عبد اللہ بن زبیر حمیدی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

امام حمیدی، ابو بكر۔ الامام الحافظ الفقیہ شيخ الحرم۔

نام[ترمیم]

نام عبد اللہ بن الزبير بن عيسىٰ بن عبيد اللہ القرشی الاسدی الحميدی المكی۔ کنیت ابو بكر ہے

ولادت[ترمیم]

ان کی پیدائش مکہ مکرمہ میں ہوئی لیکن سنہ ولادت اندازہً 150ھ ہے

مشائخ[ترمیم]

انہوں نے امام الشافعی ،وكيع ،فضيل بن عياض وغيرہ سے روایت کی لیكن زیادہ تر سفيان بن عُيَيْنہ سے روایت لیں جو اکابر صحابہ سے روایت کرتے۔ ان کی صحبت میں 20 سال رہے

شاگرد[ترمیم]

ان سے ایک خلق کثیر نے روایت کی جن میں امام بخاری، ذہلی ،ابوحاتم ،ابو زرعہ شامل ہیں

علمی مقام[ترمیم]

حدیث کی طرح فقہ میں بھی امتیازی حیثیت حاصل تھی۔ امام شافعی سے اس فن میں خصوصی مہارت پیدا کی۔ جب امام شافعی مصر گئے تو حمیدی بھی ان کے ساتھ رہے اس طرح وہ امام صاحب کے بکثرت اجتہاد کے امین بن گئے۔ امام شافعی کی وفات کے بعد مصر سے پھر مکہ واپس آ گئے اور وہاں مفتی و فقیہ کی حیثیت سے بڑی شہرت پائی۔ امام شافعی فرماتے کہ میں نے الحمیدی سے بڑھ کرحافظ محدث نہیں دیکھا انہوں نے سفیان بن عیینہ سے 10000(دس ہزار) حدیثیں نقل کیں امام احمد حنبل فرماتے الحمیدی ہم میں امام ہیں

تصنیفات[ترمیم]

  • کتاب الدلائل
  • کتاب الرد علی النعمان
  • کتاب التفسیر
  • مسند حمیدی

وفات[ترمیم]

امام حمیدی کی وفات 219ھ834ء میں ہوئی۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مسند حمیدی،ترجمہ، ابو حمزہ مفتی حمزہ جبار چشتی،پروگریسو بکس لاہور