شرمین خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
شرمین خان
شخصی معلومات
تاریخ پیدائش 1 اپریل 1972  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات 13 دسمبر 2018 (46 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجۂ وفات نمونیا  ویکی ڈیٹا پر وجۂ وفات (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ کرکٹ کھلاڑی  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کھیل کرکٹ  ویکی ڈیٹا پر کھیل (P641) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

شرمین سعید خان (یکم اپریل 1972ء-13 دسمبر 2018ء) ایک خاتون کرکٹ کھلاڑی تھیں۔ انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ اور ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ میچ میں پاکستانی خواتین کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کی تھی۔

موت سے پہلے[ترمیم]

خواتین کرکٹ ٹیم کی سابق نامور کھلاڑی دو دن قبل انگلینڈ سے واپس آئی تھیں اور نمونیا کے مرض میں مبتلا تھیں۔ ان کا انتقال 13 دسمبر 2018ء کو لاہور میں ہوا۔ انتقال کے وقت ان کی عمر 46 سال تھی ۔

شرمین کی بہن[ترمیم]

شرمین اور ان کی بہن شاذیہ نے پاکستان کی پہلی انٹرنیشنل وومن کرکٹ ٹیم تشکیل دی تھی ۔ شرمیں سیدھے ہاتھ سے بلے بازی کرتی تھیں اور فاسٹ باؤلر تھیں۔انہوں نے دو ٹیسٹ اور 26 ایک روزہ بین الاقوامی میچز میں پاکستان کی نمائندگی کی تھی۔

کرکٹ سے وابستگی[ترمیم]

شرمین خان نے 26 ایک روزہ اور دوٹیسٹ میچز میں پاکستان کی نمائندگی کی

تعلیم[ترمیم]

دونوں بہنوں نے نے برطانیہ سے تعلیم حاصل کی اور جب وہ 1992 کے ورلڈ کپ کا فائنل دیکھنے لارڈز گئیں تو انہیں خیال آیا کہ پاکستان کی وومن ٹیم بھی ہونی چاہیے۔ ستمبر 1996 میں انہوں بین الاقوامی وومن کرکٹ کونسل سے پاکستان کے لیے ممبر شپ حاصل کی، جس کے بعد پاکستانی وومن کرکٹ ٹیم 1997ء میں بھارت میں ہونے والے ورلڈ کپ کے لیے کوالی فائی کرگئی۔

مختصر[ترمیم]

شرمین نے اپنا پہلا ایک روزہ میچ نیوزی لینڈ کے خلاف کرائسٹ چرچ میں جنوری 1997 میں کھیلا جبکہ انہوں نے اپنا آخری ایک روزہ میچ سری لنکا کے خلاف موراتوا میں جنوری 2002 کو کھیلا۔ اپریل 1998 میں انہوں نے کولمبو میں سری لنکا کے خلاف اپنا پہلا ٹیسٹ میچ کھیلا جبکہ دوسرا اور آخری ٹیسٹ میچ انہوں نے دو سال بعد ڈبلن میں آئرلینڈ کے خلاف کھیلا۔

سابق کھلاڑی شرمین خان نے پاکستان میں وومن کرکٹ متعارف کرانے میں اہم کردار اداکیا، انہوں نے 28 میچز میں پاکستان کی نمائندگی کی۔مرحومہ کے اہل ِ خانہ کے مطابق شرمین خان کی تدفین دوپہرکولاہورمیں ہوگی۔

صرف شرمین خان ہی نہیں بلکہ ان کے والد بھی وومن کرکٹ سپورٹ کرنے میں آگے آگے رہتے تھے ، نوے کی دہائی میں قومی سطح پر وومن کرکٹ کے فروغ میں ان کا اہم کردار ہے۔ قومی وومن کرکٹرز نے شرمین خان کی خدمات کو سراہتے ہوئے ان کی وفات پر گہرے دکھ اور رنج کا اظہارکیا ہے۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]