شیخ خلیل الرحمن سجاد نعمانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
شیخ خلیل الرحمن سجاد نعمانی
Khalilur-Rahman Sajjad Nomani.jpg
پیدائشت 12 اگست 1955
لکھنؤاتر پردیش
قومیتبھارتی
پیشہاسلامک اسکالر،ماہر تعلیم،مصنف
مذہباسلام
فرقہسنی اسلام
فقہحنفی
تحریکدیوبندی
شعبۂ عملعلم حدیث،تعلیم
مادر علمیدار العلوم دیوبند, دار العلوم ندوۃ العلماء
سلسلۂ تصوفسلسلہ نقشبندیہ
پیر/شیخپیر ذوالفقار احمد نقشبندی
ویب سائٹویب سائٹ

شیخ خلیل الرحمن سجاد نعمانی ایک ہندوستانی اسلامی اسکالر ، آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈکے ترجمان [1]، استاد[2] اور متعدد اسلامی کتابوں کے مصنف ہیں۔ [3] آپ تصوف کے سلسلہ نقشبندیہ شیخ فقہ حنفی کے مشہور کے عالم ہیں۔ بام سیف اور وامن میشرم کے ساتھ آپ نے بنیادی طور پر ہندوستان کی اقلیتوں کے حقوق کے لیے مختلف سرگرم اقدامات اٹھائے۔[4][5][6]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

سجاد نعمانی سال 1955 میں لکھنؤ ، ہندوستان میں پیدا ہوئے تھے۔آپ کے والد منظور نعمانی ایک اسلامی اسکالر ، عالم دین ، صحافی ، مصنف اور سماجی کارکن بھی تھے۔آپ کے دادا صوفی محمد حسین ، ایک کاروباری اور جاگیردار تھے۔[7] نعمانی نے تعلیم اپنے آبائی شہر میں حاصل کی،اور دار العلوم ندوۃ العلماءاور دارالعلوم دیوبند سے گریجویشن کی۔ بعد میں انہوں نے مدینہ کی اسلامی یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی اور قرآنی علوم میں ڈاکٹریٹ کی سند حاصل کی۔[8]

سرگرمی[ترمیم]

آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ نے آئینی حقوق اور مذہبی اقلیتوں کے عقیدے کے تحفظ کے لیے ایک تحریک "دین اور دستور بچاؤ" (مذہب کو بچانے کے آئین) مہم کے عنوان سے ایک تحریک چلائی۔ اس مہم کی قیادت نعمانی نے کی۔آپ نے شعور بیدار کرنے کے لیے پورے ملک کا سفر کیا۔ [9] آپ نے ہندوستانی نوجوانوں کو دہشت گردی کی سرگرمیوں کی طرف راغب ہونے سے روکنے کے لیے حکومت ، قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں ، مذہبی اسکالروں اور میڈیا کے ساتھ مشترکہ اقدام پر زور دیا۔ [10] سجاد نعمانی نےبام سیف اور عیسائیوں ، سکھوں ، لنگایاٹ (کرناٹک) اور متعدد قبائلی برادریوں جیسے مذاہب کے علما کے ساتھ مل کر یکساں سول کوڈ کے خلاف مہم چلائی۔[11]

سلسلہ[ترمیم]

نعمانی سنی تصوف کے اہم سلسلہ نقشبندی شیخ، عالم اور استادہے۔ یہ سلسلہ نقشبندیہ بہا الدین نقشبندی بخاری سے شروع ہوا اور یہ سلسلسہ حضرت ابوبکر صدیق، کے ذریعہ محمد ؐ سے ملتا ہے۔[12]

