عاصم رضا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Asim Raza
AsimRaza(TheVisionFactory).jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 21 اگست 1966 (57 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کراچی  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی یونیورسٹی کالج لندن
نیشنل کالج آف آرٹس  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ فلم ہدایت کار،  میوزک ویڈیو ہدایت کار  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

عاصم رضا ایک پاکستانی فلم اور ٹیلی ویژن کمرشل ڈائریکٹر اور پروڈیوسر ہیں۔ عاصم نے اپنے کیرئیر کا آغاز بطور آرٹیکچر کیا اور فلم پروڈکشن اور ڈائریکشن میں آنے سے پہلے ایک آرکیٹیکچرل فرم کے ساتھ کام کیا۔ انہوں نے 90 کی دہائی کے وسط میں بطور فلم میکر اپنا آغاز کیا، انہوں نے ٹی وی اشتہارات سے لے کر میوزک ویڈیوز، طویل ڈراموں اور فیچر فلموں تک تمام بصری میڈیم میں کام کیا۔ 2004 میں، عاصم نے " ماہی وے " کے لیے بہترین میوزک ویڈیو ڈائریکٹر کا لکس اسٹائل ایوارڈ جیتا تھا۔ 2013 میں، عاصم نے ایک ٹیلی ویژن فلم، بے حد کی ہدایت کاری کی جس نے بہترین ٹیلی ویژن فلم کا ہم ایوارڈ جیتا ۔ عاصم نے اپنی فیچر فلم کا آغاز ایک آنے والے دور کے ڈرامے ہو من جہاں سے کیا، [1] [2] عاصم رضا دی ویژن فیکٹری کے نام سے ایک پروڈکشن کمپنی کے مالک ہیں۔

کام[ترمیم]

1994-1996: TVCs اور میوزک ویڈیوز[ترمیم]

1994 کے بعد، عاصم نے بطور پروڈیوسر/ڈائریکٹر بہت سے اشتہارات اور ویڈیوز کا کام کیا۔ انہوں نے اشتہارات اور مارکیٹنگ پر مبنی ٹیلی ویژن کے لیے دی بگ آئیڈیا کے نام سے ایک میگزین شو کی بھی ہدایت کاری کی۔ 1994-1996 کے درمیان عاصم نے بڑے برانڈز جیسے کوکا کولا ، اسپرائٹ ، لکس ، اولے ، کیڈبری ، موبی لنک ، سن سلک ، پینٹین ، ہیڈ اینڈ شولڈرز ، گارنیئر اور بہت سے دوسرے کے لیے اشتہارات جاری رکھے۔ انہوں نے پاکستان کے موسیقاروں جیسے جنون ، جنید جمشید ، نجم شیراز ، ابرار الحق اور حدیقہ کیانی کے ساتھ بھی کام کیا ہے۔ [3]

1997–2012: دی ویژن فیکٹری اور میوزک کنسرٹس[ترمیم]

