علاء الدین کاسانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(صاحب البدائع سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search

علاؤ الدين الكاسانی ابو بكر بن مسعود جو صاحب البدائع اور ملک العلماء کے لقب سے ملقب ہیں۔

نام[ترمیم]

ابو بكر بن مسعود بن احمد بن علاؤ الدين ملك العلماء الكاسانی صاحب البدائع شارح تحفۃ الفقہاء ہیں

مشائخ[ترمیم]

آپ کے اساتذہ میں یہ شخصیات ہیں علاؤ الدین سمرقندی، صدر الاسلام البزدوی ،ميمون المكحولی، ان کی کتاب: السلطان المبين فی اصول الفقہ ہے

استادکے ہاں مقام[ترمیم]

جب آپ نے محمد بن احمد سمر قندی کی ملازمت کی اور ان سے ان کی عظیم تصانیف تحفۃ الفقہاء کو پڑھا اور اس کی شرح بدائع نام سے تصنیف کی تو محمد سمر قندی نے نہایت خوش ہوکر اپنی بیٹی فاطمہ سے (جو نہایت شکیلہ و عقیلہ اور کتاب تحفۃ الفقہاء کی حافظہ تھیں اور روم کے بادشاہ اس کے خواستگار تھے) ان کی شادی کردی اور مہر کے عوض شرح مذکور کو گردانا۔ آپ اکثر فتووں میں خطا کر جاتے تھے جب آپ کی بیوی آپ کو وجہ خطا کی بتادیتی تو آپ اس کے قول کی طرف رجوع کرلیتے تھے۔ آپ کے نکاح سے پہلے محمد سمر قندی اور ان کی بیٹی فاطمہ کے دستخط سے فتاویٰ جاری ہوتے تھے،جب آپ کا نکاح فاطمہ سے ہو گیا تو تینوں کے دستخط ہونے لگے۔

تصنیفات[ترمیم]

  • کتاب بدائع فی شرح تحفۃالفقہاء
  • کتاب السلطان المبین فی اصول الدین[1]بہت عمدہ تصنیف فرمائیں

وفات[ترمیم]

الکاسانی کی وفات 587ھ میں ہوئی حلب کے قبرستان ظاہریہ میں مقام ابراہیم خلیل اللہ میں اپنی بیوی فاطمہ کے پاس مدفون ہوئے[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. الجواہر المضيئہ فی طبقات الحنفیہ قرشی4/ 25.