  1. محمد بن عبداللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم
  2. ابوبکر
  3. سلمان فارسی
  4. قاسم ابن محمد ابن ابو بکر
  5. جعفر صادق
  6. بایزید بسطامی
  7. ابوالحسن الخراقانی
  8. ابوالقاسم گورگانی
  9. ابو علی فرامدی
  10. ابو یعقوب یوسف ہمدانی
  11. عبد الخالق گوجدوانی
  12. عارف ریوگاری
  13. محمود انجیر فغنوی
  14. عزیزان علی رامیتانی
  15. محمد بابا سماسی
  16. عامر کولال
  17. محمد بہاؤ الدین نقشبندی
  18. علاؤالدین عطار بخاری
  19. یعقوب چرخی
  20. عبیداللہ احرار
  21. محمد زاہد وخشی
  22. درویش محمد
  23. محمد امکانگی
  24. خواجہ باقی باللہ ،دہلی
  25. احمد سرہندی سرہند شریف
  26. خواجہ محمد معصوم سرہند شریف
  27. خواجہ سیف الدین
  28. خواجہ حافظ محمد محسن ، دہلی
  29. خواجہ سید نور محمد بدایونی ، دہلی
  30. مرزا مظہر جان جاناں دہلی
  31. شاہ غلام علی مجددی ، دہلی
  32. خواجہ شاہ ابوسعید ، دہلی
  33. خواجہ شاہ احمد سعید دہلوی
  34. حاجی دوست محمد قندھاری
  35. خواجہ محمد عثمان دامانی
  36. خواجہ سراج الدین
  37. خواجہ محمد فضل علی قریشی
  38. خواجہ محمد عبد الملک صدیقی
  39. مرشدِ عالم حضرت خواجہ غلام حبیب
  40. حافظ ذو الفقار احمد نقشبندی مجددی
  41. خلیل الرحمن سجاد نعمانی[12]

خانقاہ[ترمیم]

مولانا شیخ خلیل الرحمٰن سجاد نعمانی خلیفہ مجاز حضرت حافظ ذو الفقار احمد نقشبندی مجددی نے اپنی اصلاحی و دعوت کے لیے بھارت کے صوبہ مہاراشٹر کے ضلع رائے گڑھ کے علاقے نیرل میں اپنی خانقاہ کو قائم کیا جہاں آپ دعوتی خدمات انجام دیتے ہیں۔[13]

کتابیں[ترمیم]

  • کیا ابھی نہیں جاگو گے؟
  • الفرقان (ماہانہ)
  1. "Twitterati backs aimplb spokesman in sedition case". The Times of India. اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2018. 
  2. "Sajjad Nomani delivers lecture at Kashmir University". Greater Kashmir. اخذ شدہ بتاریخ 02 جون 2002. [مردہ ربط]
  3. Archive.org SajjadNomaniKhalilUrRahman. 25 January 2017. اخذ شدہ بتاریخ 25 جنوری 2017. 
  4. Henry، Nikhila (5 September 2015). "Muslim law board vows to fight communal forces". The Hindu. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2016. 
  5. "Ram temple a political issue raised before polls: Muslim law board member". ABP News. 23 February 2016. اخذ شدہ بتاریخ 23 فروری 2016. 
  6. "We are not Minorities – Sajjad Nomani at BAMCEF national Convention". Critic Brain. اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2016. [مردہ ربط]
  7. Ghufrān al-Ḥaqq al-Swātī (September 2010). "نبذة من حياة الشيخ العلامة محمد منظور أحمد النعماني رحمه الله / Nubdhah min ḥayat ash-shaykh al-'allāmah Muḥammad Manzoor an-Nomānī raḥimahu'llāh". Al-Farooq Arabic (بزبان عربی). Karachi: Idārat al-Fārūq. 25 ستمبر 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 08 جنوری 2020. 
  8. "Rahman Foundation, Sajjad Nomani". 03 اگست 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 08 جنوری 2020. 
  9. Henry، Nikhila (5 September 2015). "Muslim law board vows to fight communal forces". The Hindu. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2016. 
  10. "Collective effort needed to stop youth from joining Islamic State, religious scholars tell cops". Firstpost. اخذ شدہ بتاریخ 23 فروری 2016. 
  11. "We are not Minorities – Sajjad Nomani at BAMCEF national Convention". Critic Brain. اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2016. [مردہ ربط]
  12. ^ ا ب "Silsilah of the Tariqah Naqshbandi Mujaddidi". 
  13. http://www.taubah.org/