عاصم اپنے اسٹوڈیو دی ویژن فیکٹری میں۔

1997 میں عاصم نے اپنی پروڈکشن کمپنی دی ویژن فیکٹری شروع کی۔ اس بینر تلے انہوں نے جنون بینڈ کے لیے سنگل " سیونی " کا میوزک ویڈیو بنایا۔ یہ ۔ چینل V اور MTV Asia دونوں پر آٹھ ہفتوں سے زیادہ کے لیےنمبر ایک پر رہا۔[حوالہ درکار]اس کے نیویارک فلم اکیڈمی سمیت مختلف شارٹ کورسز، ورکشاپس اور سیمینارز میں شرکت کی۔ 4 مئی 1997 کو، آصف جمال نے نصرت فتح علی خان کے آخری کنسرٹ کو فلمایا اور ہدایت کی، 17 اگست 1997 کو ان کی موت سے پہلے، جسے "دی پاکستان 4 یو کنسرٹ" کے نام سے جانا جاتا ہے، کراچی جیم خانہ میں چینل وی پر نشر ہوا۔ کنسرٹ کو بین الاقوامی سطح پر ٹیلی ویژن پر نشر کیا گیا، جس میں پہلی پاکستانی موسیقی کی پروڈکشن کی نشاندہی کی گئی جسے جنوبی ایشیا سے باہر نشر کیا گیا۔ کنسرٹ کو لائیو البم بنایا گیا جس کا نام ہے، "Swan Song-His Final Performance"۔ اس کے بعد، عاصم نے سنٹرل پارک میں جنون کی طرف سے پیش کیے گئے کنسرٹ کو فلمایا، جسے "اے ٹریبیوٹ ٹو نصرت فتح علی خان - جنون لائیو ان سنٹرل پارک " کے نام سے جانا جاتا ہے۔ عاصم نے 2003 میں دوسری لکس اسٹائل ایوارڈز کی تقریب اور کتھک رقص کے بارے میں مختصر دستاویزی فلم کی ہدایت کاری کی جس کا نام رقصاں تھا جس میں پاکستانی کلاسیکل ڈانسر فصیح الرحمان کی صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا گیا۔ 2008 میں، وہ انڈس ویلی اسکول آف آرٹ اینڈ آرکیٹیکچر میں کمیونیکیشن ڈیزائن ڈپارٹمنٹ کے بورڈ آف اسٹڈیز کے ایکسٹرنل بورڈ ممبر بن گئے۔

2013–حال: بہاد اور ہو من جہاں[ترمیم]

2013 میں، عاصم نے ہم ٹی وی کے لیے ایم ڈی پروڈکشن کے تحت عمیرہ احمد [4] لکھی ہوئی ایک ٹیلی فلم بے حد کی ہدایت کاری کی۔ [5] فواد خان ، نادیہ جمیل اور سجل علی نے اداکاری کی، [6] بے حد کا پریمیئر 23 فروری 2013 کو ہم ٹی وی پر ہوا۔ [7] ٹیلی فلم نے دوسرے ہم ایوارڈز کی تقریب میں بہترین ٹیلی ویژن فلم کا ایوارڈ جیتا۔ [8] [9]

عاصم نے فلم انڈسٹری میں اپنی ہدایت کاری کا آغاز ہو من جہاں سے کیا، [10] جسے شہریار منور صدیقی نے ان کے ساتھ مل کر پروڈیوس کیا۔ ہو من جہاں ایک ڈرامہ فلم ہے جس میں ماہرہ خان ، شہریار منور صدیقی ، عدیل حسین اور سونیا جہانی نے اداکاری کی ہے [11] یہ فلم یکم جنوری 2016 کو ریلیز ہوئی تھی۔ فلم نے زبردست تنقیدی جائزوں کا آغاز کیا اور باکس آفس پر زبردست تجارتی کامیابی ثابت ہوئی۔ [12] ہو من جہاں کو اے آر وائی فلمز نے جاری کیا تھا۔ [13] عاصم نے فلم کے لیے تین گانے بھی لکھے جنہیں ناقدین نے بہت سراہا تھا۔ [14] ایکسپریس ٹریبیون کو انٹرویو دیتے ہوئے عاصم نے کہا، "کسی کو ایسی کہانی سنانی چاہیے جو حقیقی، متعلقہ اور زندگی سے سچی ہو، اسی لیے میں نے مزید مواد پر مبنی فلم کا انتخاب کیا جو دلوں کو چھو لے۔" [15]

ذاتی زندگی[ترمیم]

عاصم رضا کی شادی سابق آرمی چیف اور پاکستان کے صدر پرویز مشرف کی بیٹی عائلہ رضا سے ہوئی ۔ [16] تعلیم کے لحاظ سے عائلہ ایک ماہر تعمیرات ہونے کے علاوہ، ایک غیر منافع بخش تنظیم، آل پاکستان میوزک کانفرنس (APMC)، کراچی میں بطور ڈائریکٹر روایتی پرفارمنگ آرٹس کے فروغ کے لیے کام کر رہی ہیں۔ ان کی ایک ساتھ دو بیٹیاں ہیں، مریم رضا اور زینب رضا۔ [17]

