عبدالله بختانی خدمتگار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
عبدالله بختانی خدمتگار
معلومات شخصیت
P literature.svg باب ادب
فائل:عبدالله بختانی خدمتگار.jpg
عبد اللہ بختانی خدمتگر
فائل:Abdullah-Bakhtanai-Khedmatgar.png
عبد اللہ بختانی خدمتگر

عبدالله بختانی خدمتگار (پ: ، 1304 ء ، صوبہ ننگرہار کے سره رود ضلع میں ، م:1397 کابل) ، ایک پشتون صحافی ، مصنف، ادیب اور شاعر تھے ۔ اس نے دری میں بھی تصنیفات لکھی ہیں۔

تعلیم[ترمیم]

عبداللہ بختانی خدمتگار ۱۳۰۴ کو صوبہ ننگرہار کے سره رود ضلع کے چارباغ صفا گاؤں میں پیدا ہوئے تھے۔ انہوں نے ابتدائی تعلیم گھر سے اپنے والدین کے ساتھ شروع کی اور پھر عربی دینی علوم ، فقہ ، تعوید ، تفسیر ، حدیث ، اصول فقہ ، اصول حدیث ، عقائد ، وراثت اور گرامر دوسرے اساتذہ سے سیکھا۔ ننگرہار اور کابل کے نچلے اسکولوں میں جدیدیت ، اظہار ، معنی ، دانشمندی اور منطق ، کابل نے عربی کے معیاری نصاب نصاب میں تعلیم حاصل کی اور مولوی کی ڈگری حاصل کی۔ تب سے ، اس نے اس وقت کے مقامی مدارس کے معیار پر فارسی اور عربی ادب ، قدیم طب اور ریاضی کی تعلیم دی ہے ۔ انہوں نے بیچلر ڈگری تک تاریخ ، جغرافیہ ، طبیعیات ، کیمسٹری اور حیاتیات کا ذاتی طور پر مطالعہ کیا ہے ۔ انہوں نے فلسفہ ، سماجیات ، سیاست اور نفسیات میں بڑے پیمانے پر تعلیم حاصل کی۔

انہوں نے دینی علوم ، ادب ، طب اور ریاضی کی تعلیم معروف اورمعروف اساتذہ سے حاصل کی ، جن کے کچھ نام درج ذیل ہیں: ان کے والدین ، قلعہ نو ، ریڈ دریائے کے حاجی ملا مداد ، ملا محمد حافظ ، حضرت صاحب مسجد کے خطیب ، حافظ صاحب ، حضرت صاحب مسجد کے حافظ صاحب مدرسہ کے ہیڈ ماسٹر ، حافظ عبدالغنی ، علی خیل کے ملا عبد الغنی ، ڈاکٹر شمی پور ، مولوی عبد اللہ جان ، دریائے سرخ ، خوگیانی مولوی میر عبدالوحید ، نکرخیل مسجد کے خطیب ، لوگر کے ملا عبد الودود مولیم ، قاسم یکہ میران کے مولوی امین گل ، لغمان کے گاؤں پسائی کے رہائشی مولوی عبدالرحیم ، لغمان کے مولوی فیض اللہ ، مسٹر نقیب صاحب خلیفہ اور ان کے بیٹے استاد مولوی محمد سعید سررودال اور کچھ دوسرے۔

بختانی خدمتگار نے چہارم تک انگریزی کی تعلیم پگمن کے ایک استاد جناب محمد عمر قریشی کے ساتھ حاصل کی ہے۔ ان کا پشتو میں کوئی استاد نہیں تھا اور وہ خود اپنے استاد تھے۔ پشتو شاعری اور ادب کے ان کے استاد استاد گل پاچا الفت ، استاد قیوم الدین خادم ، استاد صدیق اللہ ریشتین اور استاد عبد الرؤف بینوا تھے۔

وہ روسی زبان میں رواں تھے۔ ۱۹۶۳ - ۱۹۶۴ میں انہوں نے ماسکو کی لومونوسوف اسٹیٹ یونیورسٹی میں ایک سال روسی زبان اور ادب کا مطالعہ کیا اور زبان کی تعلیم اور طریقہ کار میں ڈپلوما حاصل کیا۔ اس نے مترجم کا طریقہ کار کامیابی کے ساتھ مکمل کیا۔

نوکریاں[ترمیم]

