ضلع سدھنوتی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ضلع سدھنوتی

سدھنوتی پاکستان کے زیر انتظام آزاد جموں و کشمیر کے دس اضلاع میں سے ایک ہے۔ سدھنوتی سابقہ ضلع پونچھ کی تحصیل پلندری پر مشتمل علاقہ جسے افغان النسل( سد ھن ) پٹھان قبائل کے نام پر سدھنوتی کا نام دے کر الگ ضلع کی حثیت دی گئی - سدھن ،اعوان، قریشی ،کیانی، سید اور دوسرے قبائل بھی یہاں آباد ہیں - ایک تاریخی اور باغی خطہ کے نام سے جانا جانے والا علاقہ ہے - جموں کشمیر کے آمر وں باد شاہوں کے خلاف عوامی بغاوتیں اسی خطہ سے اٹھی تھیں - یہاں نسلوں سے آباد سدھن قبائل افغانستان سے پاکستان کے سرحدی صوبے مردان صوابی بنوں اور وہاں سے راولپنڈی سے ہوتے ہوے پلندری آکر آباد ہوے یہاں سے کوٹلی باغ راولاکوٹ میں پھیلتے گئے آج بھی انکی شکل و صورت جسامت اور عادات رہن سہن ہٹ دھرمی اور باغی پن انہیں یوسف زئی کاکا زئی کرزئی اور دیگر پٹھان قبائل سے ملاتی ہے - پلندری . منگ . تراڑ کھل اور بلوچ 4 تحصیلیں ہیں - اپنے حقوق اور آزادیوں کے دفاع کی خاطر 1832 میں سردار سبز علی خان اور سردار ملی خان نے اپنی زندہ کھالیں کھنچوائی - اس ظلم کے قصے بزرگوں کی زبانی پورے پونچھ کے عوام تک پہنچے اور دونوں شہدا کی یادگار اور قتل گاہ آج بھی موجود ہے - گلاب سنگھ جو انگریز کا دلال اور سامراج کا حواری تھا جو 6 لاکھ فوج لے کر ریاست پونچھ پر حملہ آور ہوا تھا مہاراجہ کی فوج نے بچوں عورتوں کو قتل کیا جوانوں کو جنگی قیدی بنا کر لے گئے اور سبز علی خان اور ملی خان کو بہمانہ طریقہ سے قتل کیا - بعد میں جبری طور پر ریاست پونچھ کو مہاراجہ کی ملوکیت ریاست جموں کشمیر میں شامل کیا گیا - سدھنوتی بلند و بالا وادیوں بل کھاتے ندی نالوں اور دیودار اور چڑھ کے گھنے جنگلات رکھنے والا ضلع ہے - کیڈٹ کالج پلندری اور محی الدین یونیورسٹی نیریاں اہم تعلیمی ادارے ہیں - تعلیم میں سدھنوتی پاکستان کے کل اضلا ع میں 49 نمبر پر ہے - یہاں خواندگی کی شرح کم و بیش 79 فیصد ہے - سدھنوتی کا رقبہ 569 مربع میل اور آبادی 1998 کے تخمینہ کے مطابق 2 لاکھ 25 ہزار تھی جو آج لگ بھگ 3 لاکھ 25 ہزار ہے . پلندری شہر کی آبادی 36 ہزار نفوس منگ قصبہ 15 ہزار تراڑ کھل 18 ہزار بلوچ 10 ہزار افراد ہے - یہاں 42 گاؤں اور 16 قصبے ہیں جن میں پتن شیر خان چھ چھن . بارل . ٹہلیاں . دھمن . بساری . گلہ کوٹ . چترہ. دیوان . گوراہ. چوکیاں . نیریاں . جنڈالی اور گرالہ ہیں - پلندری ہائی ویز سے شاہراہ غازی ملت راولاکوٹ , بلوچ . کوٹلی آزاد پتن کہوٹہ راولپنڈی پاکستان سے منسلک ہے -

حوالہ جات[ترمیم]