عرفان پٹھان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
عرفان پٹھان
Irfan Pathan at the Domestic Airport.jpg
ذاتی معلومات
مکمل نامعرفان پٹھان
پیدائش27 اکتوبر 1984ء (عمر 35 سال)
وڈودرا، گجرات (بھارت)، بھارت
عرفGuddu
قد1.83 میٹر (6 فٹ 0 انچ)
بلے بازیLeft-handed
گیند بازیLeft-arm medium-fast
حیثیتAll-rounder
تعلقاتیوسف پٹھان (brother)
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 248)12 دسمبر 2003  بمقابلہ  Australia
آخری ٹیسٹ5 اپریل 2008  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
پہلا ایک روزہ (کیپ 153)9 جنوری 2004  بمقابلہ  Australia
آخری ایک روزہ4 اگست 2012  بمقابلہ  Sri Lanka
ایک روزہ شرٹ نمبر.56
پہلا ٹی20 (کیپ 7)1 دسمبر 2006  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
آخری ٹی202 اکتوبر 2012  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
ٹی20 شرٹ نمبر.56
قومی کرکٹ
سالٹیم
2000–2017Baroda
2005Middlesex
2008–2010کنگز الیون پنجاب
2011–2013دہلی کیپیٹلز (اسکواڈ نمبر. 56)
2014Sunrisers Hyderabad (اسکواڈ نمبر. 56)
2015چنائی سپر کنگز (اسکواڈ نمبر. 56)
2016Rising Pune Supergiants (اسکواڈ نمبر. 28)
2017Gujarat Lions (اسکواڈ نمبر. 56)
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ کرکٹ ایک روزہ بین الاقوامی فرسٹ کلاس کرکٹ لسٹ اے کرکٹ
میچ 29 120 122 193
رنز بنائے 1,105 1,544 4,559 2,454
بیٹنگ اوسط 31.89 23.39 30.39 22.30
100s/50s 1/7 0/5 3/26 0/9
ٹاپ اسکور 102 83 121 83
گیندیں کرائیں 5,884 5,855 21,034 9,365
وکٹ 100 173 384 272
بالنگ اوسط 32.26 29.72 28.33 29.03
اننگز میں 5 وکٹ 7 2 19 2
میچ میں 10 وکٹ 2 n/a 3 n/a
بہترین بولنگ 7/59 7/59 7/35 5/27
کیچ/سٹمپ 8/– 21/– 30/– 39/–
ماخذ: Cricinfo، 10 مئی 2019

عرفان پٹھان (انگریزی: Irfan Pathan) (گجراتی زبان:ઇરફાન પઠાણ) (ولادت: 27 اکتوبر 1984ء) بھارت کے کرکٹر ہیں جو کرکٹ کے تینوں فارمیٹ میں بھارتی ٹیم کا حصہ رہے ہیں۔ وہ گیند باز آلراونڈر ہیں۔ وہ آئی سی سی عالمی ٹوئنٹی ٹوئنٹی 2007 میں بھارت کی فتح کا اہم کردار رہے تھے۔[1] انہوں نے محض 19 سال کی عمر میں بھارتی ٹیم میں جگہ بنا لی تھی۔ ابتدا ہی میں ان کا موازنہ وسیم اکرم سے کیا جانے لگا تھا کیونکہ ان کی گیند بازی میں بلا کی سونگ تھی۔ وہ ٹیسٹ کرکٹ کے پہلے ہی اوور میں ہیٹ ٹرک لینے والے پہلے کھلاڑی ہیں۔ 2006ء کے بعد ان کی گیندبازی میں دھار ختم ہونے لگی تھی مگر ان کی بلے بازی مستقل سدھر رہی تھی۔

ونود کامبلی اور لکشمن سوا راما کرشنن کے ساتھ انہیں بھی ششی تھرور نے بھارت کے مفقود جوان (India's lost boys) کی فہرست میں شامل کیا تھا۔[2] انہوں نے اپنی گیندبازی کی وجہ سے ٹیم میں اپنی جگہ پختہ کی اور سال 2004ء میں بین الاقوامی کرکٹ کونسل نے انہیں ابھرتا ہوا کھلاڑی تسلیم کیا۔ 2004ء میں جب بھارت کی ٹیم پاکستان کے دورہ پر گئی تب عرفان پٹھان کا یک روزہ اور ٹیسٹ میں کارکردگی بہت بہترین تھی اور وہی جیت کے ہیرو رہے تھے۔ انہیں میڈا والے بھارتی کرکٹ کا نیلی آنکھ والا لڑکا کہتے تھے۔[3] سال 2004ء کے اخیر میں بنگلہ دیش قومی کرکٹ ٹیم کے خلاف انہوں نے 2 ٹیسٹ میچوں میں 18 وکٹیں لی تھیں مگر 2005ء میں انہوں نے اچھی گیندبازی نہیں کی اور زیادہ اوسط پر رن لٹائے۔

اس کے بعد 2005ء میں اپنے وقت کے مایہ ناز آسٹریلائی بلے باز گریگ چیپل بھارتی کرکٹ ٹیم کے کوچ بنے اور انہوں نے عرفان پٹھان کی بلے بازی کی صلاحیت کو پہچان لیا۔ پٹھان نے اپنی بلے بازی پر محنت کی اور وہ ایک مکمل آل راونڈر بن گئے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Cricket Records | India | Records | One-Day Internationals | Most wickets | ESPN Cricinfo". Stats.espncricinfo.com. 2 مارچ 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 جولا‎ئی 2012. 
  2. "Shashi Tharoor". Cricinfo. 14 نومبر 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  3. "I'll keep knocking on the Indian team's door, says Irfan Pathan". mid-day. 14 March 2014. 01 مئی 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 

بیرونی روابط[ترمیم]