شینا بورا قتل معاملہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search


شینا بورا
शीना बोरा
معلومات شخصیت
پیدائش 11 فروری 1989(1989-02-11)
گوہاٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات اپریل 24، 2012(2012-40-24) (عمر  23 سال)
ممبئی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
تاريخ غائب اپریل 24, 2012 (عمر 23)
طرز وفات قتل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
مقامِ غائب باندرہ، ممبئی، بھارت
غائب کیفیت مردہ
دریافت نعش پین، بھارت، رائے گڑ ضلع
رہائش ممبئی
قومیت Flag of India.svg بھارت
آبائی علاقے گوہاٹی، بھارت
مذہب ہندومت
ساتھی Rahul Mukerjea
والدین Siddhartha Das
(Biological father, disputed)
Indrani Mukerjea (Mother)
عملی زندگی
تعليم فاضل الفنیات
مادر علمی St. Xavier's College
پیشہ کاروباری شخصیت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
نوکریاں Mumbai Metro One
Reliance Infrastructure

شینا بورا ممبئی میں واقع ممبئی میٹرو ون کی ملازمہ اور میڈیا ایگزیکیٹیو اندرانی مکرجی کی بیٹی تھی۔ اگست 2015 میں ممبئی پولیس نے شینا کی ماں اندرانی مکرجی، سوتیلے باپ سنجیو کھنا اور اس کی ماں کے ڈرائیور شیاموار پنتورام رائے (شیام رائے) کو اس الزام میں گرفتار کیا کہ ان لوگوں نے شینا کا قتل کرکے اس کے مردہ جسم کو جلا دیا۔[1][2][3][4][5]

پچپن، خاندان اور گمشدگی[ترمیم]

1989ء میں شینا بورا، اندرانی مکرجی کے گھر کلکتہ میں پیدا ہوئی۔ 1992ء میں شینا کی ماں اپنے شوہر سے علاحدہ ہو کر گوہاٹی چلی گئی اور اپنے دونوں بچوں (شینا اور مکھالی) کو اپنے والدین اپیندر کمار اور درگا رانی کے پاس چھوڑ دیا۔ بعد ازاں شینا اور اس کا بھائی اپنے نانیہال میں پرورش پاتے رہے، اسی اثناء میں شینا کی ماں اندرانی مکرجی نے سنجیو کھنا سے دوسری (یا تیسری) شادی کرلی، جس سے ان دونوں کے یہاں ایک لڑکی ودھی کھنا پیدا ہوئی۔ 2002ء میں اندرانی اور سنجیو کھنا کی علیحدگی ہو گئی اور ودھی کھنا کی کفالت کے معاملہ میں زبردست لڑائی ہوئی، بالآخر سنجیو کھنا کی فتح ہوئی اور ودھی برطانیہ منتقل ہو گئی۔

2002ء میں اندرانی مکرجی اور پیٹر مکرجی کی شادی کے بعد ودھی کو قانونی طور پر پیٹر نے حاصل کر لیا۔[1] 2006ء میں شینا بورا ممبئی واپس ہوئی، جہاں اندرانی مکرجی نے سب کے سامنے (بشمول اپنے شوہر پیٹر مکرجی) اس کو اپنی چھوٹی بہن کے طور پر متعارف کرایا۔[6][7] پیٹر مکرجی نے سینٹ زیویئرز کالج میں داخلہ لینے کے میں شینا کی مدد کی، جہاں سے شینا نے بی اے کی ڈگری حاصل کی (2006-2009)۔ 2009ء میں شینا نے ریلائنس انفراسٹرکچر میں بطور مینیجمنٹ ٹرینی داخل ہوئی۔ جون 2011 میں شینا کا ممبئی میٹرو ون پرائیویٹ لمیٹڈ میں بطور معاون مینیجر تقرر ہوا۔[8][9][10]

ممبئی کے ابتدائی ایام کے دوران شینا کا راہل مکرجی (پیٹر مکرجی کا بیٹا) سے تعارف ہوا جو بڑھتے بڑھتے رومانی تعلقات تک پہونچ گیا۔ مبینہ طور پر اندرانی مکرجی دونوں کے درمیان اس قسم کے تعلقات کو کبھی تسلیم نہیں کیا۔ 24 اپریل 2012ء کو شینا نے چھٹی لی اور چھٹی کے دوران ہی اس نے اپنا استعفاء نامہ روانہ کر دیا۔[10] اسی دن راہل مکرجی کو شینا کے موبائل نمبر سے قطع تعلق کا ایس ایم ایس موصول ہو۔[11] اندرانی مکرجی کا کہنا تھا کہ شینا اعلی تعلیم کے لیے امریکہ گئی ہے اور اسی بنا پر اس کی گمشدگی کی شکایت کبھی درج نہیں کرائی گئی۔[2][12][13] 24 اپریل 2012ء کے بعد سے شینا کبھی نظر نہیں آئی۔

