عزیاہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
عزیاہ
شاہ یہودا
Ozias-Uzziah.jpg
عزیاہ
پیشرو امصیاہ
جانشین یوتام
خاندان داؤدی گھرانہ

عزیاہ (عبرانی:עֻזִּיָּהוּ‎ ؛ یہوواہ قوت ہے۔) کو عزریاہ بھی کہا گیا ہے۔ یہ امصیاہ کا بیٹا تھا اور سولہ برس کی عمر میں یہودا کا گیارہواں بادشاہ چُنا گیا۔[1] [2] اُس نے 25 سال حکومت کی۔ وہ ایک مشکل وقت میں تخت نشین ہوا۔ اُس کا باپ فوجی ناکامی کی وجہ سے قتل ہوا تھا۔[3] سب لوگوں نے اُسے اپنا بادشاہ چُنا۔[4] اُس نے اپنے عہد کے شروع میں اپنے باپ کے دشمنوں کے خلاف محاذ آرائی کی اور ادومیوں، فلستیوں، عربوں اور معونیوں کو مغلوب کیا۔[5] اس نے ملک کو مستحکم کیا اور اسے ترقی کی راہ پر ڈال دیا۔[6] اس نے ملک کے انتظام کو بہت بہتر بنایا[7] یہاں تک کہ اُس کی شہرت مصر تک پہنچی۔[8] ان سب کامیابیوں کے باوجود وہ اپنی عمر کے آخری حصہ میں خدا سے پھر گیا۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ جب تک زکریا نبی زندہ رہے اُن کا اثر بادشاہ پر اچھا تھا اور جب تک بادشاہ خدا کے احکام پر عمل کرتا رہا خدا نے اُسے بڑی ترقی دی۔[9] لیکن جب وہ کامیاب اور طاقتور ہوگیا تو غرور سے بھر گیا اور خود ہیکل میں قربان گاہ پر بخور جلانے کے لیے گیا جبکہ اُسے اچھی طرح معلوم تھا کہ یہ کام صرف کاہن کرسکتا ہے عزریاہ سردار کاہن نے 80 کاہنوں کے ساتھ مل کر عزیاہ بادشاہ کو روکنے کی کوشش کی لیکن وہ نہ مانا اور خدا نے اُسے کوڑھی بنادیا۔ چنانچہ کوڑھ نے موت تک اُس کا پیچھا نہ چھوڑا۔[10]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. 2 سلاطین 14:21
  2. 2 تواریخ 26:1
  3. 2 سلاطین 14:19
  4. 2 سلاطین 14:21
  5. 2 تواریخ 7–26:1
  6. 2 تواریخ 26:2، 9-10
  7. 2 تواریخ 15–26:11
  8. 2 تواریخ 26:8
  9. 2 تواریخ 26:5
  10. 2 تواریخ 21–26:16