں ایک حکمران کے طور پر قائم کرنے کا ارادہ کرتے ہوئے مشرقی افریقہ کا سفر کیا۔[1] اس کے فوراً بعد وہیں انتقال کر گئے۔ سلطان بلوچستان کے مکران ساحل پر گوادر فرار ہو گیا۔[2]

امام روز بروز غیر مقبول ہو رہے تھے۔ 1785ء کے آخر میں معززین کے ایک گروپ نے اپنے بھائی قیس بن احمد کو امام منتخب کیا۔ یہ بغاوت جلد ہی دم توڑ گئی۔[3]

بعد میں سعید کے ایک بیٹے کو مسقط کے گورنر نے ایک مدت کے لیے قلعہ الجلالی میں قید رکھا۔ ایک اور بیٹا حماد بن سعید گورنر سے مذاکرات کے لیے آیا۔ حماد اور اس کے پیروکار قلعوں الجلالی اور المیرانی اور اس طرح مسقط پر کنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے۔[4]

یہ 1786ء میں ہوا تھا۔ ایک ایک کر کے عمان کے دوسرے قلعوں نے حماد کے سپرد کر دیا، یہاں تک کہ سعید کو کوئی وقتی طاقت نہ رہی۔[5]

حماد نے شیخ کا لقب اختیار کیا اور مسقط میں اپنا دربار قائم کیا۔ سعید بن احمد رستاق میں رہے اور امام کا لقب برقرار رکھا، لیکن یہ خالصتاً ایک علامتی مذہبی لقب تھا جس میں کوئی طاقت نہیں تھی۔[6]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Miles 1919, p. 281.
  2. Miles 1919, p. 282.
  3. Miles 1919, p. 282-283.
  4. Peterson 2007, p. 72.
  5. Miles 1919, p. 283.
  6. Thomas 2011, p. 224.
شاہی القاب
ماقبل  عمان کے حکمرانوں
1783--1786ء
مابعد