عبداللہ بختانی خدمتگار نے اپنی زندگی کا بیشتر حصہ ملک کی سائنسی ، تعلیمی ، تحقیقی ، ادبی ، صحافتی اور قومی خدمات میں صرف کیا۔ اس سلسلے میں ، وہ ٢٣ سال سے پشتو سوسائٹی اور سائنس اکیڈمی میں ١٤ سال سے سائنسی تحقیقی سرگرمیوں میں مصروف رہے۔ انہوں نے 1325 میں 10 مارچ کو ، حکومت نے ننگرہار محکمہ تعلیم کے 11 ویں رینک کے افسر کی حیثیت سے مشنوں کا ایک سلسلہ شروع کیا۔ ١٣٢٦ میں صوبہ ننگرہار کے پریس ڈیپارٹمنٹ میں ننگرہار صوبائی دارالحکومت کے ملازمین کے لئے پشتو کورسز کے لیکچرر کے طور پر مقرر کیا گیا تھا۔ یہ کورس سرکاری طور پر پشتو سوسائٹی سے وابستہ تھے۔١٣٣١ میں ، وہ زیری اخبار کے ایڈیٹر ان چیف اور پشتو سوسائٹی کے پیشہ ور رکن بن گئے۔ ١٣٣٤ سے ١٣٣٩ سال تک ، وہ ننگرہار پریس کے ڈپٹی ڈائریکٹر اور پشتو کورسز کے ڈائریکٹر رہے ، جو پشتو برادری سے تعلق رکھتے تھے۔ وہ ننگرہار میگزین کے چیف ایڈیٹر ، آزاد پریس ایجنسی کے نشریاتی شعبے کے پیشہ ور رکن ، ننگرہار پریس کے چیف ایڈیٹر اور ننگرہار اخبار کے چیف ایڈیٹر رہے ہیں۔ ١٣٣٩ میں وہ پشتو سوسائٹی کا پیشہ ور رکن بن گیا تھا۔ وہ ادبی ڈائریکٹر اور پھر انجمن کے ڈپٹی ڈائریکٹر بنے۔ ١٣٥٤ میں اس نے محقق کی تعلیمی ڈگری حاصل کی۔ ملک کے اخبار کے ایڈیٹر میں وزارت اطلاعات و ثقافت کے بعد ، ترقی و انتظام ، عوامی ثقافت (لوک داستان) انتظامیہ کے آرڈر ، پکتیا میگزین کے ایڈیٹر ، کنٹری اخبار کے ڈائریکٹر اور ایس ایم آر آر کو آرڈر دینے کا حکم دیا۔ تو اس نے کام کیا۔ ١٣٦٤ میں وہ افغانستان کی سائنس اکیڈمی کے اکیڈمک ممبر بنے۔ وہ دو سال تک اکیڈمی آف سائنسز کے ممبر رہے اور وہ افغانستان کے رائٹرز ایسوسی ایشن کے پہلے نائب صدر اور پہلے سکریٹری رہے۔ اس کے بعد وہ سائنس اکیڈمی کے اکیڈمک ممبر رہے۔ ١٣٧٣ میں ریٹائر ہوئے۔ مذکورہ فرائض کے علاوہ ، عبد اللہ بختانی خدامتگر نے وقتا فوقتا اسکولوں اور نصاب میں پشتو ، دری اور عربی کی تعلیم بھی دی ہے اور کابل یونیورسٹی میں فیکلٹی آف لٹریچر میں پشتو ادب کی تاریخ میں لیکچرر کی حیثیت سے خدمات انجام دی ہیں۔ ١٣٨٢ کے دوران کچھ عرصہ کے لئے ، وہ ہفت روزہ افغان اتحاد کے منیجنگ ایڈیٹر رہے۔ انہوں نے ١٣٨٥ کے آغاز تک اکیڈمی کے ہیڈ اکیڈمک ممبر کی حیثیت سے اپنے تعلیمی فرائض جاری رکھے اور پھر وہ ریٹائر ہوگئے۔ ١٣٥٥ کے دوران ، انہوں نے پشتو سوسائٹی سے محقق کی تعلیمی ڈگری حاصل کی ۔بعد ازاں ، اکیڈمی آف سائنسز سے یہ تعلیمی ڈگری ہیڈ ریسرچر کی تعلیمی ڈگری بن گئی اور اسی سطح پر قبول کیا گیا ، جو یونیورسٹی کے پروفیسر کی ڈگری کے مترادف ہے۔ .

