صوقلو محمد پاشا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
صوقلو محمد پاشا
(عثمانی ترک میں: صقللى محمد پاشا‎ ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
 

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (سربیائی میں: Бајица Ненадић ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش سنہ 1505ء  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سلوکلویچی، سوکولاک  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 11 اکتوبر 1579ء (73–74 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قسطنطنیہ[1]  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات تیز دار ہتھیار کا گھاؤ  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن قسطنطنیہ  ویکی ڈیٹا پر (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات قتل  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش ادرنہ
قسطنطنیہ
سلوکلویچی، سوکولاک  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت سلطنت عثمانیہ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
زوجہ اسمیخان سلطان  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
قپودان پاشا   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
1546  – 1550 
خیر الدین بارباروسا 
 
سلطنت عثمانیہ کا صدر اعظم   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
28 جون 1565  – 11 اکتوبر 1579 
سمیز علی پاشا 
 
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان،  فوجی افسر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان سربیائی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان سربیائی،  عثمانی ترکی،  فارسی،  عربی،  لاطینی زبان،  وینسی زبان  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
عہدہ جرنیل  ویکی ڈیٹا پر (P410) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لڑائیاں اور جنگیں عثمانی-صفوی جنگ  ویکی ڈیٹا پر (P607) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
یونیسکو عالمی ثقافتی ورثہ - دریائے درینا پر محمد پاشا سوکولویچ پل ویشیگراد، بوسنیا و ہرزیگووینا

صوقلو محمد پاشا (Sokollu Mehmed Pasha) (عثمانی ترکی زبان: سوکلو محمد پاشا; (سربی کروشیائی لاطینی: Mehmed-paša Sokolović)‏; سیریلک: Мехмед-паша Соколовић) عثمانیوں کے عہد کا ایک بالغ نظر اور مدبرانہ ذہن رکھنے والا وزیر تھا- جو اپنے حکمرانوں کے دلوں میں اپنے لیے بہت اعتماد رکھتا تھا۔ سلیمان اعظم کے بعد جب سلیم ثانی تخت نشین ہوا تو اپنی نااہلی اور عیش و عشرت کے باعث عنان اقتدار سنبھال کر معاملات چلانا اس کے بس کی بات نہ تھی۔ چنانچہ اس کے عہد میں نظام حکومت کی حقیقی باگ ڈور سلیمان اعظم کے تربیت یافتہ صوق وللی کے ہاتھ میں تھی۔

صوق وللی نے عثمانی سلطنت و حکومت کو مستحکم کرنے اور سلطنت سے باہر کے دشمنوں سے نمٹنے کے لیے بہت اہم تجویز پیش کیں اور ان پر حتی الوسع سعی کرکے عمل کی کوشش کی۔ اس نے دولت عثمانیہ کی سرحدوں کو پھیلانے میں بہت نمایاں کردار اور خدمتیں انجام دیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جی این ڈی آئی ڈی: https://d-nb.info/gnd/119472449 — اخذ شدہ بتاریخ: 12 اگست 2015 — اجازت نامہ: CC0