شیخ الحدیث

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

اسلامی جامعات میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی حدیث مبارکہ کی سب سے اہم کتب صحیح بخاری پڑھانے والے استاد کو شیخ الحدیث کہا جاتا ہے ،عموماً شیخ الحدیث کی نشست پر اساتذہ میں سے بڑے عالم کو رکھا جاتا ہے

جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

جیسے شیخ الحدیث مولانا محمد انور بدخشاني محمد زکریا صاحب شیخ حدیث مولانا مفتی محمد سعید صاحب شیخ الحدیث مفتی محمد اسجد قاسمی شیخ الحدیث مولانا مفتی محمد اکرم صاحب شیخ الحدیث علامہ قمر الدین صاحب عمدۃ المحدثین حضرت علامہ مولانا محمد خواجہ شریف صاحب شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ نجم المحدثین حضرت العلامہ مولانا مفتی سید صغیر احمد نقشبندی قادری مجددی صاحب قبلہ ادام اللہ فیوضھم العالیہ شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ وبانی مدرسہ ابوالبرکات بیملی ضلع  عثمان آباد

حوالہ جات[ترمیم]

ہمارے ہاں شیخ الحدیث کا لفظ جب ذکر کیا جاتا ہے تو اس سے مراد "حدیث کی سب سے معروف کتاب ’’صحیح البخاری‘‘  پڑھانے والا ہوتا ہے ۔اور یہ اصطلاح حضرت مولانا محمد زکریا کاندہلوی رحمہ اللہ کے دور میں شروع ہوئی ہے۔ ملاحظہ فرمائیں:(آپ بیتی نمبر ۲ :۱۰۰،ط)