مطبوعہ کام[ترمیم]

  1. په اسلام کښې د ښځو حقوق - د مصرد (المنار) د جريدې د مدير، رشيد رضا، د (الوحى المحمدي) له کتاب څڅه ترجمه - د ١٣٢٧ لېږديز لمريز کال چاپ.
  2. مصايب الدخان (د تمباکو زيانونه)، د مصر د الازهر پوهنتون د استاد سيد محمد عبدالغفار الهاشمي الافغانى د عربي کتاب ژباړه، د ١٣٣٢ ل ل کال چاپ. دوهم ايډيشن له زياتونو سره بيا ترجمه د ١٣٤٨ هـ ش کال چاپ.
  3. اراده (روحيات)، د پروفيسر غلام حسن مجددي له دري ليکنې نه ژباړل شوی او د آريانا دايرة المعارف د يو شمير نورو ليکنو ژباړه، د ١٣٣٢ ل ل کال چاپ.
  4. شعر او ادب، د پښتو د معاصر شعر او ادب تيوريکي څيړنه، ټولونه، سريزه او اهتمام د ١٣٣٣ ل ل کال چاپ.
  5. د زړه راز، د شعرونو لومړۍ مجموعه، د ١٣٣٥ ل ل کال چاپ.
  6. پښتانه د علامه اقبال په نظر کې، د ١٣٣٥ ل ل کال چاپ.
  7. ميرزا عبدالرحيم رحيمي (احوال و اشعار) بزبان درى، د ١٣٣٥ هـ ش کال چاپ. چاپ دوم با افزونى ها ١٣٨٠ ل ل.
  8. پښتني خويونه، ادبي ټولنپوهنيزه څېړنه، د ١٣٣٥ ل ل کال چاپ.
  9. د ملنگ جان خوږې نغمې، ټولونه، سمون، سريزه او ترتيب، د ١٣٣٥ هـ ش کال چاپ. دوهم چاپ له زياتونو سره ١٣٤٨ ل ل.
  10. خوږې ترخې، د ادبي او انتقادي نثرونو مجموعه، د ١٣٣٦ ل ل کال چاپ.
  11. سيدو ملنگ، موزيکال اصلاحي ډرام په څلور وپردو کې، په ننگرهار نندارې کښې ښودنه، د ١٣٣٨ ل ل کال چاپ، په کابل کې پر ١٣٤١ ل ل کال چاپ.
  12. علمي آزمېښتونه په ساده وسايلو، ساينسي درسي مرستيال، د موريس پارکر ليکنه، د استاد غلام علي آيين له دري ترجمې نه پښتو شوی، د ١٣٤١ ل ل کال چاپ.
  13. راز (د شعرونو دوهمه مجموعه)، د ١٣٤٢ ل ل کال چاپ.
  14. پښتو کلي څلورم ټوک، درسي، د ١٣٤٥ ل ل کال چاپ.
  15. شرنگ (د شعرونو درېيمه مجموعه)، د ١٣٤٦ ل ل کال چاپ.
  16. معاصر اديبان، تذکره، د ١٣٤٧ ل ل کال چاپ.
  17. توربريښ، د پښتنو ملي تاريخي شفاهي سندرې، ټولونه، ترتيب او سريزه، د ١٣٤٧ هـ ش کال چاپ. دوهم چاپ _ ١٣٨٧ ل ل.
  18. پښتو لنډې کيسې، د لنډو د استانونو مجموعه، د ١٣٤٧ ل ل کال چاپ.
  19. د خوشحال خان خټک رباعيات، د اکادميک متن جوړونه، له ملگرو سره، د ١٣٤٩ ل ل کال چاپ.
  20. د پښتو ټولنې رئيسان او غړي (تذکره)، د ١٣٤٦ ل ل کال چاپ.
  21. ابر بهارى، د دري شعرونو مجموعه، د ١٣٥١ ل ل کال چاپ.
  22. مرغلرې، د ادبي نثرونو مجموعه، د ١٣٥١ ل ل کال چاپ.
  23. د پښتو پت، د لنډو داستانونو مجموعه، د ١٣٥٢ ل ل کال چاپ.
  24. د يونس خيبري ديوان، نقل، سمون، سريزه، اکادميک متن او اهتمام، د ١٣٥٦ ل ل کال چاپ.
  25. د پادري هيوز کليد افغانى، سريزه، تعليقات او لغتنامه، ١٣٥٦ ل ل کال چاپ.
  26. پښتانه شعراء، څلورم ټوک، تذکره، د ١٣٥٧ ل ل کال چاپ.
  27. د افغانستان سفر، له روسي نظم څخه پښتو منظومه ژباړه، د ١٣٥٧ لېږديز لمريز کال چاپ.
  28. پښتو چاپي آثار، ټولونه، اوډنه او سريزه، د ١٣٥٧ ل ل کال چاپ.
  29. د گلوکر – د شعرونو پنځمه مجموعه _ ١٣٥٩ ل ل کال چاپ.
  30. څورب او خوار، له روسي څخه د انتون چيخوف د داستانونو ترجمه، د ١٣٥٩ ل ل کال چاپ.
  31. د زړه آواز، د شعرونو انتخابي مجموعه، د ١٣٦٣ ل ل کال چاپ.
  32. شفق، د شعرونو مجموعه، د ١٣٦٣ ل ل کال چاپ.
  33. تذکرة الشعراء، تدوين، سريزه او حواشي، د ١٣٦٣ ل ل کال چاپ.
  34. د باچا خان ليکونه، لومړى ټوک، ټولونه، اوډنه، سريزه او حواشي، د ١٣٦٣ ل ل کال چاپ.
  35. زمونږ وطن د جرگو وطن، تاريخي، د ١٣٦٤ ل ل کال چاپ.
  36. د سولې او آزادۍ قهرمان خان عبدالغفار خان، تذکره، د ١٣٦٦ ل ل کال چاپ.
