صوبہ کندوز

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
صوبہ کندوز
120627-A-LE308-009.jpg
 

تاریخ تاسیس 1964  ویکی ڈیٹا پر (P571) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Kunduz in Afghanistan.svg
 
نقشہ

انتظامی تقسیم
ملک Flag of Afghanistan (2002–2004).svg افغانستان  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[1]
دار الحکومت قندوز  ویکی ڈیٹا پر (P36) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تقسیم اعلیٰ افغانستان  ویکی ڈیٹا پر (P131) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 36°48′N 68°48′E / 36.8°N 68.8°E / 36.8; 68.8  ویکی ڈیٹا پر (P625) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[2]
رقبہ 8040 مربع کلومیٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2046) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بلندی 379 میٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2044) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آبادی
کل آبادی 820000 (2002)  ویکی ڈیٹا پر (P1082) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مزید معلومات
اوقات متناسق عالمی وقت+04:30  ویکی ڈیٹا پر (P421) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سرکاری زبان دری فارسی،  پشتو  ویکی ڈیٹا پر (P37) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آیزو 3166-2 AF-KDZ  ویکی ڈیٹا پر (P300) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قابل ذکر
جیو رمز 1135690  ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

کندوز (پشتو: کندز، فارسی:کندوز) شمالی افغانستان کا ایک صوبہ ہے، جس کو ولایت کندوز بھی کہا جاتا ہے۔ اس صوبے کا صدر مقام کندوز شہر ہے۔ اس صوبے کا رقبہ 8,040 مربع کلومیٹر ہے۔ انجنئیر محمد عمر صوبہ کندوز کے گورنر ہیں۔
صوبہ کندوز کا تقریباً علاقہ دریائے کندوز سے سیراب ہوتی ہے۔ یہ دریا جنوب سے شمال کی جانب بہتا ہے جو تاجکستان اور کندوز کے درمیان سرحد بھی شمار کی جاتی ہے۔ شیر خان کے مقام پر ایک پل تعمیر کیا گیا تھا جو رابطے کا ذریعہ ہے۔
پشتون اور تاجک قبائل یہاں کی بڑی آبادی ہیں جبکہ اقلیت میں ازبک، ہزارہ، ترکمان اور دوسرے قبائل شامل ہیں۔

افغان جنگ[ترمیم]

نیٹو کی شمالی کمانڈ میں بحالی کے لیے یہاں جرمنی کے 4000 فوجی تعینات ہیں۔ 2009ء میں طالبان نے یہاں اپنی کاروائیاں شروع کیں وگرنہ اب تک کندوز ایک پرامن صوبہ تھا۔
4 ستمبر 2009ء کو جرمنی افواج کے کمانڈر نے ایک امریکی جنگی طیارہ کے ذریعے دو ایندھن سے بھری گاڑیوں پر حملہ کرنے کا حکم دیا، جو طالبان شدت پسندوں نے اغوا کیے تھے۔ یہ گاڑیاں سڑک پر پھنس گئی تھیں اور عام لوگ ایندھن حاصل کرنے میں مصروف تھے۔ 40 عام شہریوں سمیت 90 افراد اس حملے میں جاں بحق ہو گئے۔
21 نومبر 2009ء کو تاخار کندوز مرکزی شاہراہ پر ایک بم دھماکا ہوا جس میں ایک بچہ ہلاک جبکہ دو اشخاص زخمی ہو گئے۔

  1.   ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں"صفحہ صوبہ کندوز في GeoNames ID". GeoNames ID. اخذ شدہ بتاریخ 4 اکتوبر 2021ء. 
  2.   ویکی ڈیٹا پر (P402) کی خاصیت میں تبدیلی کریں "صفحہ صوبہ کندوز في خريطة الشارع المفتوحة". OpenStreetMap. اخذ شدہ بتاریخ 4 اکتوبر 2021ء.