مندرجات کا رخ کریں

شبانہ اعظمی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
شبانہ اعظمی
(انگریزی میں: Shabana Azmi ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
 

معلومات شخصیت
پیدائش 18 ستمبر 1950ء (74 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعظم گڑھ   ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش ممبئی   ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت بھارت   ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شریک حیات جاوید اختر (1984–)  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد کیفی اعظمی   ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ شوکت کیفی   ویکی ڈیٹا پر (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
مناصب
رکن راجیہ سبھا   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
27 اگست 1997  – 26 اگست 2003 
عملی زندگی
مادر علمی سینٹ زیوئرس کالج، ممبئی
فلم اینڈ ٹیلی ویژن انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا
ممبئی یونیورسٹی   ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ فلم اداکارہ ،  منچ اداکارہ ،  گلو کارہ ،  مشہور شخصیت ،  سیاست دان ،  ادکارہ   ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں اَنکُر ،  امر اکبر انتھونی ،  سوامی ،  ارتھ ،  موسم ،  فائر (1996ء فلم)   ویکی ڈیٹا پر (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
 پدم بھوشن   (2012)
فلم فیئر حاصل زیست اعزاز (2006)
 فنون میں پدم شری   (1988)
فلم فیئر اعزاز برائے بہترین اداکارہ
قومی فلم اعزاز برائے بہترین اداکارہ
ایفا حاصل زیست اعزاز   ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
IMDB پر صفحہ[2]  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

شبانہ اعظمی (ولادت: 18 ستمبر 1950ء) بھارت کی مشہور اداکارہ ہیں۔ مشہور اردو شاعر کیفی اعظمی اور شوکت کیفی کی بیٹی اور شاعر جاوید اختر کی اہلیہ ہیں۔ شبانہ اعظمی کو ہندوستان میں ایک بہترین اداکارہ کے طور پر جانا جاتا ہے۔[3] انھوں نے قومی فلم ایوارڈ برائے بہترین اداکارہ پانچ بار حاصل کیا اور متعدد بین الاقوامی اعزازات جیت چکی ہیں۔[4][5] انھیں پانچ فلم فیئر ایوارڈز بھی مل چکا ہے اور انھیں ہندوستان کے تیسرے بین الاقوامی فلمی میلے میں "سنیما کی خواتین" سے بھی نوازا گیا تھا۔[6] 1988ء میں، حکومت ہند نے انھیں ملک کا چوتھا سب سے بڑا شہری اعزاز ، پدما شری سے نوازا۔

ابتدائی زندگی اور پس منظر

[ترمیم]

شبانہ اعظمی 18 ستمبر، 1950ء کو بھارت کے حیدرآباد کے سید مسلم گھرانے میں پیدا ہوئیں۔[7]اُن کے والد کیفی اعظمی ایک شاعر تھے۔ اُن کی والدہ شوکت اعظمی انڈین پیپلز تھیٹر ایسوسی ایشن سٹیج اداکارہ تھیں۔[8] شبانہ اعظمی کے والدین دونوں ہی کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے ارکان تھے۔ شبانہ اعظی کے بھائی بابا اعظمی سینماٹو گرافر ہیں اور اُن کی بھابھی تانوی اعظمی بھی ایک اداکارہ ہیں۔ شبانہ کے والدین اسے منی کے نام سے پکارتے تھے۔ شبانہ گیارہ سال کی عمر تک منی کے نام سے ہی جانی جاتی رہیں پھر علی سردار جعفری نے انھیں شبانہ کا نام دیا۔ بابا اعظمی کو پروفیسر مقصود صدیقی نے احمر اعظمی کا نام دیا۔ شبانہ اعظمی کے والدین نے ہمیشہ فکری محرک اور نشو و نما جذبے کو فروغ دینے میں ان کی تائید کی۔[9][10][11]

ذاتی زندگی

[ترمیم]

