ضد نسائیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ضد نسائيت یا نسائیت کی مخالفت، نسائی تحریک یا حقوق نسواں کی کسی نہ کسی شکل کی مخالفت ہے۔ 19 ویں صدی کے آخر میں اور 20 ویں صدی کے اوائل میں نسائی تحریک کے مخالفین، خواتین کے حقوق کے لیے مخصوص قانونی تجاویز، جیسے ووٹ کا حق، تعلیمی مواقع، جائداد کے حقوق، اور مانع حمل تک رسائی کی مخالفت کرتے تھے۔[1][2] بیسویں صدی کے وسط اور دیر کے آخر میں نسائی تحریک کے مخالفین اکثر اسقاط حمل کے حق کی مخالفت کرتے تھے اور امریکا میں مساوی حقوق میں ترمیم کے حامی تھے۔ اکیسویں صدی کے اوائل میں نسائی تحریک کے مخالفت کبھی کبھی پرتشدد، انتہائی بائیں بازو کی سیاست کا ایک عنصر رہی ہے۔

ریاستہائے متحدہ میں، کچھ نسائی تحریک کے مخالفین، اپنے نظریے مردوں کی عورتوں کے ساتھ دشمنی/نفرت کی بنیاد پر ایک ردعمل کے طور پر دیکھتے ہیں، جس میں متعدد معاشرتی مسائل کے لیے خواتین کو ذمہ دار قرار دیا جاتا ہے، جس میں نوجوانوں کی کالجوں میں داخلے کی کم شرح اور امریکی ثقافت میں مردانہ خیال میں کمی شامل ہے۔[3][4][5]

تعریف[ترمیم]

کینیڈا کے ماہر معاشیات میلیسا بلیس اور فرانسس ڈوپیوس ڈاری لکھتے ہیں کہ نسائيت مخالف خیالات نے بنیادی طور پر مردانگی کی شکل اختیار کرلی ہے، "معاشرے کی نسائی کی وجہ سے مرد بحران کا شکار ہیں"۔[6] نسائیت مخالف کی اصطلاح بعض مشہور خواتین کے لیے بھی استعمال ہوتی ہے، جن میں سے کچھ (جیسے نومی وولف، کیملی پگلیہ، اور کیٹ روپی) نسائی حقوق کی کچھ یا تمام عناصر کی مخالفت کی بنا پر خود کو نسائیت پسند کے طور پر بیان کرتی ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Ford، Lynne E. (2009). Encyclopedia of Women and American Politics. Infobase Publishing. صفحہ 36. ISBN 978-1-4381-1032-5. 
  2. "How anti-feminism is shaping world politics". Washington Post. اخذ شدہ بتاریخ اکتوبر 25, 2018. 
  3. "'Anti-feminist' YouTuber Sydney Watson launches مارچ for Men in Melbourne". News hub. اخذ شدہ بتاریخ اکتوبر 25, 2018.  [مردہ ربط]
  4. Anderson، Kristin J.؛ Kanner، Melinda؛ Elsayegh، Nisreen (2009). "Are Feminists man Haters? Feminists' and Nonfeminists' Attitudes Toward Men". Psychology of Women Quarterly. 33 (2): 216–224. CiteSeerX 10.1.1.692.9151Freely accessible. doi:10.1111/j.1471-6402.2009.01491.x. 
  5. Blais، Melissa؛ Francis Dupuis-Déri، Francis (2012). "Masculinism and the antifeminist countermovement". Journal of Social, Cultural and Political Protest. 11 (1): 21–39. doi:10.1080/14742837.2012.640532. 

بیرونی روابط[ترمیم]