سپندا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

سپِندا ایک ہندو نظریہ ہے جس کی رو سے ہر شخص اپنے جسم میں اپنے والدین کے اجزاء کا حامل ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے آپسی رشتوں کی شادی پر روک لگادی گئی ہے۔ چونکہ پشتوں کے سلسلے لامتناہی ہوتے ہیں، اس لیے یہ روک چند پشتوں کے لیے عائد کر دی گئی ہے۔ گوتم کی رو سے باپ کی جانب سے سات پشتوں کے بیچ ازدواجی رشتوں پر روک ہے اور ایضًا ماں کی طرف پانچ پشتیں۔ وشِشٹھ باپ کی طرف سے صرف پانچ پشتوں پر روک ہے۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. “Indian Society: Issues, Policies and Welfare Schemes”, Dr Vinita Pandey, BSC Publishers & Distributors, Hyderabad, P. 1.16