شاردا سنہا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
شاردا سنہا
Sharda Sinha.jpg

معلومات شخصیت
پیدائش 1 اکتوبر 1952
Hulas, Raghopur, سپول ضلع، بہار (بھارت)[1]
رہائش بیگوسرائے، بہار (بھارت)[حوالہ درکار]
شہریت Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شریک حیات Dr.Brajkishore Sinha
عملی زندگی
پیشہ گلوکارہ
دور فعالیت 1980–present
اعزازات
پدم بھوشن

شاردا سنہا (انگریزی: Sharda Sinha) میتھلی زبان کی لوک گلوکارہ ہیں۔ وہ بھوجپوری زبان اور مگھئی زبان میں بھی گاتی ہیں۔ میتھلی زبان میں مشہور چھٹھ پوجا کا نغمہ ہو دیناناتھ ان کا ہی گایا ہوا ہے۔ حکومت ہند نے 2018ء کے یوم جمہوریہ کے موقع پر ریاست کو تیسرا بڑا شہری اعزاز پدم بھوشن سے نوازا۔[2][3]

حالات زندگی[ترمیم]

شاردا سنہا کی ولادت بھارت کی ریاست بہار کے سپول ضلع کے ہولاس، رگھوپور گاوں میں ہوئی۔[1] انہوں نے اپنے کیرئر کا آغاز میتھلی گانوں سے کیا۔ میتھلی کے علاوہ وہ بھوجپوری اور مگھائی زبانوں میں گاتی ہیں۔ موسیقی کے اپنی خدمات کے صلہ میں حکومت ہند نے انہیں پدم بھوشن اعزاز سے نوازا۔[4] پریاگ سنگیت سمیتی نے الہ آباد میں بسنت مہوستسو کا انعقاد کیا جس میں پدم شری شاردا سنہا نے موسم بہار سے متعلق لوگ نغمے اور گیت پیش کئے۔[5][5] درگا پوجا کے موقع پر ہر سال گاتی ہیں اور لوک گیت پیش کرتی ہیں۔[6][7] انہوں نے وزیر اعظم ماریشس نوین رام گولان کے بہار آمد کے موقع پر بھی اپنی نغمگی کے جوہر دکھائے تھے۔[8][9]

2010ء میں پرگتی میدان، نئی دہلی میں بہار اتسو مے موقع پر بھی انہیں گانے کا موقع ملا تھا۔[10] انہوں نے بالی ووڈ کو بھی اپنی آواز دی ہے۔ 1989ء میں بالی ووڈ فلم میں نے پیار کیا انہوںنے “کہے تو سے سجنا“ گایا تھا۔ فلم گینگز آف واسع پور-دوم کے لئے انہوں نے “تار بجلی سے پتلے“ گایا اور چار فوٹیا چھوکرے فلم کے لئے گانا “کون سی نگریا“ کو اپنی آواز دی۔[11]

شاردا سنہا اور چھٹ[ترمیم]

شاردا سنہا کو لوگ چھٹ کی وجہ سے یاد کرتے ہیں۔ یہ کہنا غلط نہیں ہو گا کہ شاردا سنہا اور چھٹ کو ایک ساتھ یاد کیا جاتا ہے۔ انہوں نے 2016ء میں تقریباً ایک دہائی کے بعد چھٹ کے لئے دو نغمے گاکر عقیدت مندوں کا دل خوشی سے بھردیا۔[12] ان کا آخری البم جو مذہبی اور روحانی نغموں پر مشتمل تھا 2006ء میں جاری ہوا تھا۔[12]


حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Padmashri Sharda Sinha interviewed by Lalit Narayan Jha". Mithila Mirror (Interview). 
  2. "Government announces recipients of 2018 Padma awards". دی ٹائمز آف انڈیا. 26 جنوری 2018. اخذ شدہ بتاریخ 26 جنوری 2018. 
  3. "This Chhath Puja song is making people so nostalgic, they want to go home". دی انڈین ایکسپریس. 4 نومبر 2016. اخذ شدہ بتاریخ 28 نومبر 2016. 
  4. "Padma Awards" (PDF). Ministry of Home Affairs, Government of India. 2015. اخذ شدہ بتاریخ 21 جولائی 2015. 
  5. ^ ا ب "of spring narrated through folk songs". دی ٹائمز آف انڈیا. 22 مارچ 2009. اخذ شدہ بتاریخ 25 اپریل 2009. 
  6. Manisha Prakash (4 اکتوبر 2003). "Music maestros add to Puja festivities". دی ٹائمز آف انڈیا. اخذ شدہ بتاریخ 25 اپریل 2009. 
  7. "Puja euphoria reaches a crescendo". دی ٹائمز آف انڈیا. 4 اکتوبر 2003. اخذ شدہ بتاریخ 25 اپریل 2009. 
  8. Faizan Ahmad & Dipak Mishra (19 فروری 2008). "Mauritius scholarship for two". دی ٹائمز آف انڈیا. اخذ شدہ بتاریخ 25 اپریل 2009. 
  9. "A new brand of music in Gangs Of Wasseypur series – Times of India". The Times of India. اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2020. 
  10. "Sharda Sinha's performance at Bihar Utsav an instant hit". دی ٹائمز آف انڈیا. 28 مارچ 2010. اخذ شدہ بتاریخ 29 مارچ 2010. 
  11. Gangs of Wasseypur Part 2: Music Review
  12. ^ ا ب Amit Bhelari (4 نومبر 2016). "Sweet and sour festive notes in the air – Sharda back with a bang after decade". دی ٹیلی گراف (بھارت). اخذ شدہ بتاریخ 28 نومبر 2016.