شکر اللہ مبارک پوری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مولانا

شکر اللہ مبارک پوری
ذاتی
پیدائش1895 یا 1896
وفات23 مارچ 1942(1942-30-23) (عمر  46–47 سال)
مذہباسلام
فرقہاہل سنت
فقہی مسلکحنفی
معتقداتماتریدی
تحریکدیوبندی مکتب فکر
بنیادی دلچسپیمنطق، فلسفہ
قابل ذکر کامجامعہ عربیہ احیاء العلوم مبارک پور
مادر علمیدار العلوم دیوبند
مرتبہ

شکر اللہ مبارک پوری (پیدائش 1895-96ء مطابق 1313-14ھ) بھارتی عالم دین اور تحریک آزادی کے ایک سرگرم کارکن تھےـ [1][2]

پیدائش اور تعلیم[ترمیم]

مولانا شکر اللہ مبارکپوری 1895 یا 1896 میں پورہ رانی، مبارکپور میں پیدا ہوئےـ ان کے والد، جو کوپاگنج سے تعلق رکھتے تھے، مبارکپور میں رہائش پذیر ہوئے تھےـ

مولانا مبارکپوری نے عربی کی ابتدائی کتب جامعہ عربیہ احیاء العلوم مبارک پور میں مولانا محمد محمود معروفی سے پڑھیں اور پھر لہرپور، سیتاپور کے ایک مدرسہ میں منطقی علوم پڑھےـ انہوں نے ماجد علی جونپوری سے بھی منطقی علوم میں استفادہ کیا اور پھر دار العلوم دیوبند میں داخلہ لیاـ انور شاہ کشمیری، شبیر احمد عثمانی، سید اصغر حسین دیوبندی اور حافظ محمد احمد سے دار العلوم دیوبند میں خاص طور پر استفادہ کیا اور 1336 ھ میں فارغ التحصیل ہوئے. [1][2][3]

درس و تدریس[ترمیم]

مولانا شکر اللہ مبارک پوری دارالعلوم دیوبند سے فراغت کے بعد اپنے مبارک پورواپس لوٹے اور یہاں آنے کے بعدجلد ہی ۱۳۳۶ھ مطابق ۱۹۱۸ء میں جامعہ عربیہ احیاء العلوم مبارک پور سے تدریسی طور سے وابستہ ہو گئے، مدرسہ کے اس وقت کے مہتممم حضرت مولانا الٰہی بخش ؒ نے اہتمام کی بھی ذمہ داری آپ پر ڈال دی، آپ نے اپنے اہتمام کی ذمہ داریوں کے ساتھ بے شمار طلبہ کو تعلیم وتربیت سے آراستہ کیا، آپ کا درس نہایت مقبول تھا، آخر عمر میں تدریس سے سبک دوش ہوکر صرف احیاء العلوم مبارک پور کا بار نظامت سنبھالنے لگے۔[1]

ممتاز تلامذہ[ترمیم]

ان کے مایہ ناز تلامذہ:[1][2][4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت قاضی اطہر مبارکپوری. "مولانا شکر اللہ مبارکپوری". تذکرہ علمائے مبارکپور (بزبان Urdu) (ایڈیشن 2010). موؤ: مکتبہ الفہیم. صفحات 264–276. 
  2. ^ ا ب پ Muhammad Salim Mubarakpuri. Maulana Shukrullah Mubarakpuri Sawanehi Khaka (بزبان Urdu). Maulana Shukrullah Mubarakpuri Academy, مبارکپور. صفحات 3–13. 
  3. نظام الدین اسیر ادروی. Karwan-e-Rafta (ایڈیشن 1994). Darul Moallifeen, دیوبند. صفحہ 123. 
  4. نظام الدین اسیر ادروی. Dastan Na'tamam (ایڈیشن November, 2009). Kutub Khana Husainia, Deoband.