عباس کمیلی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
عباس کمیلی
معلومات شخصیت
پیدائش 15 دسمبر 1942  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
کھارادر،  وکراچی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 8 جون 2019 (77 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
کراچی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب اسلام
فرقہ اہل تشیع
فقہی مسلک جعفری
جماعت متحدہ قومی موومنٹ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
مناصب
رکن ایوان بالا پاکستان   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
دفتر میں
مارچ 2003  – 2009 
عملی زندگی
استاذ رشید ترابی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں استاد (P1066) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ عالم،  وسیاست دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
P islam.svg باب اسلام

علامہ عباس کُمیلی (15 دسمبر 1942ء – 8 جون 2019ء) شیعہ عالم دین اور سابقہ رکنِ ایوان بالا تھے۔ وہ جعفریہ الائنس پاکستان کے بانی اور سربراہ تھے۔[1]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

15 دسمبر 1942ء کو کراچی کے علاقہ کھارادر میں واقع بانئ پاکستان محمد علی جناح کے گھر وزیر مینشن کے سامنے والے گھر میں پیدا ہوئے، جبکہ وہ محمد علی جناح کے رشتہ داروں میں سے ایک تھے۔[2] انہوں نے علامہ رشید ترابی سے کسبِ فیض کیا۔[1]

حالات زندگی[ترمیم]

وہ اتحاد بین المسلمین کے لیے جدوجہد کرتے تھے، اس کے ساتھ ساتھ فلسطین فاؤنڈیشن کے بانی سرپرست اراکین بھی رہے۔[3][4] سنہ 2011ء میں انہوں نے شیعہ ٹارگٹ کلنگ کے خلاف ”تحریک لبیک یا حسین موومنٹ“ کا آغاز کیا، اِس ضمن انہوں نے اپنی گرفتاری بھی دی۔ ان کے 42 سال کے بیٹے مولانا علی اکبر کمیلی کو ستمبر 2014ء میں ان کی فیکٹری کے باہر فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا تھا۔[2]

عباس کمیلی متحدہ قومی موومنٹ کے ٹکٹ پر مارچ 2003ء سے 2009ء تک ایوان بالا پاکستان کے رکن بھی رہے۔[2] انہوں نے دہشت گردی کے خلاف فورم اگینسٹ اِن ٹولرنس اینڈ ٹیررسٹ ہیٹر (فیتھ) کی بنیاد بھی رکھی، جس میں تمام مسالک سمیت مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والی شخصیات شامل تھیں۔[1]

وفات[ترمیم]

8 جون 2019ء کو طویل علالت کے باعٹ کراچی کے مقامی ہسپتال میں 77 برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔[5] انہیں آبائی قبرستان چاکیواڑہ حسینی باغ نمبر ایک میں دفن کیا گیا۔[3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ قیصر کامران (8 جون، 2019)۔ "علامہ عباس کمیلی کون تھے ؟"۔ Samaa TV۔ Check date values in: |date= (معاونت)
  2. ^ ا ب پ "معروف عالمِ دین علامہ عباس کُمیلی سپردخاک"۔ Sahar Urdu۔ 8 جون، 2019۔ Check date values in: |date= (معاونت)
  3. ^ ا ب رضا جعفری (8 جون، 2019)۔ "علامہ عباس کمیلی طویل علالت کے بعد کراچی میں انتقال کرگئے"۔ Dawn News Television۔ Check date values in: |date= (معاونت)
  4. "عالم دین علامہ عباس کمیلی انتقال کر گئے، وزیراعظم کا اظہار افسوس"۔ Dunya Urdu۔
  5. "معروف عالم دین علامہ عباس کمیلی طویل علالت کے بعد انتقال کرگئے"۔ 8 جون، 2019۔ Check date values in: |date= (معاونت)