  37. د بابا مشالونه، د باچا خان وجيزې، انتخاب، ټولونه او سريزه، د ١٣٦٦ ل ل کال چاپ.
  38. د اخلاص هديه، د خان عبدالغفار خان په باره کې شعرونه، ټولونه، اوډنه او سريزه، د ١٣٦٦ ل ل کال چاپ.
  39. د سولې او تفاهم د ليارې مبلغ، دوکتور سعيد افغانى، تذکره، د ١٣٦٦ ل ل کال چاپ.
  40. پښتانه شعراء، پېنځم ټوک، تذکره، د ١٣٦٧ ل ل کال چاپ.
  41. سوله او سلام د اسلام په رڼا کې، ديني څېړنه، د ١٣٦٧ ل ل کال چاپ.
  42. د خان عبدالغفار خان اندونه او انځورونه، ټولونه، اوډنه او سريزه، د ١٣٦٨ ل ل کال چاپ.
  43. د پاکستان اسلامي ماهيت . . .، تاريخي، د ١٣٦٨ ل ل کال چاپ.
  44. د ملي ادب او ژورناليزم خادم، د استاد قيام الدين خادم تذکره، د ١٣٦٨ ل ل کال چاپ. دوهم چاپ _ ١٣٨٦ ل ل کال، درېيم چاپ ١٣٨٧ ل ل کال.
  45. فراقنامه، منظومه، د ١٣٧٨ ل ل کال چاپ.
  46. زما استاد الفت، تذکره او ادب څېړنه، د ١٣٨٠ ل ل کال چاپ.
  47. خوشحال خان او يو څو فرهنگيالي خټک، تذکره او ادب څېړنه، د ١٣٨٠ ل ل کال چاپ.
  48. گلنامه، بولـله، د ١٣٨١ ل ل کال چاپ.
  49. د ملي ادب او ژورناليزم يو هېر شوى خدمتگار شمس الدين قلعټکى، تذکره، د ١٣٨١ ل ل کال چاپ.
  50. ترنم دل، مجموعۀ اشعار درى، د ١٣٨١ ل ل کال چاپ.
  51. ويرنې، د شعرونو مجموعه، د ١٣٨١ ل ل کال چاپ.
  52. خدمتگار د فقير خېل په کتب خانه کې، خاطرې او څېړنى، د ١٣٨٢ ل ل کال چاپ.
  53. د قرآن شريف ځينې خطي نسخې، تجويدونه، تفسيرونه، مفسران او مدرسې، د ١٣٨٣ ل ل کال چاپ.
  54. د بياض ديوان، نقل، سمون، حاشيې او سريزه (اکاډميک متن)، د ١٣٨٣ ل ل کال چاپ.
  55. زه، ملنگ جان او خوږې نغمې، تذکره او خاطرې، د ١٣٨٣ ل ل کال چاپ.
  56. د باچا خان ليکونه، ټولونه، اوډنه، سريزه او حواشي، د ١٣٨٤ ل ل کال چاپ. د لومړي او دوهم ټوک يو ځاى دوهم چاپ ١٣٨٧ ل ل کال.
  57. بشربت مجبور ورنجور در آستانه هزارۀ سوم ميلادى، اجتماعى سياسى، د ١٣٨٤ ل ل کال چاپ.
  58. پښتو پالنه او ژب څېړنه، د ١٣٨٤ ل ل کال چاپ.
  59. حماسه ويونکى مبارز شاعر اجمل خټک ايډيټ، سريزه او اهتمام، د ١٣٨٤ ل ل کال چاپ.
  60. د سيد جمال الدين افغان د ژوندانه هدف، د ١٣٨٥ ل ل کال چاپ.
  61. د هيلې د هيلۍ سپين وزر، بديعي ترجمې، د ١٣٨٦ ل ل کال چاپ.
  62. د دين ستورى مولانا نجم الدين د هډي اخوانزاده، د ١٣٨٦ ل ل کال چاپ. ستارۀ دين مولانانجم الدين اخونزاده هده، ترجمۀ محترم فضل الرحمن فاضل، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  63. د سپين غره په لمنو کې، سياسي، ټولنيزې ليکنې، د ١٣٨٦ ل ل کال چاپ.
  64. شجرۀ پير پټان، مرتب: غلام حبيب نوابى، تصحيح، تنقيح، ايډيټ، مقدمه و اهتمام، د ١٣٨٦ ل ل کال چاپ.
  65. د گلکڅونو په ارمان، د څلوريزو مجموعه، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  66. پير افغانان د حکيم الله تصور ليکنه، ايډيت، سريزه او چاپڅارنه، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  67. بازتاب رويداد هاى تاريخى در سروده هاى اولسى پشتو، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  68. دوه ادبي ليکونه، ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  69. د کوشانى دورې ځينې يادگارونه، تاريخي لرغونپوهنه، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  70. د حج سفر، کيې او خاطرې، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  71. فخر افغان او افغانستان، د ١٣٨٧ ل ل کال چاپ.
  72. ابن سينا اديب طبيب، د ١٣٨٨ ل ل کال چاپ.
  73. د نارنج بهار، تاريخي، ادبي، څېړنيز او طبي، د ١٣٨٨ ل ل کال چاپ.

