سید علی حسینی سیستانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(سید علی سیستانی سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search
آیت اللہ العظمیٰ،سید  ویکی ڈیٹا پر (P511) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سید علی حسینی سیستانی
(عربی میں: علي السيستاني ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Ali Sistani edit1.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 4 اگست 1930 (91 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مشہد  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت State flag of Iran (1964–1980).svg شاہی ایرانی ریاست (1930–1979)[2]
Flag of Iraq.svg عراق  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
استاذ سید ابو القاسم خوئی،  محسن الحکیم  ویکی ڈیٹا پر (P1066) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ فقیہ،  مذہبی لکھاری  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی،  فارسی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل اصولی (اہل تشیع)  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

سید علی حسینی سیستانی المعروف آیت اللہ سیستانی، عراق کے معروف ایرانی نژاد عالم دین ہیں اور فرقۂ اثنائے عشری اصولی سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ نجف کے حوزہ علمیہ کے مرجع ہیں یا آسان الفاظ میں آیت اللہ عظمٰی ہیں۔ آپ 4 اگست 1930ء کو مشہد، ایران میں پیدا ہوئے اور 1951ء سے نجف اشرف عراق میں قیام پزیر ہیں۔ علاوہ ازیں وہ بعد از جنگ عراق کے ایک اہم سیاسی رہنما سمجھے جاتے ہیں۔ آپ متعدد کتابوں کے مصنف بھی ہیں۔ آپ نے 2014ء میں داعش کے خلاف فتوی دیا اور رضاکاران نے مل کر داعش کو نیست نابود کر دیا۔ آپ کئی اداروں کے سرپرست ہے۔ آپ 8 اگست 1992ء سے آیت اللہ خوئی کے بعد حوزہ علمیہ نجف اشرف کے زعیم بھی ہے۔ آپ کا دفتر ایران اور عراق میں بھی واقع ہے۔ آپ کے دفتر کی رسمی ویب سائٹ {https://www.sistani.org} ہے۔ [3][4]

سید علی سیستانی موجودہ زعیم حوزہ علمیہ آیت اللہ خوئی سابقہ زعیم حوزہ علمیہ کے ساتھ

آیت اللہ سیستانی اور پوپ فرانسس کی ملاقات[ترمیم]

شیعوں کے عظیم مرجع تقلید اور کیتھولک عیسائیوں کے سربراہ پوپ فرانسس نے سنیچر کے روز 27 فروری 2021 کو نجف میں ملاقات کی۔ یہ ملاقات تقریبا پونے گھنٹے کی تھی۔ دونوں مذہبی لیڈروں نے مختلف موضوعات پر بات کی۔ [5] ملاقات کے بعد پوپ نے یہ بیان دیا کہ وہ آیت اللہ سیستانی کی شخصیت سے متاثر ہوئے ہیں اور وہ مسلم دنیا کی ایک ایسے شخص سے ملاقی ہوئے ہیں جوکہ روحانی طور پر زیادہ مضبوط ہیں۔[6] [7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Ali-al-Sistani — بنام: Ali al-Sistani — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  2. https://www.alarabiya.net/articles/2005/03/14/11221.html
  3. "تصاویر-کمتردیده-شده-از-حضرت-آیت-الله-العظمی-سیستانی". 08 جنوری 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 جنوری 2021. 
  4. "زندگی نامہ حضرت آیت اللہ سیستانی/ فقیہ ممتاز، متقی، منصف و آگاہ بہ زمان". 05 اکتوبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 17 جنوری 2013. 
  5. https://apnews.com/article/pope-ayatollah-meeting-preparation-iraq-6ebc225f98c0f711f4e86227df34d517
  6. https://apnews.com/article/pope-ayatollah-meeting-preparation-iraq-6ebc225f98c0f711f4e86227df34d517
  7. https://www.ndtv.com/world-news/pope-francis-top-shiite-cleric-plead-for-peace-in-historic-iraq-encounter-2385583?amp=1&akamai-rum=off

بیرونی روابط[ترمیم]