سنی بہشتی زیور (کتاب)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سنی بہشتی زیور
مصنف محمد خلیل خان برکاتی، عالم فقری
زبان اردو
صنف اسلام

سنی بہشتی زیور کے نام سے دو کتابیں معروف ہیں، ایک محمد خلیل خان برکاتی نے لھکی ہے جب کہ دوسری عالم فقری کی تحریر کردہ ہے، یہ کتاب خواتین کے لیے دینی رہنمائی کی کتاب ہے۔ ،[1] یہ کتاب بریلوی مکتب فکر کی آئینہ دار ہے۔ اسے بہشتی زیور کے بعد شائع کیا گیا تھا جس کی تالیف اشرف علی تھانوی نے کی تھی۔ بہشتی زیور کے کچھ شرعی مسائل سے فقہی و فروعی اختلاف علما میں پایا جاتا ہے۔[2][3] حالانکہ اشرف علی تھانوی کے معتقدین نے اعتراضات کو دور کرنے کی کوشش کی تھی[4] لیکن اختلافات کے وقتًا فوقتًا رونما ہونے کے سبب عالم فقری اور مفتی محمد خلیل خاں قادری برکاتی نے بھی اسی عنوان سے ایک کتاب تحریر کی ہے۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]