سلیم شہزاد (سیاست دان)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سلیم شہزاد (سیاست دان)
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش سنہ 1956  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 8 جولا‎ئی 2018 (61–62 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لندن[1]  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجۂ وفات پھیپھڑوں کا سرطان  ویکی ڈیٹا پر وجۂ وفات (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر طرزِ موت (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان[1]  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت متحدہ قومی موومنٹ (1984–8 جنوری 2018)[1]
پاکستان تحریک انصاف (9 جنوری 2018–8 جولا‎ئی 2018)  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عارضہ پھیپھڑوں کا سرطان  ویکی ڈیٹا پر بیماری (P1050) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
رکن قومی اسمبلی[1]   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
1988  – 1990 
رکن قومی اسمبلی   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
1990  – 1993 
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان[1]  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

سلیم شہزاد (1956 – 8 جولائی 2018ء) ایک پاکستانی سیاست دان تھے۔ سلیم شہزاد ایم کیو ایم کے بانی رہنماؤں میں سے تھے، تاہم وہ 2018ہ میں اپنی وفات سے قبل کئی سالوں سے سیاسی منظر نامے سے غائب رہے اور جنوری 2018ء میں ایم کیو ایم چھوڑ کر پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کر لی تھی۔۔[2][3][3][4]

سلیم شہزاد نے 1992ء میں ایم کیو ایم کے خلاف کیے جانے والے آپریشن کے بعد خود ساختہ جلاوطنی اختیار کرلی تھی اور 25 برس تک برطانیہ کے شہر لندن میں مقیم رہے۔ مارچ 2014ء میں ایم کیو ایم میں ایسے عناصر کی موجودگی کا بیان دیا جو کراچی میں بھتہ خوری، قتلِ عام اور اسمگلنگ جیسے واقعات میں ملوث ہیں۔ بیان جاری کرنے کے بعد اس ہی روز جماعت نے ان کی رکنیت معطل کر دی، جس کے بعد کبھی بحال نہ کی۔

25 سال کی خود ساختہ جلاوطنی کے بعد 6 فروری 2017ء کو پاکستان واپس پہنچے جہاں ان کو گرفتار کر لیا گیا۔ سلیم شہزاد پر مہاجر قومی موومنٹ (حقیقی) کے 2 کارکنوں کو اغوا کے بعد قتل کرنے اور ہنگامہ آرائی کے مقدمات درج تھے، جو لانڈھی پولیس اسٹیشن میں جولائی 1992 میں درج ہوئے تھے۔ بعد ازاں کراچی کی مقامی عدالت نے پی ٹی آئی کے سلیم شہزاد کو جلاؤ گھیراؤ اور ہنگامہ آرائی کے مقدمات میں بری کر دیا تھا۔[5]

دسمبر 2018ء میں انھوں نے اپنی نئی سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کیا، لیکن جنوری میں عمران خان سے بنی گالہ میں ملاقات کے بعد وہ پی ٹی ائی میں شامل ہو گئے۔[6]

سلیم شہزاد کو پھپھڑوں کا سرطان تھا جس کے سبب وہ 8 جولائی 2018ء کو لندن کے ایک ہسپتال میں 62 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔[4][5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت ٹ ث https://www.dawn.com/news/1418757/mqm-founding-member-saleem-shahzad-passes-away-in-london
  2. "MQM founding member Saleem Shahzad passes away in London"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 9 جولائی 2018۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  3. ^ ا ب Zia Ur Rehman۔ "Saleem Shahzad, a dreaded name in Karachi's politics"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 9 جولائی 2018۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  4. ^ ا ب "Founding leader of Pakistan's MQM passes away in UK"۔ اخذ شدہ بتاریخ 9 جولائی 2018۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  5. ^ ا ب "MQM founding member Saleem Shehzad passes away in London"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 9 جولائی 2018۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  6. https://www.dawnnews.tv/news/1081932