عبد اللہ بن عثمان بن عفان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
عبد اللہ بن عثمان بن عفان
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 620  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مملکت اکسوم  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات نومبر 625 (4–5 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدینہ منورہ  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن جنت البقیع، مدینہ منورہ  ویکی ڈیٹا پر مقام دفن (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Black flag.svg خلافت راشدہ  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد عثمان بن عفان  ویکی ڈیٹا پر والد (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ رقیہ بنت محمد  ویکی ڈیٹا پر والدہ (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

عبد اللہ بن عثمان بن عفان (پیدائش: 620ء— وفات: نومبر 625ء) حضرت عثمان رضی اللہ عنہ اور رقیہ بنت محمد کے صاحبزادے ہیں۔ آپ پیغمبر اسلام حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے نواسے ہیں۔

تعارف[ترمیم]

آپ کا نام عبد اللہ والد ماجد کا نام عثمان بن عفان اور والدہ ماجدہ کا نام رقیہ بنت محمد ہیں۔ آپ کے والد ماجد کی کنیت ابو عبد اللہ آپ کے نام پر ہے۔

سلسلہ نسب[ترمیم]

آپ کا والد ماجد کی جانب سے سلسلہ نسب یہ ہے: عثمان بن عفان بن ابی العاص بن امیہ بن عبد شمس بن عبد مناف

والدہ ماجدہ کی جانب سے سلسلہ نسب یہ ہے: رقیہ بنت محمد (ﷺ) بن عبد اللہ بن عبد المطلب بن ہاشم بن عبد مناف

پیدائش[ترمیم]

مصعب زبیری نے کہا کہ جب حضرت عثمان بن عفان نے حبشہ کی طرف ہجرت کی تو آپ کے ساتھ آپ کی زوجہ حضرت رقیہ بنت رسول اللہ ﷺ بھی تھیں۔ سرزمین حبشہ میں ایک بچہ پیدا ہوا جس کا نام عبد اللہ رکھا گیا۔ عبدالکریم بن روح بن عنبسہ بن سعید مولی حضرت عثمان بن عفان (جن کی والدہ ام عیاش رقیہ بنت رسول اللہ کی لونڈی تھیں) اپنے والد روح سے انہوں نے اپنے والد عنبسہ سے انہوں نے ان کی دادی ام عیاش سے روایت کی ہے کہ وہ کہتی تھیں حضرت رقیہ سے حضرت عثمان کا ایک لڑکا پیدا ہوا جس کا نام عبد اللہ نبی کریم نے رکھا۔ [1]

وفات[ترمیم]

حضرت عبد اللہ چھ سال کے ہوئے تو ایک مرغ نے آپ کی آنکھ میں چونج مار دی جس کی وجہ سے آپ بیمار ہو گئے۔ جمادی الآخر چار ہجری میں آپ نے وفات پائی۔ رسول اللہ ﷺ نے آپ کی نماز جنازہ پڑھائی اور آپ کی قبر میں آپ کے والد ماجد حضرت عثمان اترے۔ [2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. اسد الغابۃ فی معرفۃ الصحابۃ مصنف عزالدین بن الاثیر ابی الحسن بن محمد الجرزی اردو ترجمہ مولانا عبد الشکور فاروقی لکھنوی جلد دوم صفحہ 521
  2. طبقات ابن سعد مصنف محمد بن سعد اردو ترجمہ علامہ عبد اللہ العمادی جلد دوم حصہ سوم صفحہ 131