فلموگرافی[ترمیم]

فلمیں[ترمیم]

سال عنوان زبان نوٹس
2016 ہو من جہاں اردو جاری کیا گیا – 1 جنوری 2016
2019 پرے ہٹ پیار اردو جاری کیا گیا – 9 اگست 2019

ٹیلی ویژن[ترمیم]

نہیں. سال ٹی وی
01 2013 بے حد

ایوارڈز[ترمیم]

نہیں سال فلم ایوارڈز
01 2004 ماہی وی بہترین میوزک ویڈیو ڈائریکٹر
02 2013 Behadd بہترین ٹیلی فلم ڈائریکشن

مزید[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]

  1. "ARY Films and Asim Raza partner to release multi-starer "Ho Mann Jahaan"". Zeeshan Mahmood. Galaxy Lollywood. 4 October 2015. اخذ شدہ بتاریخ 06 نومبر 2015. 
  2. "Ho Mann Jahaan — the next big thing in Pak cinema is coming soon". Zoya Anwer. ڈان نیوز. 7 October 2015. اخذ شدہ بتاریخ 06 نومبر 2015. 
  3. "Asim Raza silently working on a film". Rashid Nazir Ali. Review it!. اخذ شدہ بتاریخ 06 نومبر 2015. 
  4. ""Behadd" or Boundless!!! ~ A Telefilm Review by Swati Ghosh". Talksoap. 12 June 2013. اخذ شدہ بتاریخ 23 اکتوبر 2014. 
  5. "Asim Raza's Behadd to go onair soon". Daily Times. 8 June 2013. 29 اکتوبر 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 21 اگست 2014. 
  6. "BEHADD starring Nadia Jamil and Sajal Ali, alongside Fawad Khan will be coming on 8th June on HUM TV.". FUCHSIA weekly. اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2014. 
  7. "Behadd premier". Fashion of the year. 7 June 2013. 23 دسمبر 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 21 اکتوبر 2014. 
  8. "Winner List of 2nd Hum Awards". Showbiz Spice. 30 March 2014. 03 اپریل 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 06 اپریل 2014. 
  9. "2nd Servis Hum Awards Held at Karachi". Umar Farooq. Web Pakistan. 5 April 2014. 07 جولا‎ئی 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 07 اپریل 2014. 
  10. "Ho Mann Jahan Casting Press Conference in Karachi". Pakistan Music Mind. 26 March 2015. اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2015. [مردہ ربط]
  11. "ARY Films to Release 'Ho Mann Jahaan' on January 1st 2016!". Views Craze. 8 October 2015. اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2015. 
  12. "ARY Films to release 'Ho Mann Jahaan'". BizAsia. Raj Baddhan. 08 اکتوبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 08 اکتوبر 2015. 
  13. "Mahira Khan's "Ho Mann Jahaan" to be released on January 1, 2016, commercially". Daily Pakistan. Ali Zain. اخذ شدہ بتاریخ 07 اکتوبر 2015. 
  14. "Ho Mann Jahaan – A Musical Treat". اے آر وائی ڈیجیٹل. 2 November 2015. اخذ شدہ بتاریخ 03 نومبر 2015. 
  15. "Coming of age with Ho Mann Jahaan". Hasan Ansari. دی ایکسپریس ٹریبیون. 4 November 2015. اخذ شدہ بتاریخ 06 نومبر 2015. 
  16. Pervez Musharraf, In the Line of Fire: A Memoir, Simon and Schuster (2006), p. 52
  17. "Pervez Musharraf's granddaughter takes first step in Showbiz". Daily Pakistan Global (بزبان انگریزی). 2021-03-30. اخذ شدہ بتاریخ 11 اکتوبر 2021.