عبدالمالک ریگی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

کالعدم شدت پسند تنظیم جنداللہ کے سربراہ .انیس سو تراسی میں پیدا ہوئے اور ان کا تعلق بلوچوں کے ریگی قبیلے سے ہے۔ انھوں نے کسی سکول میں باقاعدہ طور پر تعلیم حاصل نہیں کی لیکن سنی مسلک سے تعلق رکھنے والےدینی مدرسے میں کچھ عرصے تک پڑھتے رہے.2002 میں جنداللہ تنظیم کو تشکیل دیا۔ جس کا مقصد ایران میں سنی مسلمانوں کے حقوق کے لیے لڑنا اور دوسری جانب وہ بلوچوں کے حقوق کے لیے بھی آواز اٹھانا تھا۔ ایران میں ہونے والے بہت سے دہشت گردی کے واقعات میں ریگی کا ہاتھ بتایا جاتا ہے۔ خاص طور پر اکتوبر 2009 میں ایران کے صوبے سیستان بلوچستان میں ہونے والے ایک خود کش حملے میں ساٹھ کے قریب افراد ہلاک ہوگئے تھے اور ایران نے عبدالمالک ریگی کی تنظیم جند اللہ کو اس واقعے کا ذمہ دار قرار دیا ۔ ایرانی حکام ریگی کا تعلق امریکہ اور یورپی ممالک سے بھی جوڑتے ہیں۔ فروری 2009 میں کرغزستان جاتے ہوئے ایران کی سیکورٹی ایجنسیوں نے ان کو گرفتار کیا۔ 20 جون سن 2010 بروز اتوار انہیں سزائے موت دے دی گئی۔