شیزہ شاہد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Shiza Shahid
معلومات شخصیت
مقام پیدائش اسلام آباد  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ سٹنفورڈ  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ اکیڈمک،  کاروباری شخصیت  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

شیزہ شاہد ایک پاکستانی ،سماجی کارکن ، سرمایہ کار اور معلمہ ہیں۔ وہ غیر منافع بخش ملالہ فنڈ کی شریک بانی اور سابق سی ای او ہیں ، جو ہر لڑکی کے تعلیم کےفروغ کے لیے کوشاں ہے۔ [1] 2013 میں انھیں ٹائمز جریدے نے 30 سال سے کم عمر متاثر ترین افراد میں شامل کیا اور 2014 میں، فوربس 'جریدے نے بھی انھیں 30 افراد کی فہرست میں رکھا۔ " وہ امن کے نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی کی مینٹور کے طور پر بھی مشہور ہیں۔ [2] [3]

شیزہ شاہد پاکستان کے دار الحکومت اسلام آباد میں پیدا ہوئے اور وہیں ان کی پرورش ہوئی۔ انھوں نے نوعمری کےسال ایک رضاکار کارکن کی حیثیت سے گزارے۔ 14 سال کی عمر میں انھوں نے خواتین کے قید خانوں میں کام کرنا شروع کیا جو مختلف جرائم کے مرتکب ہوئے تھے۔ انہوں نے 2005 میں کشمیر میں آنے والے ایک مہلک زلزلے کے بعد ایک امدادی کیمپ میں رضاکار کی حیثیت سے کام کیا ،جس میں تقریبا 85،000 افراد مارے گئے تھے۔ [4]

کیریئر[ترمیم]

18 سال کی عمر میں ، شاہد نے اسٹینفورڈ یونیورسٹی میں اعلی تعلیم حاصل کرنے کے لیے اسکالرشپ حاصل کی اور 2011 میں گریجویشن کیا۔ خواتین کی تعلیم کے خلاف طالبان کی جانب سے پابندی کے بارے میں سن کر وہ 2009 میں پاکستان لوٹی تھیں۔ [5] 2011 میں اپنی اعلی تعلیم مکمل کرنے کے بعد ، انھوں نے دبئی میں مک کینسی اینڈ کمپنی کے دفتر میں ماہر تجزیہ کار کی حیثیت سے کیریئر اپنائی۔ 2017 میں ، اس نے NOW Ventures کی مشترکہ بنیاد رکھی ، جو اسٹارٹ اپ فنڈنگ پر توجہ مرکوز کرتی ہے۔ [6]

شاہد خواتین کو بااختیار بنانے اور بچوں کی تعلیم کی اہمیت کے موضوعات پر مختلف ممالک کی یونیورسٹیوں میں لیکچر اور تقریر بھی کرچکی ہیں۔ [7] [8]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Canal، Emily. "How Shiza Shahid And The Malala Fund Are Championing For Girls' Rights". Forbes (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  2. "Shiza Shahid". www.caa.com. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  3. Shahid، Shiza (25 April 2014). "A 16-Year-Old Convinced Me to Change Careers". ELLE (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  4. Clifford، Catherine (21 January 2014). "You Know Malala. Now, Meet Shiza.". Entrepreneur (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  5. Richardson، Nakia (13 March 2019). "Women's education activist Shiza Shahid visits campus". The Daily Aztec. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  6. "After Malala: Shiza Shahid's plan to change the world for good". South China Morning Post (بزبان انگریزی). 30 September 2016. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  7. Chen، Desiree (17 September 2019). "Entrepreneur to discuss creating social change at Elmhurst College". Daily Herald (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019. 
  8. "Shiza Shahid at The University of Redlands". inlandempire.us. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2019.