قتل[ترمیم]

23 مئی 2012 کو پولس افسران نے گاگوڑے، پین تحصیل مہاراشٹرا میں ایک لاش دریافت کی جس پر بعد میں شینا بورا کی لاش کا شک ہوا۔

اگست 2015ء میں ممبئی پولیس کو شک ہوا کہ 24 اپریل 2012ء کو اندرانی مکرجی نے اپنے سابقہ شوہر سنجیو کھنا اور ڈرائیور شیام رائے کی مدد سے شینا کا قتل کر دیا تھا۔[14]

25 اگست 2015ء کو ممبئی پولیس نے اندرانی مکرجی کو گرفتار کر لیا۔[15] اندرانی مکرجی کو تعزیرات ہند کی دفعہ 302 (قتل)، دفعہ 201 (شہادت کی گمشدگی کا سبب بننا) اور دفعہ 34 (مجرمانہ سازش) کے تحت قید ہوئی۔ اندرانی کو باندرہ میٹوپولیٹن مجسٹریٹ عدالت کے سامنے پیش کیا گیا جہاں اسے 31 اگست 2015ء تک پولیس تحویل میں رکھنے کا حکم ہوا۔[16][17]

26 اگست 2015ء کو اندرانی کا سابقہ سنجیو کھنا کولکاتا میں گرفتار ہوا اور تعزیرات ہند کی دفعہ 364 (اغوا)، دفعہ 302 (قتل)، دفعہ 201 (شہادت کی گمشدگی کا سبب بننا) اور دفعہ 120-B (سازش) تحت قید ہوئی۔ ان دفعات کے ساتھ ساتھ دفعہ 307 (قتل کی کوشش) بھی لگائی گئی، کیونکہ اس نے مکھالی کے قتل کی سازش تیار کی تھی (جو مشروب میں خواب آور دوا ملا کر دیے جانے کے بعد فرار ہو گیا تھا)۔ 28 اگست 2015 کو اسے 31 اگست 2015ء تک پولیس تحویل میں دے دیا گیا۔[18]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Who's who"۔ The Huffington Post۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  2. ^ ا ب "Sheena Bora murder saga"۔ Firstpost۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  3. "Sheena Bora murder: Cast and plot of a real-life soap opera"۔ The Hindu۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  4. "Sheena and Rahul relationship"۔ Hindustan Times۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  5. "Sheena Bora killed in Mumbai bylane"۔ Hindustan Times۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  6. "Sheena murder gets murkier"۔ Business Standard۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  7. "Sister or daughter"۔ Firstpost۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  8. "Peter Mukerjea interview"۔ انڈیا ٹوڈے۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  9. "Sanjeev Khanna highly connected man"۔ The Indian Express۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  10. ^ ا ب "Indrani kept her daughter on leash"۔ Hindustan Times۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  11. "Red tape prevented Rahul Mukerjea from filing FIR"۔ Hindustan Times۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  12. "Sheena Bora's passport found"۔ The Indian Express۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  13. "New passport claim"۔ انڈیا ٹوڈے۔ اخذ شدہ بتاریخ Aug 2015۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)
  14. V Narayan۔ "Sheena Bora killed by Indrani, ex-husband, driver, Mumbai police commissioner Rakesh Maria says"۔ Times of India۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اگست 2015۔
  15. "TV top gun's wife held in murder case"۔ The Telegraph۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اگست 2015۔
  16. Ahmed Ali۔ "TV honcho Peter Mukerjea's wife Indrani arrested on murder charges by Mumbai Police"۔ Times of India۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اگست 2015۔
  17. Deepshikha Ghosh۔ "Sheena Bora Was Dating My Son, Says TV Mogul Peter Mukerjea"۔ NDTV۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اگست 2015۔
  18. "Sheena Bora murder case: Indrani's ex-husband Sanjeev Khanna remanded in Mumbai police custody"۔ Press Trust of India۔ Indian Express۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 اگست 2015۔