ظل ہما

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ظل ہما
ظل ہما

معلومات شخصیت
پیدائش 26 فروری 1944ء
لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 16 مئی 2017ء (70 سال)
لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
وجۂ وفات ذیابیطس،  وگردے فیل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وجۂ وفات (P509) ویکی ڈیٹا پر
طرز وفات طبعی موت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
اولاد 4
والد شوکت حسین رضوی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں والد (P22) ویکی ڈیٹا پر
والدہ نور جہاں  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں والدہ (P25) ویکی ڈیٹا پر
رشتے دار نور جہاں، شوکت حسین رضوی
عملی زندگی
پیشہ گلوکارہ

ظلِ ہما (پیدائش: 26 فروری 1944ء– وفات: 16 مئی 2014ء) پاکستانی گلوکارہ اور برصغیر پاک و ہند کی نامور مغنیہ، اداکارہ، موسیقارہ اور ہدائتکارہ ملکہ ترنم نورجہاں کی بیٹی تھیں۔

سوانحی خاکہ[ترمیم]

ملکہ ترنم نورجہاں نے 1942میں اس وقت کے نامور ہدایتکار اور تدوین کار شوکت حسین رضوی سے شادی کی۔ نورجہاں کے بطن سے 21اپریل 1944کو ظل ہما پیدا ہوئیں۔ ظل ہما اپنے دیگر بھائیوں اکبر رضوی عرف اکو اور اصغر رضوی عرف اچھو سے چھوٹی اور تیسری اولاد تھیں۔ شوکت حسین رضوی سے نورجہاں کی یہی تین بچے تولد ہوئے۔ ملکہ ترنم نورجہاں اپنے دونوں بیٹوں سے زیادہ اپنی دختر ظل ہما سے محبت کرتی تھیں اور انکا زیادہ خیال رکھتی تھیں۔ لیکن ملکہ ترنم نورجہاں نے اپنے بیٹوں کی پرورش میں بھی کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کیا۔ ظل ہما اور اس کے دونوں بھائی ابھی کمسن ہی تھے کہ نورجہاں اور شوکت حسین رضوی میں اختلافات پیداہوئے اور نوبت طلاق تک جا پہنچی۔ بوقت طلاق شوکت حسین رضوی نے نورجہاں اور شوکت حسین رضوی کا ملکیہ شاہ نورسٹوڈیوز کے حصے پر تحفظات و خدشات کا ظہار کیا اور بچے نورجہاں کو واپس دینے سے انکار کر دیا جس پر نورجہاں نے بخوشی اپنے بچوں کو بالخصوص اپنی بیٹی کو پانے کے لیے جائداد کے کاغذات پر شوکت حسین رضوی کی خواہش کے مطابق دستخط کردئے۔ ظل ہما نے کراچی اور لاہور میں پرورش پائی اور موسیقی میں بھی دلچسپی دکھانا شروع کیا تاہم ملکہ نورجہاں نے ظل ہما کو سختی سے منع کر دیا کہ وہ فلمی دنیا اور گائیکی وغیرہ سے دور رہے۔ وہ نہیں چاہتی تھیں کہ انکی بیٹی کی ازدواجی زندگی موسیقی کے پیشے کی وجہ سے پریشان کن ہو۔

