سندیش راسک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

سندیش راسَک (انگریزی: Sandesh Rasak، ہندی: सन्देश रासक) ایک حالاتِ جنگ سے متعلق نظم ہے جسے 1000ء1100ء کے بیچ ملتانی شاعر عبد الرحمان نے اپ بھرنش زبان میں لکھا تھا۔[1][2][3]

اسے اپ بھرنش ادب کی مثال کے طور پر پیش کیا جاتا ہے۔ یہ وہ زبان رہی ہے جو اگرچیکہ خود زندہ نہیں ہے، تاہم وہ لہندا زبانوں، پنجابی اور سندھی زبانوں کے ارتقا کا سبب بنی ہے۔[4]

موضوع[ترمیم]

یہ جنگی نطم کالی داس کے میگھ دوت سے متاثر ہے۔[5]

عبد الرحمن نے نظم کا اظہار کچھ اس طرح کیا ہے جو ہندو اور مسلمان دونوں کے نقطۂ نظر کا آئینہ دار ہے:[6]

माणुस्सदुव्वविज्जाहरेहिं णहमग्गि सूर ससि बिंबे।
आएहिं जो णमिज्जइ तं णयरे णमह कत्तारं।
اے باشندو! اپنے خالق کے آگے سجدہ ریز ہو جاؤ جس کے آگے انسان، فرشتے، وندھیارے، سورج اور چاند سجدہ ریز ہوتے ہیں۔

ثقافتی اثرات[ترمیم]

یہ کسی مسلمان شاعر یا مصنف کی جانب سے اپ بھرنش زبان میں پہلی تخلیق ہے۔ موجودہ طور پر دستیاب دستاویزوں کے حساب سے یہ واحد کام ہے جو کسی مسلمان قلم کار نے اس زبان میں کیا ہو۔[7]

اسے بابا فرید اور محمد جائسی کے پدماوت سے پہلے انجام پانے والی تخلیق تسلیم کیا گیا ہے۔ یہ پہلی تخلیق ہے جس میں راماین کو عام آدمی کی زبان میں بیان کیا گیا ہے۔[8]

اس کام کے دو مصرعوں کا حوالہ آچاریا ہیم چندر (1088ء-1173ء) نے کیا تھا۔[9]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. सन्देशरासक (Sandeś Rāsak) : संस्कृत-टिप्पनक-अवचूरिकादिसमेत अपभ्रंश मूलग्रन्थ तथा आंग्लभाषानुवाद-विस्तृत प्रस्तावना-टिप्पणी-शब्दकोषादि समन्वित अब्दुल रहमान-कृत ; संपादक, जिनविजय मुनि (مدیر: جن وجے منی), तथा हरि वल्लभ भायाणी, सिंघी जैन ग्रन्थमाला (Singhi Jain Granthamala), भारतीय विद्या भवन (بھارتیہ ودیا بھون), 1945
  2. हिन्दी साहित्य में रासो काव्य परम्परा, सन्देश रासक, Ajay Kumar
  3. Sandesh Rasak, Hazari Prasad Dwiwedi, Rajkamal Prakashan Pvt Ltd, 2003, p. 12-13 (Google Books.)
  4. Panjab Past and Present, Volume 29, Part 1, Issue 57 – Part 2, Issue 58, Punjabi University. Dept. of Punjab Historical Studies, 1995 p. 56
  5. Studies in Punjab History & Culture, Gurcharan Singh, Enkay Publishers, 1990 p. 29-30
  6. हिंदी साहित्य को मुस्लिम साहित्यकारों का योगदान (1200 ई0 से 1850 ई0 तक) प्रोफ़ेसर शैलेश ज़ैदी, श्री नटराज प्रकाशन, ए-507/12, करतार नगर,बाबा श्यामगिरी मार्ग, साऊथ गामडी एक्सटेंशन, दिल्ली-53 (Blog.)
  7. Influence of Islam on Hindi Literature, Volume 47 of IAD oriental original series: Idarah-i Adabiyat-i Delli, Saiyada Asad Alī, Idarah-i-Adabiyat-i Delli, 2000, p. 12-13, 195
  8. Indian Horizons, Volumes 48-49, Indian Council for Cultural Relations, 2001 p. 100
  9. Origin and development of Hindi/Urdu literature, Madan Gopal, 1996, Page 3