سواد اعظم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

السواد الاعظم عربی زبان میں "عظیم-ترین (بڑی) جماعت" کو کہتے ہیں۔[1] وہ جماعت جس میں علمائے حق کی تعداد زیادہ ہو۔

حدیث پاک[ترمیم]

انس رسول اللہ صلے اللہ علیہ وسلم سے مروی ہیں کہ"میری امت کسی گمراہی پر جمع (متفق) نہیں ہوگی بس جب تم (لوگوں میں) اختلاف دیکھو تو سواد اعظم (بڑی-جماعت) کو لازم پکڑلو(یعنی اس کی اتباع کرو)"[2]

دوسری روایت میں عبد اللہ ابن عمر سے حدیث میں ہے = کہ۔۔۔ بس تم سواد اعظم کا اتباع (پیروی) کرو، کیونکہ جو شخص الگ راستہ اختیار کریگا جہنم میں جا رہیگا۔[3]

امام حاکم نے ابن عمر کی یہ روایت دو طرق (طریقوں) سے نقل کی ہے اور دونوں کے بارے میں صحت سند کا رجحان تو ظاہر کیا ہے، مگر فیصلہ نہیں کیا۔ اور حافظ ذہبی نے سکوت (خاموشی: جو ان کی نیم-رضامندگی ہے) کیا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. الصحاح للجوهري:1/489
  2. سنن ابن_ماجہ: کتاب الفتن، باب السواد الاعظم
  3. مستدرک حاکم: کتاب العلم، 1/115