شیونیری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
شیونیری
شیونیری قلعہ
جنر، ضلع پونہ، مہاراشٹر
MainEntranceGate.jpg
شیونیری is located in بھارت
شیونیری
شیونیری
شیونیری is located in مہاراشٹر
شیونیری
شیونیری
مہاراشٹر میں شیونیری کا محل وقوع
متناسقات 19°11′56″N 73°51′34″E / 19.1990°N 73.8595°E / 19.1990; 73.8595
قسم یادگار عمارت
مقام کی معلومات
مالک Flag of بھارت حکومت ہند
اختیار از Flag of the Maratha Empire.svg مرہٹہ سلطنت (1716-1820)
British Raj Red Ensign.svg برطانوی راج (1820-1947)
Flag of بھارت حکومت ہند (1947-)
عوام کے
لیے داخلہ
ہاں

شیونیری قلعہ سترہویں صدی عیسوی کا ایک فوجی قلعہ ہے جو صوبہ مہاراشٹر کے ضلع پونہ کے مشہور مقام جُنّر کے قریب واقع ہے۔ اس قلعہ کی تاریخی اہمیت یہ ہے کہ یہاں مرہٹہ سلطنت کے بانی چھترپتی شیواجی کی پیدائش ہوئی تھی۔[1]

تاریخ[ترمیم]

شیونیری پہلی صدی عیسوی سے ایک بودھ مقام کے طور پر معروف رہا ہے۔ یہاں کے غار، چٹانوں کو تراش کر بنائی جانے والی عمارتیں اور پانی کا بہترین نظام اس بات کا اشارہ کرتے ہیں کہ یہ مقام پہلی صدی عیسوی ہی سے آباد رہا ہے۔ جب یہ قلعہ دیوگیری کے یادو کے زیر تسلط تھا اس وقت اس کا نام شیونیری پڑا۔ اس قلعہ کا استعمال عموماً دیش سے ساحلی شہر کلیان کو جانے والی تجارتی گزرگاہ کی حفاظت کے لیے ہوتا تھا۔ پندرہویں صدی عیسوی میں جب سلطنت دہلی میں ضعف کے آثار نمایاں ہوئے تو یہ قلعہ بہمنی سلطنت کے قبضے میں چلا گیا اور بعد ازاں سولہویں صدی عیسوی میں سلطنت احمد نگر کی تحویل میں آیا۔

سنہ 1595ء میں مرہٹہ سردار اور چھترپتی شیواجی بھونسلے کے دادا مالوجی بھونسلے کو سلطان احمد نگر بہادر نظام شاہ دوم کی جانب سے شیونیری اور چاکن کی جاگیریں عنایت کی گئیں تو وہ اپنے اہل خانہ کے ساتھ اسی قلعے میں آبسے۔ 19 فروری 1630ء کو اور کچھ مورخین کے مطابق 1627ء کو اس قلعے میں شیواجی پیدا ہوئے اور اپنا بچپن یہیں گزارا۔ قلعہ میں شیوائی دیوی کے نام سے ایک چھوٹا سا مندر ہے جس کا نام بعد میں شیواجی کے نام پر رکھا گیا۔

سنہ 1673ء میں انگریز سیاح فریز کا یہاں سے گزر ہوا تو اس نے قلعہ کو ناقابل تسخیر پایا۔ فریز کے مطابق اس قلعہ میں سات برسوں کے لیے ہزاروں خاندانوں کا غلہ محفوظ رکھا جاتا تھا۔ نیز فریز نے یہ بھی لکھا کہ اس قلعہ کا انتظام ایک برہمن کے ہاتھ میں ہے جو مسلمان ہو گیا ہے۔ یہ قلعہ مغلوں کے زیر تسلط رہا پھر سنہ 1762ء میں مرہٹوں نے اسے دوبارہ حاصل کر لیا۔ تیسری اینگلو مرہٹہ جنگ میں مرہٹوں کی شکست اور مرہٹہ سلطنت کے سقوط کے بعد سنہ 1820ء میں یہ قلعہ برطانوی راج کا حصہ بن گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Milind Gunaji۔ Offbeat tracks in Maharashtra۔ Popular Prakashan۔ صفحہ 69۔ آئی ایس بی این 81-7154-669-2۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ مارچ 13, 2010۔

مزید پڑھیے[ترمیم]

  • Lahu Gaikwad Shivneri kilyacha Itihas Pub. Pushpnand prakashan pune 2011. ISBN 978-81-907033-8-3. Book in Marathi language.
  • Lahu Gaikwad, Junnar Talukyatil Kilyancha Ithis, Pushpnand prakashan Pune 11 March 2011.ISBN 978-81-907033-9-0.
  • Dr. Lahu Kacharu Shivnerichi Jeevangatha, The life-story of fort shivneri, Sanay prakashan, Narayngaon, Jan 2015. p. 225.

بیرونی روابط[ترمیم]