سیف الدین کچلو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

سیف الدین کچلو (انگریزی: Saifuddin Kitchlew) ( 15 جنوری 1888ء-9 اکتوبر 1963ء) ایک بھارتی مجاہد آزادی، بیرسٹر اور جنوبی ایشیا میں مسلم قوم پرستی کے رہنما تھے۔ وہ انڈین نیشنل کانگریس کے رکن تھے اور[ [پنجاب کانگریس کمیٹی]] کے پہلے صدر تھے۔ ان کا سب سے عظیم کارنامہ رولٹ ایکٹ کے خلاف ان کی لڑائی تھی۔ رولٹ ایکٹ مارچ 1919ء کو نافذ ہوا تھا جس کی مخالفت کرتے ہوئے ان کو ایک اور مجاہد آزادی ستیہ پال کے ساتھ خفیہ طور پر دھرم شالہ میں قید کر دیا گیا تھا۔ ان اور موہن داس گاندھی کی گرفتاری کے خلاف جلیانوالہ باغ امرتسر میں ایک عوامی احتجاج کے نتیجہ میں 13 اپریل 1919ء کو جلیانوالہ باغ قتل عام کا جانکاہ واقعہ پیش آیا۔ [1][2][3] ان کو 1952ء میں لینن امن انعام سے نوازا گیا تھا۔ [4]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "From the Land of Paradise to the Holy City"۔ The Tribune۔ 26 جنوری 2006۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  2. "Op-ed: Let's not forget Jallianwala Bagh"۔ Daily Times۔ 13 اپریل 2003۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  3. Mahmud, p. 40
  4. Great Soviet Encyclopedia. (Russian زبان میں) (اشاعت 2nd۔)۔ Moscow: Sovetskaya Enciklopediya۔ vol. 24, p. 366۔