چھپائی کے تحت[ترمیم]

  1. تازہ پھول ، ہم عصر شعراء کی نظموں کے منتخب کردہ مجموعے ، انتخاب ، مجموعہ ، ترمیم ، انتظام اور نگہداشت۔
  2. افغان ، افغانستان اور اقبال۔
  3. قانونی اور مجرمانہ تعامل کا جرنل عبد الرحمن پجہاک ۔ نقل ، تصحیح ، نظر ثانی اور پیش کش۔
  4. دو انگلیوں والا کاغذ ، ایک نوکر کا خط۔
  5. خدمتگر کا شعری مجموعہ۔

غیر مطبوعہ کام[ترمیم]

  1. پرل کی تلاش ، ادبی تحقیق۔
  2. ثقافت اور ادب ، ادبی شخصیات اور تحقیق۔
  3. کتاب کا جائزہ ، کتابیات۔
  4. پشتون شاعر ، چھٹی جلد ، تذکیرا۔
  5. پشتون شاعر ، جلد 7 ، تزکیرا۔
  6. افغانستان میں تین شعری معاصر سوانح حیات۔
  7. دیوانِ خلیفہ قاسم قاسمی چاہار باغی ، نقل ، نظر ثانی ، تعارف اور تفسیر۔
  8. دری کے وسیع ادب میں ، ادبی تحقیق۔
  9. قومی شاعر کی زندگی اور فن (ملنگ جان کے بارے میں)۔
  10. رنگین عذاب ، اجمل خٹک کی زندگی اور فن۔
  11. خدمتگار طبی تحریریں.
  12. ملک کی تعمیر نو کی امید پر سماجی و سیاسی تحریریں۔
  13. احمد گل کی شاعری۔
  14. ملک نعیم کے گیت۔
  15. بینا کا چھوٹا سا کھیل۔
  16. یادوں کا دفتر۔
  17. افغانستان ، نظموں کا مجموعہ۔
  18. تشدد اور نفرت ، چار گنا۔
  19. دل کے زخم ، بولا۔
  20. وراثت کا کوڈ ، فقہ
  21. جوانوں کو بیدار کرو ، (کام کے تحت)
  22. سوویت یونین کا سفر۔
  23. ایک ہفتہ ازبکستان میں
  24. چیکوسلوواکیا اور پولینڈ کا سفر کریں۔
  25. عراق کا سفر۔
  26. بون کا سفر۔
  27. چکچکستان زنده باد (یادیں)
  28. مخطوطات اور خدمتگار کی لائبریری کی نایاب کاپیاں ، زیر تعمیر کتابیات۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. http://www.haqiqat.se/index.php/8-2017-07-31-15-54-54/674-2018-02-25-19-46-26

بیرونی روابط[ترمیم]