سلیم الہی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
سلیم الہی ٹیسٹ کیپ نمبر136
Saleem illahi.jpeg
ذاتی معلومات
مکمل نامسلیم الٰہی
پیدائش21 نومبر 1976(1976-11-21)
ساہیوال, پنجاب,
پاکستان
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدایاں ہاتھ کا آف بریک گیند باز
حیثیتبلے باز, وکٹ کیپر
تعلقاتمنظور الہی (بھائی),
ظہور الہی (بھائی),
بابر منظور (بھتیجا)
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 136)9 نومبر 1995  بمقابلہ  آسٹریلیا
آخری ٹیسٹ2 جنوری 2003  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
پہلا ایک روزہ (کیپ 102)29 ستمبر 1995  بمقابلہ  سری لنکا
آخری ایک روزہ14 جنوری 2004  بمقابلہ  نیوزی لینڈ
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
1994–1999لاہور سٹی
1996–1997یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ
1997–2011حبیب بینک لمیٹڈ
2001لاہور وائٹس
2002لاہور بلیوز
2004لاہور
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ فرسٹ کلاس لسٹ اے
میچ 13 48 111 141
رنز بنائے 436 1,579 5,508 6,277
بیٹنگ اوسط 18.95 36.72 32.02 52.30
100s/50s 0/1 4/9 8/26 18/37
ٹاپ اسکور 72 135 229 172
گیندیں کرائیں n/a 6 42 12
وکٹ n/a 0 0 1
بالنگ اوسط n/a n/a n/a 16.00
اننگز میں 5 وکٹ n/a 0 0 0
میچ میں 10 وکٹ n/a n/a n/a n/a
بہترین بولنگ n/a 0/10 0/7 1/6
کیچ/سٹمپ 10/1 10/– 74/1 38/–
ماخذ: ESPNcricinfo، 25 July 2015

سلیم الہی ( پیدائش:21 نومبر 1976ء) پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کھلاڑی تھے جنہوں نے 1995ء سے 2004ء تک 31 ٹیسٹ میچ اور 48 ایک روزہ کرکٹ کھیلے ان کے بھائی منظور الہی ظہور الہی اور بھتیجے بابر منظور بھی کرکٹ سے وابستہ رہے سلیم الہی (اردو: سلیم الہی، پیدائش 21 نومبر 1976) ایک سابق پاکستانی کرکٹر ہیں جنہوں نے 1995 سے 2004 کے درمیان 13 ٹیسٹ میچ اور 48 ایک روزہ بین الاقوامی میچ کھیلے۔ ستمبر 1995 میں سری لنکا کے خلاف بین الاقوامی کرکٹ میں ڈیبیو کرتے ہوئے انہوں نے ناٹ آؤٹ 102 رنز بنائے، اس طرح ون ڈے ڈیبیو پر سنچری بنانے والے پاکستان کے پہلے کھلاڑی بن گئے۔ ایک محدود اوورز کے ماہر سمجھے جانے والے، الٰہی کی اوسط ون ڈے میں 36.17 اور لسٹ اے کرکٹ میں 52.30 ہے۔ اوپنر کے طور پر کھیلے گئے 48 ون ڈے میں سے 28 میں ان کی اوسط 42 تھی جو کہ کسی پاکستانی کے لیے بہترین ہے۔ انہیں فرسٹ کلاس کرکٹ میں صرف 32 کی اوسط سے محدود کامیابی ملی۔

ذاتی زندگی[ترمیم]

1976 میں ساہیوال، پنجاب، پاکستان میں پیدا ہوئے، الٰہی کے دو بڑے بھائی ہیں- منظور الٰہی اور ظہور الٰہی، دونوں نے پاکستان کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کی۔

بین الاقوامی کیریئر[ترمیم]

فرسٹ کلاس کرکٹ نہ کھیلنے کے باوجود، الٰہی کو 1995-96 میں سری لنکا کے خلاف ہوم سیریز کے لیے منتخب کیا گیا۔ گوجرانوالہ میں کھیلی گئی تین ایک روزہ بین الاقوامی میچوں کی سیریز کے پہلے میچ میں، اس نے 133 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 102 رنز بنائے اس طرح ون ڈے ڈیبیو پر سنچری بنانے والے پاکستان کے پہلے کھلاڑی بن گئے۔ کرکٹر نے جولائی 2015 تک ایسا کرنا ہے۔ اس کی مین آف دی میچ جیتنے والی اننگز نے پاکستان کو نو وکٹوں سے فتح دلائی۔ اس نے اگلے دو میچوں میں 77 رنز بنائے، اس طرح سیریز میں 179 رنز جمع ہوئے۔ اس کے بعد انہیں اسی سال شارجہ میں سنگر چیمپئنز ٹرافی کھیلنے کے لیے منتخب کیا گیا۔ دونوں ٹورنامنٹس میں مسلسل کامیابی کے ساتھ، الٰہی کو نومبر 1995 میں آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے لیے منتخب کیا گیا۔ دو ٹیسٹ میں وہ 43 رنز بنانے میں کامیاب ہوئے۔ اوسطاً 10.75۔ اس کے بعد انہیں وقفے وقفے سے منتخب کر کے سائیڈ سے ڈراپ کر دیا گیا۔ اپنے ڈیبیو اور 2002 کے درمیان، الٰہی نے پاکستان کے لیے 13 ٹیسٹ کھیلے جس میں 18.95 کی اوسط سے 436 رنز بنائے۔ ون ڈے میں اپنی کامیابی کے برعکس، وہ ٹیسٹ کرکٹ میں صرف ایک نصف سنچری اور ایک جوڑی سمیت چھ صفر بنانے میں کامیاب ہوئے۔ 2000 میں انگلینڈ میں ہونے والی سیریز کے استثناء کے ساتھ، جہاں ان کی اوسط 44.40 تھی، وہ 20 سے زیادہ اوسط کرنے میں ناکام رہے۔ سیریز میں سے کوئی بھی۔ 2002 کے آخر تک، جب پاکستان نے زمبابوے اور جنوبی افریقہ کا دورہ کیا، اس نے چار میچوں میں تین سنچریاں اسکور کیں۔ ان میں سے ایک میچ میں، 2002 میں جنوبی افریقہ کے خلاف، انہوں نے اپنا سب سے زیادہ سکور 135 بنایا۔ اس میچ میں انہوں نے عبدالرزاق کے ساتھ دوسری وکٹ کے لیے 257 رنز کی شراکت قائم کر کے پاکستان کو 335 رنز تک پہنچانے میں مدد کی۔ بالآخر انہیں 2003 کے ورلڈ کپ کے لیے منتخب کیا گیا۔ چار میچوں میں انہوں نے 102 رنز بنائے، ایک بار نصف سنچری عبور کی۔ ورلڈ کپ کے بعد، انہوں نے دو ٹورنامنٹس میں پاکستان کی نمائندگی کی جس کے بعد انہیں ٹیسٹ اور ون ڈے دونوں ٹیموں سے ڈراپ کر دیا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]