1970ء کی دہائی میں شبانہ اعظمی کی منگنی بنجمن گیلانی سے ہوئی تھی لیکن بعد میں یہ منگنی ٹوٹ گئی۔[12] 9 دسمبر 1984ء کو اُن کی شادی شاعر جاوید اختر سے ہو گئی اور یوں وہ اختر اعظمی فلم فیملی کا حصہ بن گئیں۔[13] جاوید اختر کی پہلی شادی ہنی ایرانی سے ہوئی تھی۔ ہنی ایرانی سے جاوید اختر کی دو اولادیں زویا اختر اور فرحان اختر ہیں۔[14][15] شبانہ کے خاندان نے ا ُن کی ایک شادی شدہ اور صاحب اولاد مرد سے شادی پر اعتراض کیا تھا۔ بھارتی فلم اداکارائیں تبو اور فرح ناز شبانہ اعظمی کی بھتیجیاں ہیں۔

فلمی زندگی

[ترمیم]

پہلے تھیٹر میں اداکاری کی۔ پھر شیام بینیگل نے فلم انکور میں انھیں متعارف کرایا۔ اس کے بعد آرٹ فلموں میں کام کیا۔ چند کمرشل فلمیں بھی کیں لیکن انھوں نے خود کو جگمگاتی دنیا تک محدود نہیں رکھا بلکہ وہ غرباء خصوصًا کچی آبادیوں میں رہنے والوں کے مسائل کو حل کرنے کے لیے بیس سال پہلے کھڑی ہوئیں ایک طویل لڑائی لڑی اور آج ان کی کوششوں نے بے گھر افراد کو گھر دلایا۔ وہ پہلی بھارتی خاتون ہیں جنہیں 2006ء میں گاندھی انٹرنیشنل ایوارڈ سے نوازا گیا۔

فلمیں

[ترمیم]
نیرجا کی کامیابی پر'

انھوں نے مین سٹریم اور متوازی سیمنا کی ایک سو سے زائد فلموں میں کام کیا۔ان کی کچھ منتخب فلیں درج ذیل ہیں۔

فلم فیئر ایوارڈز

[ترمیم]

فاتح:

نامزدیاں:

حوالہ جات

[ترمیم]
  1. ربط : انٹرنیٹ مووی ڈیٹابیس آئی ڈی  — اخذ شدہ بتاریخ: 20 جون 2019
  2. میوزک برینز آرٹسٹ آئی ڈی: https://musicbrainz.org/artist/d2e7bcee-f0f9-4323-ac6a-1f4e255beab0 — اخذ شدہ بتاریخ: 16 ستمبر 2021
  3. "Shabana Azmi | FCCI"۔ Journal of Indian Cinema (بزبان انگریزی)۔ 18 September 2020۔ 21 ستمبر 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اکتوبر 2020 
  4. PTI (22 July 2005)۔ "Parallel cinema seeing changes: Azmi"۔ دی ٹائمز آف انڈیا۔ 05 نومبر 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2009 
  5. Nagarajan, Saraswathy (18 December 2004)۔ "Coffee break with Shabana Azmi"۔ دی ہندو۔ Chennai, India۔ 31 دسمبر 2004 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2009 
  6. "Directorate of Film Festival" (PDF)۔ 30 جنوری 2013 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ 
  7. "Shabana Azmi presented Akkineni award"۔ The Hindu۔ 14 January 2007۔ 22 اکتوبر 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 فروری 2021 
  8. Gulzar، Nihalani, Govind، Chatterjee, Saibal (2003)۔ Encyclopaedia of Hindi cinema۔ Popular Prakashan۔ صفحہ: 524۔ ISBN 978-81-7991-066-5 
  9. Kaifi Azmi (28 May 1997)۔ "Kaifi Azmi"۔ آؤٹ لک۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 مارچ 2010 
  10. Shabana Azmi (2 October 2010)۔ "To Abba... with love"۔ Screen۔ 19 دسمبر 2009 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 مارچ 2010 
  11. "A conversation with actress and social activist Shabana Azmi"۔ Charlie Rose۔ 6 March 2006۔ 07 جولا‎ئی 2009 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 مارچ 2010 
  12. "Actor and rebel: Shabana Azmi"۔ filmfare.com۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2019 
  13. "THE DYNAMIC DYNASTIES: What would the world of films be without them?"۔ Screen۔ 22 September 2000۔ 10 فروری 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ 
  14. Ali Peter John (8 December 2000)۔ "Javed Akhtar: It's not so easy"۔ Screen۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 مارچ 2010 [مردہ ربط]
  15. "For Abba with Love by Shabana Azmi"۔ Kaifiyat۔ 22 جنوری 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2013 

بیرونی روابط

[ترمیم]