نورجہاں نے اپنی اولاد کے لیے ہر طرح کی قربانیاں دیں اور انکو ہر لحاظ سے آرام و سکون دینے کے لیے وقت بے وقت فلمی دنیا کی بے ہنگم زندگی کو اپنایا۔ انہوں نے اپنے فریضے کو اداکرتے ہوئے اپنی بیٹی ظل ہما کی شادی ایک معروف کاروباری اور زرگر عقیل بٹ سے شادی کردی۔ جس کے بعد ظل ہما نے اپنی شادی شدہ زندگی کو نہایت سکون سے گزارا۔ ظل ہما کے چار بیٹے ہیں۔ محمد علی بٹ سب سے بڑے صاحبزادے ہیں اور پاکستان کی ایک معروف موبائل کمپنی میں کام کرتے ہیں۔ جبکہ احمد علی بٹ اور ان کے دوسرے دو بھائی مصطفیٰ علی بٹ اور حمزہ علی بٹ لاہور کے ایک مشہور مغربی موسیقی کے گروہ موسوم ایٹنے پراڈگم کا حصہ ہیں۔ ملکہ ترنم مادام نورجہاں کی طرح انکی صاحبزادی ظل ہما کی ازدواجی زندگی بھی ہنگاموں سے دوچار رہی اور بالآخر عقیل بٹ سے انکی علیحدگی ہو گئی۔ ازدواجی زندگی میں ناکامی کے بعد 1990 کے اوائل میں ظل ہما نے اپنے شوق موسیقی کی آبیاری کرتے ہوئے موسیقی کی تعلیم حاصل کرنا شروع کردی اور قدرت کا کمال دیکھیے کہ غلام محمد سازنواز انکی والدہ ملکہ ترنم نورجہا ں کے بھی استاد تھے اور بعد میں ظل ہما نے موسیقی کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے غلام محمد سازنواز کے پاس زانوئے تلمذ تہ کیا۔ انہوں نے ایک اخبار کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے کہاتھا کہ اس عمر میں موسیقی کی تعلیم حاصل کرنا نا صرف عجیب بلکہ ایک دقت طلب مرحلہ ہے تاہم انہوں نے انتہائی اخلاص کے ساتھ ذہن بنالیاہے کہ وہ موسیقی کی تعلیم حاصل کرینگی کیونکہ علم کے سیکھنے کا عمل ناقابل اختتام ہے۔

شباہت[ترمیم]

نورجہاں کی بیٹی ظل ہما کے چہرے میں کافی حد تک انکی والدہ کی جھلک پائی جاتی تھی۔ ستواں ناک، کشمیری بادام کی طرح کی آنکھیں، چوڑی پیشانی، متناسب قد و جسامت میں ظل ہما اپنی ماں کی شبیہہ تھیں۔

دیگر بہن بھائی[ترمیم]

نورجہاں کی سید شوکت حسین رضوی سے تین اولادیں اکبر رضوی، اصغر رضوی اور ظل ہما پیداہوئیں۔ سید رضوی سے طلاق کے بعد نورجہاں نے لالی وڈ کے ہر دلعزیز اداکار اعجازدرانی سے شادی کرلی۔ اعجاز درانی سے نورجہاں کی تین بیٹیاں ٹینا، مینا اور حنا تولد ہوئیں۔ یہ تینوں بیٹیاں بھی کافی حد تک اپنی ماں سے مشابہہ تھیں مگر زیادہ شباہت اعجاز درانی سے تھی۔

علالت و وفات[ترمیم]

ظل ہما شوگر اورفشار خون کے عارضے کے باعث کئی روز سے لاہور کے مقامی اسپتال میں زیر علاج تھیں جب کہ چند روز قبل ڈاکٹرز نے شوگر کے باعث ان کی ایک ٹانگ بھی کاٹ دی تھی۔ ظل ہما اس سے قبل کراچی میں بھی زیر علاج رہیں تاہم حالت میں بہتری نہ آنے پر انھیں لاہور کے اسپتال میں منتقل کر دیا گیا لیکں ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ ان کی صحت میں بہتری آنے کی بجائے دن بدن خراب ہوتی جا رہی تھی جس کے باعث ظل ہما 16 مئی2014ء کو صبح 8 بجکر45منٹ پر لاہور میں اپنے خالق حقیقی سے جا ملیں۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

نورجہا ں کی بیٹی ظل ہما انتقال کرگئیں ایکسپریس اردو - ویب ڈیسک - جمعۃالمبارک - 16 مئی 2014

<link rel="mw:PageProp/Category" href="./زمرہ:پاکستانی_گلوکارائیں"/>