سنیتی دیوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سنیتی دیوی
(بنگالی میں: সুনীতি দেবী)،(انگریزی میں: Suniti Devi ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ریاست کوچ بہار کی مہارانی سنیتی دیوی 1902ء میں لندن میں
ریاست کوچ بہار کی مہارانی سنیتی دیوی 1902ء میں لندن میں

معلومات شخصیت
پیدائش 30 ستمبر 1864[1]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کولکاتا  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 10 نومبر 1932 (68 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رانچی  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد جیتیندر نارائن  ویکی ڈیٹا پر اولاد (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد کیشب چندر سین  ویکی ڈیٹا پر والد (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ جگنموہنی دیوی  ویکی ڈیٹا پر والدہ (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
سوچارو دیوی، کرونا چندر سین، نرمل چندر سین، پرافول چندر سین، سرل چندر سین، سوبرات چندر سین، سوجاتا دیوی، ساوتری دیوی، مونیکا دیوی  ویکی ڈیٹا پر بہن/بھائی (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ اکیڈمک، فعالیت پسند  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان بنگلہ  ویکی ڈیٹا پر مادری زبان (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان بنگلہ، انگریزی  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
کمپینین آف دی آرڈر آف دی انڈین ایمپائر  ویکی ڈیٹا پر وصول کردہ اعزازات (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

سُنیتی دیوی (1864ء–1932ء) ہند کی نوابی ریاست کوچ بہار کی مہارانی تھی۔[2]

نجی زندگی[ترمیم]

وہ کلکتہ کے برہمو سماج کے اصلاح پرست، کیشب چندر سین کی بیٹی تھی۔ جب وہ چودہ سال کی تھی تو 1878ء میں کوچ بہار کے مہاراجا، نرپیندر نارائن (1863ء–1911ء) کے ساتھ اس کا بیاہ ہوا۔  وہ بیاہ سے دو سال بعد اپنے باپ کے گھر رہی، کیونکہ نارائن اپنے بیاہ کے فوری بعد اعلٰی تعلیم کے لیے لندن روانہ ہو گیا تھا۔[3]

وہ چار بیٹوں اور تین بیٹیوں کی ماں بنی: راجیندر نارائن، جتیندر نارائن، وکٹر نتیندر نارائن، ہتیندر نارائن اور پرتبھا دیوی، سدھیرا دیوی اور سکرتی دیوی۔[4][5]

کام[ترمیم]

1887 میں، اس کے شوہر، نرپیندر نارائن کو نائٹ گرانڈ کمانڈر آف دی آرڈر آف دی انڈین آرمی (GCIE) سے نوازا گیا اور اس کو کمپینینز آف دی آرڈر آف دی انڈین آرمی (CIE) سے نوازا گیا۔ سنیتی دیوی پہلی بھارتی عورت تھی جس کو CIE سے نوازا گیا۔[6] اس نے 1898ء میں ملکہ وکٹوریہ کی ڈائمنڈ جوبلی سیلیبریشن میں اور 1911ء میں اپنے شوہر کے ساتھ دہلی دربار میں حصہ لیا۔ وہ اپنی بہن، سچارو دیوی، کے ساتھ شاندار ڈریسنگ کے لیے مشہور تھی۔[7]

اس کے شوہر نے 1881ء میں سنیتی کے نام پر ایک لڑکیوں کا اسکول سنیتی کالج  قائم کیا جس کا بعد میں نام سنیتی اکیڈمی رکھا گیا۔ اس اسکول کے قیام کے پیچھے سنیتی دیوی کی سوچ تھی۔[8]

وہ ایک ماہر تعلیم اور ایک حقوق نسواں کی کارکن تھی، وہ اداروں کو سالانہ گرانٹ دیتی تھی، طالبات کو ٹیوشن فیسوں کی چھوٹ دیتی اور کامیاب طالبات کو انعام بھی دیتی۔ اس نے طالبات کو گھر سے اسکول واپس لانے کے لیے محل کی گاڑیوں کا انتظام کیا تھا۔ کسی بھی اختلاف سے بچنے کے لیے اس نے ایک اور فیصلہ کیا، اس نے حکم دیا کہ اسکول جانے والی لڑکیوں کی گاڑیوں کی کھڑکیوں کو پردے سے ڈھکا جائے۔[9]

خطابات[ترمیم]

1887ء - اپنے شور نرپیندر نارائن کے ساتھ ملکہ وکٹوریہ کی گولڈن جوبلی تقریب میں شرکت کے موقع پر کمپینینز آف دی آرڈر آف دی انڈین آرمی سے نوازا گیا۔

وراثت[ترمیم]

اس کے شہر، کوچ بہار، کی سڑک کا نام اس کی موت کے بعد سنیتی روڈ رکھا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جی این ڈی- آئی ڈی: https://d-nb.info/gnd/104294965 — اخذ شدہ بتاریخ: 15 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: CC0
  2. "Sitter: H.H. Maharani Siniti Devi"۔ Lafayette Negative Archive۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  3. Joyoti Devi Kaye۔ Sucharu Devi, Maharani of Mayurbhanj: a Biography۔ Writers Workshop۔ صفحات 18, 24۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  4. Maharani Sunity Devi at geni.com
  5. Royal History: Book of Facts and Events، Ch. 5.
  6. North East India and her Neighbours۔ Indian Institute of Oriental Studies and Research۔ صفحات 21, 24۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  7. Sarala Devi Chaudhurani؛ Sukhendu Ray۔ The Many Worlds of Sarala Devi: A Diary۔ Berghahn Books۔ صفحہ 76۔ آئی ایس بی این 978-81-87358-31-2۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  8. Suniti Academy
  9. "Womens crusader for 125 years – Cooch behar school salutes Suniti devi on foundation day"۔ The Telegraph۔ Calcutta, India۔ 8 فروری 2006۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 جون 2012۔

بیروانی روابط[ترمیم]